میں غریبوں کاوکیل ہوں

سنگلدان// سنگلدان کے ڈاک بنگلہ میں اتوار کے روز سی پی آئی ایم کے ریاستی لیڈراور سی آئی ٹی یو کے ریاستی صدرمحمد یوسف تاریگامی نے پہاڑی ریلوے پروجیکٹس ورکروس یونین سنگلدان کی جانب سے ایک جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں غریبوں کا وکیل ہوں اور   ریاست میں باقی سیاستدان گن گا رہے ہیں کہ ریاست کا نقشہ بدل دیں گے لیکن ان سے چناب کی حالت بدل نہیں سکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آج غریبوں کے ساتھ انصاف نہیں ہو رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ تاریگامی کا دل غریب عوام کے لئے ہر وقت دھکڑتا رہتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سیاست جو عبادت اور سیوا تھی لیکن اب یہ جھوٹ کی دکانداری ہے ، مکاری ہے ایسا لگتا ہے کہ شیطان کے ساتھ رشتہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مزدور خون پسینہ بہا کر مزدوری کرتا ہے اور اپنا حق مانگتا ہے باقی حصے کمپنی والے ، آفیسران ، ٹھیکیداران ہڑپتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ جب سے مودی اقتدار میں آیا ہے صرف جھوٹ ہی بولا ہے اور جھوٹ بول کر سیاست کر رہا ہے ۔ محمد یوسف تاریگامی نے کہا کہ فاروق عبداللہ ، مفتی محمد سعید اور غلام نبی آزاد نے مجھے منسٹری دی تھی لیکن میں نے منسٹری سے انکار کیا تھاکیونکہ جب میں منسٹری لیتا اور میں انصاف نہیں کر سکتا ۔انہوں نے کہا کہ میں غریبوں کا وکیل ہوں ، میں نہیں سمجھتا تھا کہ میری زبان بند ہو جائے اور غریبوں کی آواز بند ہو جائے ۔ انہوں نے کہا کہ خطہ چناب ایک پچھڑا علاقہ ہے اور میں چاہتا ہوں کہ یہاں کی عوام مزدور طبقہ ایک ہو جائے ۔ انہوں نے کہا کہ اس  سیاست دانوں نے اس علاقے کو دبوچ کر رکھا ہے مجھے اس کا ساتھ دینا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ کچھ دلال لوگ مزدوروں کی نیندیں حرام کر رہے ہیں اور خود آرام کر رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ میں اعلان کرتا ہوں کہ مزدوروں کے حق پر ڈاکہ ڈالنے ولے اب آرام کی نیند نہیں سوئیں گے ۔انہوں نے کہا کہ غریبوں کا حق نہیں کھانے دیں گے غریب مزدور ایک ہو گیا ہے ۔ انہوں نے اس موقعہ پر تمام غریب طبقہ کے لوگوں سے کہا کہ وہ ایک ہو جائے اور ظلم کے خلاف آواز بلند کریں تاریگامی غریب کے شانہ بشانہ ہے ۔انہوں نے اس موقعہ پر اندھ میں ایک مزدور کی جانب سے خوش کشی پر نہایت ہی رنج کا اظہار کیا اور کہا کہ کس وجہ سے اُن نے یہ قدم اُٹھایا ہے وہ راز بھی اُسی کے ساتھ چلا گیا ہے ۔انہوں نے اس موقعہ پر جموں سرینگر شاہراہ پر حادثہ بھی رنج وغم کا اظہار کیا ۔