نوجوان خاتون کی زچگی کے دوران موت

مہور//گذشتہ شب گلابگڑھ کے علاقہ دیول کے واندارہ گاؤں میں ایک نوجوان خاتون راجوبیگم زوجہ محمد اقبال ساکنہ دیول وندارہ کو زچگی کی تکلیف ہوئی اور بعد میں ایک بچے کو جنم دیااور اس کے بعد خاتون کو تکلیف میں اضافہ ہوا۔ اگرچہ مقامی لوگوں نے دیول پی ایچ سی کے ساتھ رابطہ کیا لیکن وہاں پر صرف جماعت چہا رم کے ملازمین موجود تھے۔مقامی لوگوں نے خاتون کو چار پائی پر اٹھا کر جموں لے جانے کی کوشش کی لیکن وہ گھر سے کچھ ہی کلومیٹر کی دوری پر راستے میں زندگی اور موت کی جنگ ہار گئی۔یاد رہے اس علاقہ میں اس قسم کی اموات پہلے بھی پیش آئی ہیں۔دیول میں ایک ڈسپنسری 1955 سے چل رہی ہے اور 1958 سے آج تک وہاں پر کوئی ڈاکٹر تعینات نہیں کیا گیا اس کے بعد دیول کو’ پی ایچ سی ٹائپ نیو‘کا درجہ دیا گیا مگر پھر بھی کوئی ڈاکٹر تعینات نہیں ہوا۔واضع رہے یہاں پر اس ہسپتال کیلئے 2006میں عمارت بنائی گئی جو سیا سی لوگوں کی نظر ہو گئی اور اس ہسپتال کی عمارت خستہ حال ہو گئی۔یہ ہسپتال تقریباً گلابگڑھ کے 15ہزار لوگوں پر مشتمل ہے۔مقامی لوگوں نے کئی مرتبہ لیڈروں کی توجہ اس طرف دلائی لیکن کسی کے کان پر جوں تک نہیں رینگی۔