ناچلانہ کے مقام دو ٹرکوں کے سڑک پر پلٹنے سے

بانہال//جموں سرینگر شاہراہ پر ناچلانہ کے علاقے میں کم از کم تین مال بردار گاڑیوں کے سڑک سے پھسل کر پچھلی طرف نالیوں میں گر کر پلٹ جانے کی وجہ سے شاہراہ پر اس سیکٹر میں جمعرات کو دوسرے روز بھی ٹریفک جام رہا اور گاڑیوں کی قطاریں کئی کئی گھنٹوں تک سست رفتاری کے ساتھ آگے بڑھتی رہیں۔ بدھ کے روز ناچلانہ اور شیر بی بی کے درمیان یکے بعد دیگرے تین مال بردار ٹرک سڑک سے اتر کر پچھلی طرف پہاڑی سے ٹکرائے جانے کی وجہ سے سڑک پر پلٹ گئے تھے اور سڑک کا خاصا حصہ ان کی لپیٹ میں آیا۔ تاہم ٹرکوں کے سوار افراد معمولی خراشوں کے ساتھ بچ نکلے ۔ بدھ کے روز پیش آئے ان واقعات کی وجہ سے رامسو اور بانہال کے سیکٹر میں ٹریفک کی نقل وحرکت سست رہی اور یہ سلسلہ وقفے وقفے سے جمعرات کو بھی جاری رہا۔ کئی مسافروں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ وہ جمعرات کی صبح آٹھ بجے بانہال سے رامبن دفتر وغیرہ کیلئے نکلے تھے لیکن ناچلانہ۔شیر بی بی سیکٹر میں ٹریفک جام تھا اور وہ ساڑھے تین گھنٹے بعد ساڑھے گیارہ بجے رام بن پہنچ پائے جبکہ بعض ملازمین دوپہر ایک بجے بعد اپنی منزلوں کو پہنچے ۔ ٹریفک پولیس ذرائع نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ سڑک کے کنارے الٹ گئے مال بردار ٹرکوں کی وجہ سے اس سیکٹر میں ٹریفک کی نقل وحرکت سست رہی تاہم اس علاقے میں ٹرکوں اور انکے مال کو جمعرات کے روز  ایک طرف کرکے سڑک کو مزید چوڑا کرکے معمول کے ٹریفک کو رواں کیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ اس کے علاہ بانہال کے نزدیک بھی ایک ٹرک کے بیچ سڑک خراب ہونے کی وجہ سے اس سیکٹر میں ٹریفک کی نقل وحرکت سست رہی تاہم دوپہر بعد مجموعی طور پر ٹریفک کی آمدورفت معمول کے مطابق جاری رہی۔