نیشنل کانفرنس خواتین ونگ کی تقریب

سرینگر//ایک ترقی پذیر اور مہذب سماج میں خواتین کا کلیدی رول ہوتا ہے اور آج ایسا کوئی شعبہ نہیں جہاں خواتین کا تعاون شامل حال نہیں۔ ان باتوں کا اظہار نیشنل کانفرنس خواتین ونگ کی ریاستی صدر شمیمہ فردوس نے پارٹی ہیڈکوارٹر پر ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تقریب کا انعقاد ضلع بڈگام کے کھاگ سے تعلق رکھنے والی 12کارکنان کی پارٹی میں شمولیت کے سلسلے میں کیا گیا تھا۔ پارٹی میں شمولیت کرنے والوں میں پنچایتی اراکین اور تعلیم یافتہ خواتین بھی شامل تھیں۔ اس موقع پر صوبائی صدر انجینئر صبیہ قادری نے بھی خطاب کیا۔ خواتین کو بااختیار بنانے کیلئے نیشنل کانفرنس کی طرف سے اقدامات کا حوالہ دیتے ہوئے شمیمہ فردوس نے کہاکہ اس جماعت کی قیادت کی کوششوں سے جموںوکشمیر میں خواتین کو بااختیاربنایاجاسکا۔انہوں نے کہاکہ نیشنل کانفرنس کی تاریخی اقدامات کا ہی ثمر ہے کہ آج جموں وکشمیر کی خواتین ہر ایک شعبے میں مردوں کے شانہ بہ شانہ کام کررہی ہیں۔ شمیمہ فردوس نے کہاکہ جموںو کشمیرکو اس وقت زبردست چیلنجوں کا سامناہے اور خواتین کی شمولیت کے بغیر ان چیلنجوں کا سامنا نہیں کیا جاسکتا۔ جموں وکشمیر کی خواتین کو اپنے ریاست کے تشخص، وحدت، انفرادیت اور اجتماعیت کے تحفظ میں اپنا رول نبھانا ہوگا اور اس کیلئے باصلاحیت اور تعلیم یافتہ خواتین کا آگے آناوقت کی اہم ضرورت ہے۔ حدبندی کمیشن کی رپورٹ کو بھاجپا کے خاکوںمیں رنگ بھرنے اور جموں وکشمیر کی پہچان کو ختم کرنے کی سازش قرار دیتے ہوئے شمیمہ فردوس نے کہا کہ اس وقت ایک منصوبہ بند سازش کے تحت جموںوکشمیرکی پہچان کو زک پہنچائی جارہی ہے اور حدبندی میںبھی ایسا ہی کچھ کیا گیا ہے۔ پارٹی کی صوبائی صدر انجینئر صبیہ قادری نے کہا کہ نیشنل کانفرنس خواتین ونگ پارٹی قیادت کے ساتھ شانہ بہ شانہ ہے اور ہر ایک چیلنج میں پارٹی کے ساتھ ثابت قدم رہنے کیلئے پُرعزم ہے۔ انہوں نے کہا کہ وقت کی ضرورت یہ ہے کہ خواہشمند خواتین کو ایک پلیٹ فارم مہیا کیا جائے اور آنے والے چیلنجوں سے نمٹنے کے لئے مؤثر آوازیں پیدا کرنے میں مدد کی جائے۔ اس موقع پر خواتین ونگ کی صوبائی سکریٹری عائشہ جمیل، ضلع سکریٹری صبیہ رسول راتھر اور دیگر عہدیداران بھی موجود تھے۔ کے این ایس