نٹرنگ تھیٹر فیسٹیول کا تیسرا دن

جموں //6ویں نٹرنگ تھیٹر فیسٹیول کے تیسرے دن منشی پریم چند کے اردو افسانہ ’کفن ‘پرمبنی ڈرامہ پیش کیا گیا ۔نٹرنگ تھیٹر میں پیش کئے گئے اس ڈرامے کی کہانی کو موجودہ دور میں نوجوانوں میں بزرگوں کی عزت اور سماج میں رہنے کیلئے ضروری ہدایات دینے کیلئے اہم سمجھ جا تا ہے ۔مذکورہ کہانی مزدور پیشہ والد اور اس کے بیٹے پر ہے جو اپنی محنت سے کنبے کا پیٹ پالتے ہیں ۔اس دوران بیٹے کی بیوی حاملہ ہوتی ہے جس کو علاج معالجہ کی ضروری ہوتی ہے لیکن اس کا خاندان غریبی کی وجہ سے اس کا خرچہ نہیں اٹھا سکتا ۔وہ درد سے چلاتی ہے جس کے دوران اس کی موت واقع ہوجاتی ہے لیکن اس کا چھوٹا بیٹا بے بسی کی حالت میں سب دیکھتا ہے ۔اس کی موت کے دوران خاندان والوں کے پاس آخری رسومات ادا کرنے کیلئے بھی پیسے نہیں ہوتے اور وہ اپنی جھو نپڑی میں لاش کو رکھ کر گائوں والوں سے امداد کے طور پر پیسے مانگ کر لاتے ہیں لیکن بعد میں وہ اس پیسے سے شراب خرید تے ہیں اور لاش کو ایک کپڑے میں یہ کہتے ہوئے لپیٹتے ہیں کہ لاش کو صر ف دعا کی ضرورت ہے باقی کچھ بھی نہیں ۔کہانی میں نوجوانوں کیلئے پیغام دیا گیا ہے کہ نشہ کی لت لگنے کے بعد  اکثر لوگ اپنوں اس قدر بھول جاتے ہیں کہ آخری رسومات ادا کرنے سے بہتر اپنی ذات کیلئے نشہ کا بندو بست کرنے کو ترجیح دیتے ہیں ۔مذکورہ ڈرامے میں اجے کمار ،منجو کمار ،زیشان حیدر ،محمد عمر ودیگران نے اہم رول ادا کیا ۔