میڈیکل کالج ڈوڈہ کا آغاز اگلے برس

ڈوڈہ//یو پی اے کی مرکزی سرکار کے وزیر صحت غلام نبی آزاد کی طرف سے ریاست میں منظور کردہ 5میڈیکل کالجوں میں سے ایک، ڈوڈہ میڈیکل کالج کی عمارتوں کی تعمیر کا کام اگر چہ شد و مد سے جاری ہے لیکن ابھی تک 20فیصد رقومات بھی خرچ نہیں کی جا سکی ہیں۔ عمارت کی تعمیر کے لئے 2020کا ہدف مقرر کیا گیا ہے ۔ تاہم ریاستی سرکار نے ڈوڈہ کالج میں تدریسی عمل اگلے برس یعنی 2019میں شروع کرنے کا فیصلہ لیا ہے اور اس کے لئے عارضی انتظامات بہم رکھے گئے ہیں۔ جمعرات کو گورنر کے مشیر کے۔ وجے کمار نے ڈوڈہ کا دورہ کر کے وہاں نئے میڈیکل کالج کی پیش رفت اور ان اداروں میں اگلے تدریسی سیشن سے پہلا بیچ شروع کرنے کے تعلق سے کئے گئے عارضی انتظامات کا جائیزہ لیا۔مشیر کے ہمراہ پرنسپل سیکرٹری صحت و طبی تعلیم اتل ڈُلو، پرنسپل سیکرٹری تعمیرات عامہ خورشید احمد شاہ اور ایم ڈی جے کے پی سی سی ایم راجو بھی تھے۔ڈوڈہ میں مشیر نے گھٹ میں نئے جی ایم سی کا دورہ کر کے کاموں کے بارے میں جانکاری حاصل کی۔انہیں بتایا گیا کہ109 کروڑ روپے کی لاگت والے اس پروجیکٹ پر اب تک18 کروڑ روپے صرف کئے گئے ہیںا ور اس عمارت کو مئی2020 تک چالو کیا جائے گا۔بعد میں مشیر نے افسروں کی ایک ٹیم کے ہمراہ پرانے ضلع ہسپتال ڈوڈہ کا دورہ کر کے وہاں عارضی انتظامات کا بھی جائزہ لیا۔ انہوں نے اگلے برس سے پہلا بیج شروع کرنے کے سلسلے میں تمام بنیادی سہولیات بہم کرانے کی ہدایات دیں۔اس موقعہ پر انہیں بتایا گیا کہ پہلے بیچ کے لئے اس عمارت کو فروری2019 میں چالو کیا جائے گا۔ڈی سی ڈوڈہ انشل گارگ، ایس ایس پی ڈوڈہ شبیر احمد کے علاوہ کئی دیگر افسران بھی مشیر موصوف کے ہمراہ تھے۔