وادی مسلسل یخ بستہ ہوائوں کی لپیٹ میں

 سرینگر میں درجہ حرات منفی 6اور شوپیاں میں منفی 10.3 درج

 
سرینگر // کشمیر وادی میں منگل اور بدھ کی درمیانی رات درجہ حرارت میں معمولی بہتری کے باوجود بھی سردی کی شدید لہر جاری ہے جبکہ سخت سردی کے سبب جھیل ڈل سمیت دیگر آبی زخائر منجمد ہوئے ہیں۔محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ کل شام یعنی 22جنوری سے موسم میں تبدیلی آئے گی اور شبانہ سردی کی شدت سے لوگوں کو کسی حد تک راحت ملے گی ۔شہر سرینگر میں گذشتہ رات کم سے کم درجہ حرات منفی 6ڈگری سنٹی گریڈ تک پہنچ گیا جبکہ شوپیاں میں منفی 10.3 ڈگری سنٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔ بدھ کی صبح دھند نہیں تھی لیکن یخ بستہ ہوائیں چل رہی تھیں ،سڑکوں پر بھی پھسلن موجودتھی ،جس کی وجہ سے گاڑیاں چلانے والوں کواحتیاط برتنے کیساتھ ساتھ گاڑیوں کی رفتار بھی کم رکھنی پڑی ۔ شہرسرینگر سمیت پورے کشمیر میں یخ بستہ ہوائوں کاسلسلہ جاری رہنے کے نتیجے میں صبح کے وقت معمول کی عوامی نقل وحمل اورکاروباری سرگرمیاں بری طرح سے متاثر ہورہی ہیں ۔درجہ حرارت میں شدید گراوٹ سے سردی شباب پر پہنچ گئی ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق قاضی گنڈ میں منفی 8.7،پہلگام میں منفی8.3، گلمرگ میں منفی6.5 ،کوکرناگ منفی 7.9،کپوارہ میں شبانہ درجہ حرارت منفی 5.8 ، اونتی پورہ میں منفی 9.2 ، اننت ناگ میں منفی 8.6 ، بانڈی پورہ میں منفی 4 ، سوپور میں منفی 4.2  ،بڈگام میں منفی 6.3 ، پلوامہ میں منفی7.8 ، کولگام میں منفی 7.6ڈگری سنٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا ہے ۔ادھر لداخ خطہ میں زبردست سردی پڑرہی ہے لداخ کے کرگل میں منفی 19.2ڈگری اور دراس میں منفی 25.8ڈگری سنٹی گریڈ درجہ حرات میں گراواٹ آئی ہے ۔ محکمہ موسمیات نے کہا ہے کہ 22کی شام سے مغربی ہوائیں وادی میں داخل ہوں گی جس کے بعد 23اور24کو بالائی علاقوں میں درمیانہ اور میدانی علاقوں میں بارشوں کے ساتھ ہلکی برف باری ہونے کا امکان ہے ۔