نئے ووٹروں کے خصوصی اندراج کی گھر گھر مہم کہاں؟ الیکشن پورٹل فعال نہیں،40روزہ مہم کے7روز گذر گئے،الیکشن کمیشن اپنے اعلان پر عملدر آمد نہ کرسکا

اشفاق سعید

 

سرینگر//جموں وکشمیر میں 11000 پولنگ بوتھوںپر ووٹروں کے خصوصی اندراج کی گھر گھر مہم کہیں نظر نہیں آرہی ہے اور نہ ہی الیکشن کمیشن کی جانب سے اندراج کیلئے قائم کیا گیاپورٹل فعال بن پایا ہے۔الیکشن کمیشن نے اس بات کا اعلان کیا تھا کہ نئی حد بندی کے بعد 15ستمبر سے نئے ووٹروں کے اندراج کی گھر گھر مہم چلائی جائے گی جو 25اکتوبر تک جاری رہے گی۔چیف الیکٹورل آفیسر نے کہا تھا کہ جموں وکشمیر کے قریب 11000 پولنگ بوتھوںپر نئے ووٹروں کا اندراج ہو گا اور اس سلسلے میں 40روزہ مہم کیلئے ہر ایک پولنگ بوتھ کیلئے بوتھ لیول آفیسر بھی تعینات کئے گئے ہیں۔ لیکن 5 دن بعد بھی نہ گھر گھر مہم شروع ہو سکی اور نہ ہی کمیشن کی طرف سے قائم کی گئی ٹیم نے اس حوالے سے ووٹران کو کوئی جانکاری دی۔

 

اس مہم کا اعلان کرتے ہوئے یہ بتایا گیا تھا کہ اب کوئی بھی شہری اپنا ووٹ دوسری جگہ منتقل کر سکتا ہے ،یقینی اگر کسی شہری کو کپوارہ سے اپنا ووٹ سرینگر منتقل کرنا ہے تو انہیں اس کیلئے پوٹل کا استعمال کر کے اس کام کو آسان بنانا تھا اس کیلئے اسے مقامی انتظامیہ کی مدد سے یہ سہولت بھی دستیاب رہتی یعنی ان کی این او سی کے بعد ووٹ منتقل کیا جا سکتا ہے،لیکن ابھی تک اس تعلق سے کوئی بھی سرگرمی دکھائی نہیں دے رہی ہے۔وادی بھر میں کہیں پر بھی نئے ووٹروں کے اندراج سے متعلق کوئی گھر گھر مہم شروع نہیں کی گئی ہے اور نہ پرانے ووٹروں کو منتقل کرنے سے قبل پرانے ووٹر لسٹوں سے اپنا ووٹ ہدف کرنے کا سرکاری ووٹر نامزدگی پورٹل کھل رہا ہے ۔ایک اعلیٰ افسر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ حد بندی کمیشن کے فیصلے کے بعد جموں وکشمیر میں ممکنہ طور پر کل 11ہزار پولنگ بوتھ قائم کئے جارہے ہیں جن میں سے وادی میں 5400پولنگ بوتھ ہیں۔انہوں نے کہا کہ سرینگر 713بارہمولہ میں 899،اننت ناگ میں 798،بڈگام میں 602،کپوارہ میں 578،پلوامہ میں 459،کولگام میں 349،بانڈی پورہ میں 300،گاندربل میں 260اور شوپیان میں 245پولنگ سٹیشن قائم ہیں جہاں پر ووٹران کا اندراج گھر گھر مہم کے دوران کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔ایک بوتھ لیول آفیسر نے بتایا کہ ابھی الیکشن پورٹل فعال نہیں کیا گیا ہے کیونکہ ابھی الیکشن کمیشن کی جانب سے نئی حد بندی کے حدود میںآنے والے علاقوں کو اپ ڈیٹ نہیں کیا جاسکا ہے۔انہوں نے کہا کہ پورٹل جب تک فعال نہیں ہوگا تب تک نئے ووٹروں کا اندراج نہیں ہوسکتا اور نہ گھر گھر مہم کے آغاز کا کوئی امکان ہے۔