ناڑملا سنگلدان میں زمین دھنسنے کا سلسلہ جاری

گول// ناڑ ملا (اشمار فمروٹ) سنگلدان میں آج اُس وقت افرا تفری کا ماحول پیدا ہوا جب علاقے میں زمین دھنسنے لگی، رہائشی مکانات زمین بوس ہوئے اور آسمان چھوتے درخت بھی سجدہ ریز ہو گئے جس کی وجہ سے پورے علاقے میں خوف و ہراس کا ماحول پیدا ہے ۔ قرب و جوار سے لوگ آئے انہوں نے یہاں پر رہائش پذیر لوگوں کو محفوظ مقامات پر پہنچایا وہیں اس دوران سب ڈویژن گول کی انتظامیہ ، پولیس اور ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر رام بن بھی پہنچے جنہوں نے علاقہ کا جائزہ لیا اور پورے علاقے میں بچائو کارروائیوں کا سلسلہ شروع کر دیا ۔ لوگوں کے مال مویشی کے ساتھ ساتھ ساز و سامان کو بھی گھروں سے نکالا اور بچے ، بزرگ خواتین و مرد کو محفوظ مقامات پر پہنچایا ۔ جہاں کئی لوگوں کو متبادل رہائش میں پہنچایا وہیں دوسرے لوگ رشتہ داروں کے گھروں میں پناہ لینے پر مجبور ہو گئے ہیں ۔ علاقہ میں تقریباً دو سے اڑھائی کلو میٹر اراضی کھسک رہی ہے اور یہ سلسلہ شام تک جاری تھا ۔مقامی لوگوں نے کہاکہ ان کا بہت ساراسامان بھی رہائشی مکانات میں دب چکا ہے اور رہنے کے لئے کوئی جگہ نہیں ہے ساتھ ساتھ پورا فصل بھی تباہ برباد ہو چکا ہے زرعی اراضی بھی پوری کھسک رہی ہے جس سے یہاں پر کھڑی فصل اور میوہ باغات بھی تہس نہس ہو چکے ہیں ۔اس دوران ضلع انتظامیہ بھی حرکت میں آئی اور ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر رام بن نے فوری طور پر بمراہ ایس ڈی ایم گول، ڈی ایس پی گول، تحصیلدار گول متاثر علاقہ کا دورہ کیا اور لوگوں کے مسائل کا جائزہ لیا ۔ اس موقعہ پر اے سی ڈی نے کہا کہ علاقہ ایک کلو میٹر سے زیادہ کھسک رہا ہے اور یہ سلسلہ جاری ہے اور اس وقت جو ایس ڈی ایم کی رپورٹ آئی ہے اُس کے مطابق تقریباً دس مکانات کو نقصان پہنچا ہے اور ہم نے فوری طور پر چار گھروں کو راحت سامان مہیا کرایا ہے ۔ انہوںنے کہاکہ دس میں سے چھ گھر سیری پورہ علاقہ میں آتے ہیں جن کونقصان پہنچا ہے ۔اے ڈی سی کاکہنا ہے کہ دو مکان مکمل طور پر گر چکے ہیں جبکہ باقی کو نقصان پہنچا ہے اور جس طرح سے زمین کھسکنے کاسلسلہ جاری ہے اس سے باقی گھر بھی مکمل طور پرتباہ ہوسکتے ہیں ۔انہوںنے کہاکہ یہاں پر سول انتظامیہ کے ساتھ ساتھ پولیس بھی متحرک ہے اور نقصانات کاجائزہ لے رہے ہیں اور کسی کو بھی خطرے والے علاقے میں آنے کی اجازت نہیں ہو گی ۔انہوںنے کہاکہ تقریباً ایک کلومیٹر کو بھی اس وجہ سے نقصان پہنچا ہے ۔جن کے رہائشی مکانات کو نقصان پہنچا ہے اُن میں عبدالطیف،زرگل احمد، محمدرستم،شبیر احمد،جمال الدین ، عبدالرشید،عبدالغنی ،محمد اقبال فاروق احمد وغیرہ شامل ہیں ۔ اس کے علاوہ بھی کئی رہائشی مکانات کو خطرہ لاحق ہے کیونکہ ابھی بھی علاقہ میں زمین کھسکنے کا سلسلہ جاری ہے اور انتظامیہ و پولیس موقعہ پرموجود ہے ۔ وہیں اس دوران مقامی لوگوں نے الزام لگاتے ہوئے کہاکہ  یہاں پر کئی سال قبل پی ایم جی ایس وائی کی جانب سے ایک سڑک تعمیر کی گئی جس کی وجہ سے یہاں پر پسی گرنے کا سلسلہ جاری ہوا تھا اور یہاں پر خشک موسم میں بھی پسیاں گر آیا کرتی تھیں ۔ اس سلسلے میں اگر چہ کئی مرتبہ سب ڈویژن گول کی انتظامیہ سے بھی لوگوں نے یہاں پر اس سڑک پر حفاظتی دیواریں دینے کی مانگ کی تھی لیکن اس کی طرف کوئی توجہ نہیں دیا ۔