نجی گاڑی میں لفٹ دینے کے دوران چھیڑ چھاڑ کی کوشش ۔2 لڑکیوں نے چلتی کار سے چھلانگ لگائی، دونوں زخمی

کپوارہ/اشرف چراغ/ شمالی کشمیر کے ہندوارہ علاقے میں دو نوعمر لڑکیاں چلتی کار سے چھلانگ لگا کر ایک نجی گاڑی کے ڈرائیور اور ایک دوسرے مسافر کی مبینہ طور پر چھیڑ چھاڑ کی کوشش سے بچ گئیں۔پولیس کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ10اپریل پیر کے روز پولیس اسٹیشن کرالہ گنڈکو اطلاع ملی کہ دو نوعمر لڑکیوں نے راس پورہ میں ایک پرائیویٹ گاڑی سے وترگام جانے کے لیے لفٹ مانگی “تاہم، گاڑی میں سوار ہونے پر، ڈرائیور اور ایک اور ساتھی نے لڑکیوں کے ساتھ بدتمیزی کرنے کی کوشش کی، جس پر انہوں نے راسری پورہ میں گاڑی سے چھلانگ لگا دی”۔بیان کے مطابق واقعہ کی ایف آئی آر زیر نمبر/2023 33 قانون کی متعلقہ دفعات کے تحت پی ایس کرالہ گنڈ میں درج کیا گیا ہے۔ پولیس نے کہا کہ ایک شخص کی تلاش شروع کر دی گئی ہے۔ایس پی ہندوارہ شیما نبی کا کہنا ہے کہ واقعہ میں ملوث افراد کو بہت جلد گرفتار کیا جائے گا ۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ “عوامی مفاد میں، والدین سے گزارش ہے کہ وہ اپنے بچوں کو اجنبیوں سے لفٹ لینے یا قبول کرنے سے گریز کرنے کے لیے مشورہ دیں۔” لڑکیوں کو کچھ چوٹیں آئی ہیں اور ان کا قریبی صحت مرکز میں علاج کیا جا رہا ہے۔