نوجوانوں کا اختراعی عمل ملک کا مستقبل

سرینگر//لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے پیر کو ورچیول اندازمیں ہندوستانی انسٹی ٹیوٹ آف مینجمنٹ( آئی آئی ایم) روہتک کے 12 ویں بیچ ( پی جی پروگرام ان مینجمنٹ ) کے انڈکشن کا افتتاح کیا ۔ طلباء سے خطاب کرتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر نے اپنے ماضی کے تجربات بھی بتائے اور انتظامیہ کے مستقبل میں آنے والے چیلنجوں پر قابو پانے کیلئے طلباء کو تجاویز بھی پیش کیں ۔ جدید انتظامیہ کے مختلف اہم پہلوؤں پر بات کرتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر نے طلبا کو مشورہ دیا کہ وہ چیلنجوں کو مواقع کی حیثیت سے دیکھیں اور بڑے مقصد پر توجہ دیں اس کے علاوہ اعلیٰ مقصد کے ساتھ ہر منٹ کی تفصیل پر توجہ دیں ۔ یوتھ انوویشن کو ہندوستان کے مستقبل کی اُمید قرار دیتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ آج کے طلبا کل کے قائد ہیں اور وہ قوم کیلئے تبدیلی کی گاڑی بنیں گے ۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ اب وقت آ گیا ہے کہ نوجوان ان میں بدلاؤ پیدا کرنے والوں کی نشاندہی کریں ، تخلیقی حل کے ذریعہ ملک کو نئی بلندیوں پر لے جائیں ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر کی حیثیت سے میرا کردار ایک آئینی اختیار کی حیثیت سے یو ٹی کا انتظام کرنا ہے ۔ انتظام کی حکمت عملیاتی اصول جیسے مقصد کا تعین ، صورتحال کا تجزیہ ، حکمت عملی وضع ، حکمت عملی پر عمل درآمد ، تشخیص اور کنٹرول یہ سب حکمرانی کے عمل کا ایک اہم حصہ ہیں ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ جموں و کشمیر میرے دل کے قریب ہے کیونکہ ترقی کے ہر اقدام سے لاکھوں افراد کی حقیقی تبدیلی متاثر ہو سکتی ہے۔ اس کے علاوہ زندگی کو بہتر تر زندگی میں بدلا جا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ تمام شہریوں کی بھلائی میرا اوّلین اور اہم فرض اور مشن ہے ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے کہا ’’ ہم جموں و کشمیر کے نوجوانوں کے وعدے اور صلاحیتوں پر مستقبل تعمیر کر رہے ہیں ، اس طرح ہماری نوجوان نسل کیلئے بہتر امکانات پیدا ہو رہے ہیں ‘‘ ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے انتظامیہ کے عمل کو زیادہ شفاف اور جواب دہ بنانے کیلئے انتظامیہ کے اصلاحی اقدامات پر زور دیا ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ عوام کے ساتھ مشغول ، مطلع اور ہمدردی کے ساتھ ہم نے گورننس ، خدمات اور فراہمی کے شعبے میں انمولیت کو تقویت بخش اور جشن منانے کے علاوہ قابل ماحولیات بنائے ہیں جو جموں و کشمیر کے تانے بانے میں شامل ہے ۔اُنہوں نے کہا کہ جمہوری اِداروں کو مضبوط بنانا میری اوّلین ترجیح ہے۔ نومنتخب ڈی ڈی سی نمائندوں کو بااِختیار بنایا گیا ہے۔ اُنہوں نے مزید کہا کہ ضلعی ترقیاتی منصوبہ جس کو ڈی ڈی سی ممبروں کی فعال شمولیت سے حتمی شکل دی گئی ہے ، اس نظام میں زیادہ لوگ مرکوزہیں ۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ نوجوان کاروباری اَفراد جموں و کشمیر کو ایک عظیم کاروباری مواقع کے طور پر دیکھنا چاہیے جو ایگرو اینڈ فوڈ پروسسنگ کے لئے وافر خام مال کی پیش کش کرے۔اُنہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کی نئی صنعتی پالیسی ملک کی عمدہ صنعتی پالیسیوں میں سے ایک ہے جو پیش گوئی اور مستحکم کاروباری ماحول پیدا کرنے کے لئے جامع ہے لیفٹیننٹ گورنر نے آئی آئی ایم احمد آباد کے ایک طالب علم بھرتیندو ورما کا خاص طور پر ذکر کیا جس نے جموں و کشمیر حکومت میں داخلہ لیا اور تین ماہ کے قلیل عرصے میں یوٹی میں خواتین انٹرپرینیوروں کے لئے ایک پلیٹ فارم HAUSLAبنایا۔