نقصانات سے بچنے کیلئے کسانوں کو جام، جیلی اور پیوری بنانے کا مشورہ

نئی دہلی// ہندوستانی زرعی ریسرچ کونسل (آئی سی اے آر) نے لاک ڈاؤن پر زرعی مصنوعات کو تباہ ہونے سے کسانوں کو پہنچنے والے نقصانات سے بچنے کے لئے وائن ، ٹماٹر پیوری اور ویلیو ایڈیڈ مصنوعات بنانے کی صلاح دی ہے ۔لاک ڈاؤن کے دوران عائد مختلف پابندیوں کے پیش نظر آئی سی اے آر نے زرعی سیکٹرکے لئے ریاستوں کے حساب ہدایات جاری کئے ہیں جن میں کسانوں کو جلد خراب ہونے والی زرعی مصنوعات کو بچانے کے لئے متعدد مشورے دیئے گئے ہیں۔ اس میں کسانوں سے شراب، جام، جیلی، اسکویش، اچار، ٹماٹر پیوری اور مشروم کے ویلیو ایڈڈ مصنوعات بنانے کی تجویز پیش کی ہے ۔میگھالیہ کے کسانوں کے لئے جاری ہدایات میں کہا گیا ہے کہ اسٹرابیری کی کاشت کرنے والے کسان اس کی فروختگی میں پریشان ہونے پر اس سے ویلیو ایڈڈ مصنوعات بنائے ۔ اسٹرابیری کے کسان شراب، جام، جیلی اوراسکویش بھی بنا سکتے ہیں۔تری پورہ کے کسانوں کو ٹماٹر کی فروخت میں مشکل ہونے پر اسے زیرو توانائی کولڈ چیمبر میں اسٹوریج یا ٹماٹر پیوری بنانے کا مشورہ دیا گیا ہے ۔آئی سی اے آر نے ناگالینڈ میں مشروم کے تیار ہونے اور فروخت نہ ہونے پر اسے دھوپ میں خشک کرنے کی صلاح دی ہے ۔