وادی میں15 سے 18 سال کے بچوں کی ٹیکہ کاری مہم شروع

گاندربل+پلوامہ+بارہمولہ//پلوامہ اور بارہمولہ اضلاع میں15سے18برس تک کے عمر کے بچوں کی کووِڈ مخالف ٹیکہ کاری مہم کا آج آغاز ہوا ۔ضلع ترقیاتی کمشنر بارہمولہ بھوپندر کمار نے گورنمنٹ بوائز ہائیر سیکنڈری سکول بارہمولہ میں اِس مہم کا اِفتتاح کیا۔ اِس موقعہ پر چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر بشیر احمد ملک ، چیف ایجوکیشن آفیسر جی ایم لون اور دیگر اَفسران کے علاوہ کووِڈ مخالف ٹیکے لگوانے بچے بھی موجود تھے۔اِس موقعہ پر بتایا گیا کہ ضلع میں مختلف تعلیمی اِداروں میں ٹیکے مراکز قائم کئے گئے ہیں جہاں مجموعی طور 68,440 بچوں کو کووِڈ مخالف ٹیکے لگائے جارہے ہیں ۔ اِن میں 48,376 زیر تعلیم بچے جبکہ 2,083ڈراپ آوٹس شامل ہیں۔اِس موقعہ ضلع ترقیاتی کمشنر نے اِنتظامات پر اَطمینان کا اِظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ مہم 10 جنوری تک جاری رہے گی ۔اُنہوں نے متعلقین پر زور دیا کہ وہ روزنہ 10,000ٹیکے لگانے کی عمل آوری کو یقینی بنائیں تاکہ مقررہ اہداف کو وقت پر حاصل کیا جاسکے ۔اِس ضمن میں اُنہوں نے چیف میڈیکل آفیسر کو روزانہ بنیاد پر ٹیکہ کاری کے تفصیلات فراہم کرنے کی تاکید کی۔ضلع ترقیاتی کمشنر نے عوام سے اپیل کی کہ وہ قومی سطح کے اِس پروگرام میں اِنتظامیہ کے ساتھ تعاون کریں اور اَپنے بچوں کو ویکسین لگوانے کے لئے آگے آئیں تاکہ اں کو اِس مہلک مرض سے دور اور محفوظ رکھا جاسکیں۔اُنہوں نے مزید کہا کہ ایس او پیز اور کووِڈ مناسب طرز عمل پر من و عن سختی سے عمل کریں۔اِس موقعہ پر چیف میڈیکل آفیسر نے کہا کہ اِس ٹیکہ کاری مہم کو کامیاب بنانے کے لئے تمام تر اِنتظامات مکمل کئے گئے ہیں اور اُمید ہے کہ مقررہ وقت کے اندر اَندر ہم یہ ہدف مکمل کریں گے ۔اِس دوران سب ڈویژن اور تحصیل ہیڈ کوارٹروں پر بھی ٹیکہ کاری کا آغاز کیا گیا جہاں متعلقہ ہیڈ کوارٹروں کے سربراہوں نے اِفتتاح کیا۔ضلع پلوامہ میں 15 سے 17 سال کے بچوں کو ویکسین لگانے کا آغاز ہو گیا ہے۔ ڈپٹی کمشنر بصیر الحق چوہدری نے گورنمنٹ گرلز ہائر سیکنڈری سکول میں اس مہم کا افتتاح کیا۔ تفصیلات کے مطابق جنوبی ضلع پلوامہ میں بچوں کو کورونا مخالف ویکسین لگانے کی شروعات ہو چکی ہے۔ اس ضمن میں  ترقیاتی کمشنر پلوامہ بصیر الحق چودھری نے گورنمنٹ گرلز ہائر سیکنڈری سکول پلوامہ میں اس مہم کا باضابطہ طور پر افتتاح کیا۔اس موقع پر محکمہ صحت سے وابستہ حکام بھی موجود تھے۔ادھر مہجور میموریل گورنمنٹ بایز ہائر سیکنڈری سکول پلوامہ میں پرنسپل شیخ محمد اقبال نے اس مہم کا افتتاح کیا۔ اس حوالے سے سکول میں ایک مختصر تقریب منعقد ہوئی جس میں طالب علموں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔ پرنسپل اور اساتذہ  نے سکول کے بچوں سے کورونا مخالف ٹیکہ لگانے کی اپیل کی۔صحت سے وابستہ ایک ٹیم نے اس موقع پر سکول کے کئی بچوں کو ٹیکہ لگایا۔ پلوامہ میں 15 سے 17 سال کے بچوں کو ویکسین لگانے کی شروعات کے ساتھ ہی محکمہ صحت نے ہیلتھ ٹیموں کو متحرک کر دیا ہے اور آنے والے دنوں میں اس اس مہم میں تیزی دیکھنے کو ملے گی۔ادھر سب ضلع ترال کے ایس ڈی ایچ میں بھی اسی طرح کی ایک تقریب منعقد ہوئی ہے جہاںایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ترال شبیر احمد رینہ نے اس مہم کا افتاح کیا ہے۔گاندربل میں بھی 15برس سے 17برس کے بچوں کوکووِڈ – 19 سے تحفظ فراہم ٹیکہ کاری مہم شروع کی گئی۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر گاندربل فاروق احمد بابا نے گورنمنٹ بائز ہائر سیکنڈری اسکول گاندربل میں مہم کی شروعات کی۔ 15سے 18 سال کی عمر کے طلباء کو کووِڈ 19 سے بچنے کیلئے ویکسینیشن مہم کے دوران،ضلع میں 20 ہزار 218 طلباء کو ٹیکہ لگانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔ٹیکہ کاری مہم کے آغاز کے دوران ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر نے ڈپٹی چیف ایجوکیشن آفیسر گاندربل، چیف میڈیکل آفیسر گاندربل کے ہمراہ مختلف منتخب ٹیکہ کاری مراکزکے دورے کے دوران ٹیکہ کاری عمل کا جائزہ لیا۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر گاندربل فاروق احمد بابا نے کہا کہ ضلع میں منتخب شدہ سرکاری اور نجی22 اسکولوں میں ٹیکہ کاری مرکز قائم کئے گئے ہیں جہاں پر ضلع انتظامیہ کی جانب سے تمام ضروری انتظامات دستیاب رکھے گئے ہیں ۔