نوگام سونا واری میں پینے کے پانی کی قلت

 سرینگر //ٹیوب ویل کی تعمیر میں تاخیر کے نتیجے میں نوگام سونا واری پینے کے صاف پانی سے محروم ہے۔مقامی آبادی کے مطابق اندرکوٹ میں قائم جس ٹوب ویل سے انہیں پینے کا صاف پانی فراہم کیا جاتا تھا، وہ پچھلے سال خراب ہو گیا۔ اگرچہ محکمہ پی ایچ ای نے اس کی جگہ نئے ٹیوب ویل کی تعمیر کا کام شروع کیا تاہم ایک سال کا عرصہ گذرنے کے باوجود بھی اس کی تعمیر مکمل نہیں ہو سکی ہے اورلوگ پینے کے صاف پانی سے محروم ہے ۔نوگام سونا واری کے ایک شہری غلام رسول نجار نے بتایا کہ پانی کے حصول کیلئے علاقے کی خواتین 3کلو میٹر سفر کرتی ہیں اور یہ پانی اُن کی ضرورت کو پورا نہیں کرپاتا ہے ۔انہوں نے کہا ’’ہم نے کئی بار حکام کو اس مسئلہ سے آگاہ کیا کہ زیر تعمیر ٹیوب ویل پر کام میں تیزی لائی جائے لیکن اس سلسلے میں محکمہ پی ایچ ای کوئی بھی کاروائی عمل میں نہیں لا رہا ہے ۔ نجار نے کہاکہ اس وقت 25ہزار آبادی پر مشتمل علاقہ پینے کے صاف پانی سے محروم ہے ۔اس ضمن میںمحکمہ پی ایچ ای کے چیف انجینئر عبدالوحید نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ یہ ٹیوب ویل خراب ہوا تھا اور محکمہ نے کئی بار اُس کو ٹھیک کرنے کی کوشش بھی کی تاہم وہ ٹھیک نہیں ہو سکا جس کے بعد گائوں میںنئے ٹوب ویل کی تعمیر کا کام ہاتھ میں لیا گیا جس پر کام سرعت سے جاری ہے اوراگلے 15روز میں اس پر کام مکمل ہوگا۔