وادی میں جاری ہلاکتیں اورمبینہ فوجی زیادتیاں

سرینگر//وادی میں جاری معصومین کی ہلاکتوںاورمبینہ فوجی زیادتیوں کے خلاف مشترکہ مزاحمتی قیادت کی کال پر کل نماز جمعہ کے بعد  مائسمہ ،سرائے بالا اورحیدر پورہ میںاحتجاجی مظاہرے ہوئے ۔لبریشن فرنٹ کے کئی سرکردہ قائدین اور اراکین زندگی کے دوسرے شعبوں سے تعلق رکھنے والے لوگوں کے ہمراہ کل مائسمہ اور سرائے بالا سرینگر میں جمع ہوئے اور وادی میں فوج کی جانب سے مبینہ جاری قتل و غارت گری کے خلاف پرامن احتجاجی مظاہرے کئے۔ فرنٹ قائدین شوکت احمد بخشی، نور محمد کلوال، شیخ عبدالرشید، محمد صدیق شاہ، بشیر احمد کشمیری ،پروفیسر جاوید وغیرہ نے زندگی کے دوسرے شعبوں سے تعلق رکھنے والے لوگوں کے ہمراہ کشمیر کے اطراف و اکناف میں معصومین کے جاری قتل عام کے خلاف پرامن احتجاجی مظاہرے کئے۔ احتجاجی مظاہروں سے قائدین شوکت احمد بخشی اور نور محمد کلوال نے خطاب کیا اور ظلم و جبر کے جاری سلسلے کی سخت الفاظ میں مذمت کی۔اس دوران حریت (گ )کی طرف سے حیدرپورہ میں بھارت کی طرف سے جموں کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کے خلاف احتجاج کیا۔احتجاج میں دیوندر سنگھ بہل، محمد یوسف نقاش، سید سلیم زرگر، محمد رفیق اویسی، مولوی بشیر عرفانی، محمد یٰسین عطائی، خواجہ فردوس، سید امتیاز حیدر، رمیز راجہ، امتیاز احمد شاہ، محمد مقبول ماگہامی، مبشر اقبال، ارشد عزیز، شکیل احمد بٹ، ارشد حسین بٹ، ارشد حسین، ریاض احمد اور عبدالرشید کے علاوہ نوجوانوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ احتجاجیوںنے کہا کہ بھارت جموں کشمیر میں تمام بین الاقوامی اصولوں اور ضابطوں کے خلاف یہاں کے نہتے عوام کو اپنی مبنی برحق جدوجہد سے دستبردار کرنے کی کوششیں کررہا ہے۔اس دوران نماز جمعہ کے بعد عوامی مجلس عمل اور حریت (ع) سے وابستہ کارکنوں کی ایک بڑی تعداد نے کشمیر میں ہو رہے کشت وخون ، ظلم و جبر ، کشمیری عوام کیخلاف جارحانہ عزائم اور مکانوں کو مسمار کرنے اور جائیدادوں کو بلا وجہ تلف کرنے کی کارروائیوں کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔