نجی کھاتوں میں سرکاری رقوم کی منتقلی کا معاملہ

جموں//سرکاری رقومات کو افسروں اور عہدیداروں کے نجی یا ذاتی کھاتوں میں منتقل کرنے سے متعلق احکامات کی عدولی کا نوٹس لیتے ہوئے حکومت نے اس سلسلے میں ملازمین کیلئے ایڈوائیزری جاری کرتے ہوئے انہیں قواعد و ضوابط پر سختی سے کاربند رہنے کی ہدایت دی ہے۔  پرنسپل سیکرٹری فائنانس نوین کمار چودھری کی جانب سے جاری کی گئی ایڈوائیزری میں تمام انتظامی سیکرٹریوں کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ اپنے ماتحت عملے کو سرکاری رقومات کی وصولیابی اور ادائیگی کے سلسلے میں قواعد و ضوابط کی پاسداری کرنے کے احکامات دیں ۔ ایڈوائیزری میں کہا گیا ہے کہ جو کوئی افسر جب بھی کوئی رقم وصول کرتا ہے تو اُسے وہ فوری طور نزدیکی سرکاری خزانے میں جمع کرنی چاہئیے اور اس رقم کو ٹریجری افسر کے کھاتے میں جمع کیا جانا چاہئیے ۔ ایڈوائیزری میں مزید کہا گیا ہے کہ کوئی بھی سرکاری ملازم  سرکار کے مخصوص احکامات کے بغیر کوئی بھی رقم وصول نہیں کرے گا اور یہاں کہیں بھی کوئی سرکاری افسر ایسی رقم وصول کرنے کا اہل ہو اُس کو چاہئیے کہ وہ جموں کشمیر بنک میں اہل کھاتہ کھولے جس میں یہ رقومات جمع کی جا سکتی ہیں یہ بنک کھاتے خصوصی اجازت کے بعد کھولے جا سکتے ہیں ۔ تا ہم کسی اور جگہ جمع رقم کرنے کیلئے فائنانس ڈیپارٹمنٹ کی پیشگی اجازت لازمی ہے ۔ ایڈوائیزری کے مطابق جو کوئی سرکاری افسر ایسی رقم وصول کرتا ہے وہ اس بات کا ذمہ دار ہو گا کہ یہ رقم قواعد و ضوابط کے تحت ادا یا تقسیم کی جاتی ہے ۔ ایڈوائیزری میں مزید کہا گیا ہے کہ ان رقومات کی وصولیابی اور ادائیگی کے تعلق سے ایک منظم ریکارڈ رکھا جانا چاہئیے ۔ ایڈوائیزری میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ڈیپارٹمنٹل افسران یا ڈی ڈی اوز فائنانس ڈیپارٹمنٹ کی پیشگی اجازت کے بغیر کسی بھی بنک میں کوئی نیا کھاتہ نہیں کھول سکتے ہیں ۔