نوجوانوں کو بائیوگیس سیکٹر کے امکانات سے فائدہ اٹھانا چاہئے :مودی

نئی دہلی // وزیر اعظم نریندر مودی نے جمعرات کو کاروباری افراد سے مطالبہ کیا کہ وہ گائے کے گوبر ، فصل کے ڈنڈوں اور شہری ٹھوس فضلہ سے بائیو ایندھن بنانے کے بڑے امکانات بنائیں۔ انہوں نے کہا کہ اس شعبہ میں نوجوانوں، اسٹارٹ اپ یونٹوں سمیت چھوٹی بڑی سبھی قسم کی یونٹوں کے لئے مواقع ہیں۔اس سال کی ویبنار سیریز کے پہلے کڑی کے طور پر بجٹ 2023-24 کا افتتاح کرتے ہوئے مسٹر مودی نے کہاکہ “امکان ہے کہ ہندوستان کو گائے کے گوبر سے 10 ارب مکعب میٹر بائیو گیس اور زرعی فضلہ 150 بلین مکعب میٹر گیس پیدا کرے گا۔ اس سے ہمارے ملک میں شہر کی گیس کی تقسیم میں آٹھ فیصد تک مدد مل سکتی ہے ۔’’وزیر اعظم نے کہا کہ ان امکانات کی وجہ سے گوبردھن یوجنا آج ہندوستان کی حیاتیاتی تنوع کی حکمت عملی کا ایک اہم حصہ ہے ۔ اس بجٹ میں حکومت نے گوبردھن یوجنا کے تحت 500 نئے پلانٹ قائم کرنے کا اعلان کیا ہے ۔مسٹر مودی نے کہا کہ “وہ پرانے زمانے کے گائے کے گوبر کے پلانٹ جیسے نہیں ہوتے ہیں۔ حکومت ان جدید پلانٹ پر 10 ہزار کروڑ خرچ کرے گی۔’’ انہوں نے کہا کہ ملک کے نجی شعبے کے لئے “فضلہ سے توانائی” کا حکومت کا پروگرام ہمارے مائیکرو ، چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری اداروں کے لئے ایک نئی مارکیٹ تشکیل دے رہا ہے ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ دیہاتوں سے نکلنے والے زرعی فضلہ کے ساتھ ساتھ شہروں میں ٹھوس کچرے سے کمپریسڈ بائیو گیس (سی بی جی) پیدا کرنے کا ایک بہت بڑا موقع بھی موجود ہے ۔وزیر اعظم نریندر مودی نے لوگوں سے اپنے گھروں پرآرگینک کاشتکاری کرنے کی اپیل کی ہے ۔ راجیہ سبھا کی رکن پارلیمنٹ سنگیتا یادو موریہ کے ایک ٹویٹ کے جواب میں انہوں نے کہا کہ راجیہ سبھا کی ایم پی چھت پر اگائی جانے والی سبزیوں کی مختلف اقسام دکھا رہی تھیں۔ (یواین آئی)