نیشنل کانفرنس کے بیان سے سیاسی حلقوں میں ہلچل

سری نگر// نیشنل کانفرنس کی طرف سے دفعہ35اے کے تصفیہ تک پنچائتی اور بلدیاتی انتخابات میں شرکت نہ کرنے کے فیصلے نے سیاسی حلقوں میں ہلچل پیدا کی ہے۔بی جے پی نے نیشنل کانفرنس کے اعلان پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ جماعت ریاست میں ہمیشہ جمہوری اداروں کی بحالی کے حق میں نہیں رہی ہے۔ ادھر ریاستی کانگریس نے ڈاکٹر فاروق عبداللہ کے بیان کو سمجھ سے بالا تر قراردیاجبکہ سول سوسائٹی کارڈنیشن کمیٹی کشمیر نے نیشنل کانفرنس کے بیان کاخیرمقدم کیا ہے۔ بی جے پی کے نائب صدر اور کشمیر امور کے انچارج اویناش رائے کھنہ نے بتایا کہ جہاں تک بھارتیہ جنتا پارٹی کا تعلق ہے تو ہم ریاست میں امن و امان کی بحالی کے علاوہ ریاست کی جملہ ترقی کے لیے لوگوں کو ہر وقت اپنا تعاون پیش کرنے میں ہر وقت تیار ہیں۔انہوں نے کہا کہ این سی ہمیشہ سے ہی ریاست میں جمہوری اداروں کی بحالی کے حق میں نہیں تھی اسی لیے انہوں نے زمینی سطح پر جمہوریت کو مضبوطی فراہم کرنے والے پنچائتی اور بلدیاتی انتخابات سے پہلو تہی اختیار کرنے کا فیصلہ لیا ہے۔ بی جے پی نے بتایا کہ اگر این سی صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ حقیقی طورپر پنچائتی اور بلدیاتی انتخابات میں شرکت نہیں کریں گے تو انہیں اس بات کا بھی اعلان کرنا چاہیے کہ وہ آنے والے پارلیمانی اور اسمبلی انتخابات میں بھی حصہ نہیں لیں گے۔ادھرریاستی کانگریس کے صدر غلام احمد میر نے نیشنل کانفرنس کی طرف سے پنچایتی اور بلدیاتی انتخابات میں شرکت نہ کرنے کے فیصلے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی لن ترانیاں سمجھ سے باہر ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک طرف ڈاکٹر فاروق عبداللہ لوگوں کو ترقی کو یقینی بنانے کے لیے انتخابات میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے کی اپیل کرتے ہیں اور دوسری طرف خود الیکشن پراسس سے کنارہ کش رہنے کا فیصلہ کرتے ہیں۔ غلا م احمد میر نے بتایا یہ بڑی حیرانگی کی بات ہے کہ ایک طرف پارٹی کا صدر عوام سے جمہوریت کے عمل میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے کی اپیل کرتا ہے تو دوسری طرف خود جمہوری عمل سے دور رہتا ہے۔ادھرجموں وکشمیر میں سابقہ سرپنچوں وپنچوں کی نمائندہ تنظیم آل جموں وکشمیر پنچایت کانفرنس نے نیشنل کانفرنس صدر اور سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ کی طرف سے دیئے گئے بیان پر سخت اعتراض ظاہر کرتے ہوئے ان سے کہا ہے کہ وہ ووٹ بنک سیاست کے لئے پنچایتی راج اداروں کو سیاست کا شکار نہ بنائیں۔ ایک بیان میں پنچایت کانفرنس صدرانیل شرما نے کہاکہ نیشنل کانفرنس صدر کا بیان پنچایتی اور بلدیاتی اداروں کے انتخابات کی آڑ میں حکومت ہند کو بلیک میل کرنے اور عدالت عظمیٰ پر دباؤ بنانے کی کوشش ہے۔ جموں کشمیر سیول سوسائٹی کارڈی نیشن کمیٹی کے لیڈر اور عوامی نیشنل کانفرنس کے نائب صدر مظفر شاہ نے بتایا کہ نیشنل کانفرنس کی طرف سے لیا گیا فیصلہ قابل سراہنا ہے۔ انہوں نے بتایا پنچایتی اور بلدیاتی انتخابات سے دوری بنائے رکھنے کا فیصلہ خوش آئندہ ہے۔