نہوچ اور تلواڑہ میں محکمہ بجلی کے خلاف مظاہرے

ریاسی//سب ڈویژن مہور کے وارڈ نمبر ایک نہوچ میں محکمہ بجلی پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے لوگ سڑک پر اتر آئے اور محکمہ کے خلاف مظاہرے کئے۔نہوچ کے وارڈ نمبر ایک کے لوگوں کا کہنا ہے کہ انہیں آج تک بجلی نصیب نہ ہوسکی۔لوگوں کا کہنا ہے کہ ان کے وارڈ میں آج تک بجلی کے کھمبے اور ترسیلی تاریں نہ بچھائی جا سکیں۔مقامی باشندوں نے بتایا کہ اگرچہ 2008سے آج تک عارضی طور پر انہوں نے گھروں تک لکڑی کے کھمبوں کے ذریعے بجلی پہنچائی تھی اور عارضی طور پر وہ بجلی استعمال کر رہے تھے لیکن گزشتہ روز محکمہ کے ملازمین نے ان کی بجلی کاٹ دی جس کی وجہ سے تقریباًسترگھر گھپ اندھیرے میں چلے گئے۔واضح رہے کہ نہوچ پنچایت 3 وارڈ ایسے ہیں جنہیں آج تک بجلی فرہم نہ ہوسکی۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ اگرچہ ہم ووٹ بھی دیتے ہیں پھر بھی ہمیں بنیادی سہولیت سے محروم رکھا گیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اگرچہ 2019میں جموں کشمیر کو سوبھاگیہ سکیم کے تحت 100فیصد بجلی فرہم کرنے کیلئے ایوارڈ سے نوازا گیا لیکن ان علاقوں میں حالت جوں کی توں ہے اور یہ لوگ ابھی بھی بجلی سے محروم ہیں۔انہوں نے کہا کہ آج کل بجلی کے بغیر کوئی بھی کام کرنا نا ممکن ہے۔مقامی لوگوں نے محکمہ بجلی کے اعلی افسران سے مانگ کی ہے کہ ان لوگوں کو فوری طور بجلی فرہم کی جائے۔دریں اثنا تلواڑہ کے لوگوں نے بھی آج محکمہ بجلی پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے احتجاج کرتے ہوئے تلواڑہ سڑک کو بند گیا۔ان لوگوں کا کہنا تھا کہ ٹرانسفارمر خراب ہونے کی وجہ سے یہ گزشتہ 4دنوں سے بجلی سے محروم ہیں جس کی وجہ سے انہیں مجبوراً آج سڑکوں پر اترنا پڑا۔لوگوں نے محکمہ بجلی کے خلاف مظاہرے لگائے۔آخر میں تحصیلدار ریاسی اور دیگر افسران موقع پر پہنچے اور لوگوں کو یقین دلایا کہ ریاسی انتظامیہ کل اس کا کوئی حل نکالے گی۔