نوکریوں سے برخواست کی گئیں ہیلپروں کااحتجاج

  سرینگر // محکمہ سماجی بہبود میں کام کررہی  ہیلپرس ٹو سپروائزرس نے انہیں نوکریوں سے بر خاست کرنے کے ٖ فیصلے کے خلاف منگل کو ایک مرتبہ پھرسرینگر میں زورداراحتجاج کیا۔سی این ایس کے مطابق جموں و کشمیر انتظامیہ کے سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ کی آئی سی ڈی ایس اسکیم میں کام کررہے 918 ہیلپروں کی برطرفی کی فیصلے کے خلاف جموںوکشمیر ہلپرس ٹو سپر وائزر س ایسوسی ایشن آ ئی سی ڈی ایس کے بینر تلے برطرف شدہ ہلپرس ٹو سپروائزرس سرینگر میں چرچ لین کے باہر نمودار ہوئیں اور انہوںنے اسٖ فیصلے کے خلاف زوردار نعرہ بازی کی۔ احتجاجی خواتین نے کہا کہ10دسمبر کو سوشل میڈیا پر ڈائر یکٹر آئی سی ڈی ایس نے ایک حکم جاری کیا۔اس موقعہ پرجموںوکشمیر ہیلپرس ٹو سپر وائزر س ایسوسی ایشن کے عہدداروں نے بتایاجب تک حکم واپس نہیں لیا جاتا ہم احتجاج جاری رکھیں گے۔ ذر اس کے بارے میں سوچیں ، ہم نے دس برسوں تک اپنی سروس کے ساتھ اس محکمہ کو اپنا خون بھی دیا ہے اور اچانک ہمیں  نوکریوں سے نکالا گیا۔احتجاج میں شامل ہیلپرحکم نامے کو فوری طور واپس کرنے کا مطالبہ کر رہی تھیں۔احتجاجی خواتین انتظا میہ کے خلاف نعرے بازی کر رہی تھیں۔ انہوںنے بتایا وہ گزشتہ3سال سے تنخواہوں سے محروم ہیں جس کی وجہ سے وہ یہاں احتجاج کر رہے ہیں۔ ہمیں کبھی بھی وقت پر تنخواہ نہیںملی لیکن ہمارا کام وقت وقت پر لیا جاتا ہے۔ انہوں نے لیفٹینٹ گورنر سے اپیل کی کہ وہ ہماری بات سنیں اور اس حکم کو واپس لیں۔