نوجوان نے مبینہ طورسسرال میں زہر کھاکر زندگی کا اختتام کیا

بارہمولہ //ٹنگمرگ کے قاضی پورہ علاقے میں جمعرات کو پہالن پٹن کے ایک 32 سالہ شخص نے مبینہ طورسسرال میں زہر کھا کر اپنی زندگی کا خاتمہ کر دیا۔ اس دوران لواحقین نے جمعہ کو پلہالن پٹن میں سرینگر مظفرآباد شاہرہ پر احتجاجی دھرنا دیا اور کہاکہ اْن کے فرزند کو قتل کیا گیا ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ 32سالہ شوکت احمد ڈار ولد غلام رسول ڈار ساکنہ گھاٹ پہالن پٹن نے اپنے سسرال واقع قاضی پورہ ٹنگمرگ میں کوئی زہریلی شے کھائی جس کے بعد اگرچہ مذکورہ شخص کوسسرال والوں نے فوری طور سب ڈسٹرک اسپتال ٹنگمرگ پہنچایا تاہم وہاں تعینات ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دیا۔ ٹنگمرگ پولیس نے لاش کا پوسٹ مارٹم کرانے کے بعد لاش اپنی تحویل میں لیکر کیس درج کر کے تحقیقات شروع کردی۔مظاہرین میں شامل لواحقین اور دیگررشتہ داروں نے جمعہ کو پٹن بارہمولہ شاہراہ پر آکر زبردست احتجاج کیا۔ اْنکا کہنا تھا شوکت احمد جمعرات کو بچے کیلئے کپڑے لیکر ٹنگمرگ اپنے سسرال گیا تھا جہاںاُسے زہر دے کر قتل کیاگیا۔اہل خانہ کے مطابق شوکت کو اپنی بیوی کے ساتھ جھگڑا ہوا تھا جس کے بعد اس کی بیوی اپنے میکے میں تھی۔ انہوں نے مانگ کی کہ قاتلوں کو فوری طور گرفتار کیا جائے اور اْنہیں سخت سے سخت سزا دی جائے۔اس دوران ایس ایچ او پٹن جائے موقع پرپہنچے اور مظاہرین کو یقین دلایا کہ اس حوالے سے صاف و شفاف تحقیقات کی جائے گی جس کے بعد مظاہرین پر امن طورمنتشر ہوئے۔