نوشہرہ کے کئی دیہات جدید دورمیں بھی پانی سپلائی سے محروم

نوشہرہ //سب ڈویژن نوشہرہ کے کئی دیہات ایسے بھی ہیں جہاں کی خواتین اس جدید دور میں بھی قدیم طرز کی زندگی بسر کرنے پر مجبور ہیں ۔سب ڈویژن کے کئی پہاڑی علاقوں میں پینے کے صاف پانی کی قلت کو پورا کرنے کیلئے آج بھی خواتین میلوں پیدل سفر کر تی ہیں تاہم محکمہ جل شکتی کی جانب سے ابھی تک دیہات میں مکمل طورپر پینے کا صاف پانی سپلائی نہیں کیا جاسکا ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ مرکزی حکومت کی جانب سے پینے کا صاف پانی فراہم کرنے کیلئے کئی سکیمیں شروع کی ہوئی ہیں تاہم مذکورہ دیہاتوں میں آباد لوگوں کیلئے مذکورہ سکیمیں محض کاغذوں تک ہی محدود ہیں ۔انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ پینے کے صاف پانی کے نام پر سالانہ کروڑوں روپے خرچ کرنے کے نعرے لگائے جاتے ہیں لیکن زمینی سطح پر دہائیوں سے عوام کی حالت بدل ہی نہیں سکی ۔انہوں نے کہاکہ مقامی انتظامیہ کی جانب سے بھی عوام کو فلاحی سکیموں کا فائدہ پہنچانے کیلئے سنجیدگی سے کام نہیں کیا جارہاہے ۔مکینوں نے بتایا کہ نوشہرہ کے 46ریونیو گائوں میں سے صرف 5سے 6گائوں میں پینے کے صاف پانی کی سپلائی معقول طریقہ سے جاری ہے تاہم دیگردیہات بالخصوص بریری ،دبڑ ،گگوٹ ،پوٹھہ ،منگل دیوی ،دبہروٹ ،لمبیڑی ودیگر دیہات میں آج بھی خواتین پینے کا صاف پانی لانے کیلئے قدرتی چشموں کا رخ کرنے پر مجبور ہیں ۔مکینوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ نوشہرہ سب ڈویژن کے پسماندہ دیہات میں پینے کے صاف پانی کی سپلائی کو یقینی بنانے کیلئے عملی طورپر اقدامات اٹھائے جائیں ۔