نواکدل اورکائو ڈارہ میں بھیانک آگ

 سرینگر// اتواررات دیر گئے شہرکے  ہفت چنارعلاقہ میں آگ کی ایک ہولناک واردات رونماہونے کے بعدمنگل کی صبح شہرخاص کے نواکدل اور کائو ڈارہ علاقوں میںآگ کی وارداتوں میں تین رہائشی مکانات خاکستر ہوئے جبکہ آگ بجھانے کے دوران 11 افراد زخمی ہوئے جن میں سے5زخمیوںکوصدراسپتال منتقل کیاگیاجہاں ان کی حالت مستحکم بتائی جارہی ہے ۔نواکدل کے علاقہ ڈمبہ محلہ تاربل میں منگل کی صبح معراج الدین متو ولد مرحوم عبدالرحمان کے رہائشی مکان کی تیسری میں موجود گیس سلنڈر سے گیس کا اخراج ہوا جس کے باعث آگ نمودار ہوئی۔جس کی زد میں قریب ہی میں محمد لطیف بٹ ولد مرحوم حبیب اللہ کا رہائشی مکان بھی آگیا۔دونوں رہائشی مکانات میں آگ تیزی سے پھیل گئی۔مقامی لوگوں نے بتایاکہ دونوں رہائشی مکانات کوکافی نقصان پہنچا تاہم مقامی لوگوں کی جانب سے آگ بجھانے کی کامیاب کوشش کے دوران کم سے کم 11افرادزخمی ہوگئے ۔لوگوں نے بتایاکہ مقامی نوجوان کی بروقت کوششوں کے باعث آگ کوپھیلنے سے روکاگیا ۔انہوں نے بتایا کہ آگ بجھانے کی کوششوں کے دوران کم از کم 11 افراد زخمی ہوئے ،جن میں سے5زخمیوںکوصدراسپتال سری نگرمنتقل کیاگیا ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ آگ پر قابو پانے کیلئے فائر اینڈایمرجنسی سروسزکے اہلکاربھی بروقت ٹنڈرس لیکروہاں پہنچے ،اوراسکے بعدمتعلقہ اہلکاروںاورمقامی نوجوانوںکی مشترکہ کوششوں سے آگ پرقابو پالیاگیا ۔تاہم معراج الدین متواورشوکت احمدکے رہائشی مکانات کوجزوی نقصان پہنچا۔ پولیس نے آگ کی اس واردات میں 5افرادکے زخمی ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایاکہ آگ لگنے کے واقعے کی تحقیقات شروع کردی گئی ہے۔آگ کی دوسری واردات میںکاوڈارہ میں ایک رہائشی مکان میں آگ لگ گئی جسے محکمہ فائر اینڈ ایمرجنسی کے عملہ اور مقامی لوگوں نے فوری طور پر قابو پایا۔خیال رہے اتوار اور پیر کی درمیانی شب  ہفت چنار علاقے میں آگ کی ایک بھیانک واردات میں ماں بیٹے کی جھلس کر موت واقع ہوئی جبکہ چھ رہائشی مکان بھی مکمل طور پر خاکستر ہوگئے۔
 

اپنی پارٹی کا متاثرین کیلئے ریلیف پیکیج کا مطالبہ

سرینگر//اپنی پارٹی صوبائی صدر کشمیر محمد اشرف میر نے تاربل نوا کدل میں بھیانک آتشزدگی واردات کو دلدوز اور بدقسمت آمیز قرار دیتے ہوئے کہا کہ آگ کی وجہ سے متاثرہ کنبہ جات امیر سے فقیر ہوگئے ہیں اور ضلع انتظامیہ کو اِن کی باوقار بازآبادکاری کیلئے کوئی دقیقہ فروگذاشت نہیں چھوڑنا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ انتظامیہ پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ اِس دلدوز واقعہ سے متاثرہ کنبوں کی بازآبادکاری کی جائے‘‘۔ انہوں نے مزید کہاکہ مکانات کی تعمیر نو تک اِن کنبوں کو عارضی رہائش فراہم کی جائے۔ انہوں نے حکومت پرزور دیا ہے کہ امداد ی ٹیموں کو جائے واردات پر بھیجا جائے اور نقصانات کا تخمینہ لگاکر جلد سے جلد ایکس گریشیا ریلیف فراہم کی جائے۔پارٹی ضلع صدر سرینگر نور محمد شیخ اور سنیئر پارٹی لیڈر عرفان متو نے بھی آگ متاثرین کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے وادی میں آئے روز بڑھتی آگ واردات کی وجوہات کا پتہ لگانے کے لئے انکوائری کی مانگ کی ہے۔