نجی شعبوں کے ملازمین کو حکومت امدادی پیکج دے:چدمبرم

نئی دہلی//کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم نے کہا ہے کہ کام کاجی لوگوں اور ان کے اہل خانہ میں لاک ڈاؤن کی وجہ سے روزی روٹی کی غیر یقینی صورتحال کے چلتے کشیدگی کا ماحول ہے اس لئے حکومت کو ان کی مدد کے لئے امدادی پیکیج کا اعلان کرنا چاہئے ۔مسٹر چدمبرم نے بدھ کو یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ ملک کا کام کاجی طبقہ نجی کمپنیوں کی مالی حالات کو دیکھتے ہوئے اپنی روزی روٹی کا مسئلہ اور مستقبل کی غیر یقینی صورتحال کی وجہ سے بہت کشیدگی کا شکارہے ۔ نجی شعبے کے لئے حکومت کی جانب سے مدد کے کوئی واضح اشارہ نہیں ہے تو یہ سیکٹر بڑے پیمانے پر چھٹنی اور کٹوتی کا سہارا لینے پر مجبور ہو سکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ نجی شعبوں سے ملنے والے اشارے کی وجہ سے کام کاجی لوگوں اور ان کے خاندان کے رکن دباؤ اور بے یقینی کی صورت حال میں ہیں اور اگر نجی شعبے سچ مچ ایسا قدم اٹھاتے ہیں تو اس سے لاکھوں کا ذریعہ معاش تباہ ہو جائے گا اور بہت سے خاندان تباہ ہو جائیں گے ، لہذا وزیر اعظم نریندر مودی کو اس طبقے کی مدد کے لئے اقتصادی پیکیج کا اعلان کرنا چاہئے ۔سابق مرکزی وزیر نے کہا کہ ان کی پارٹی اگلے تین ماہ کے لئے عارضی بنیاد پرای پی ایف اور ملازمین کی ریاستی انشورنس۔ای ایس آئی میں آجروں کے شراکت کی رعایت کی بھی تجویز پیش کرتی ہے ۔ یہ آجروں کی پے رول اخراجات کو کم کرنے اور افرادی قوت کو برقرار رکھنے میں مدد ملے گی۔