میڈیکل بلاک گندو میں بیک وقت2 بی ایم او تعینات

گندو//میڈیکل بلاک گندو ضلع ڈوڈہ کا ایک ایسا بلاک ہے جہاں گذشتہ ایک ماہ سے بیک وقت دو بی ایم او کام کر رہے ہیں جس وجہ سے محکمہ کے ڈاکٹر اور دیگر ملازمین سخت پریشان ہیں کہ وہ کس بی ایم او کے حکم کی پیروی کریں ۔وجہ یوں ہے کہ بی ایم او گندو ڈاکٹر محبوب احمد خان کے خلاف پے در پے عوامی اور محکمہ صحت کے ملازمین کی شکایات کے بعدگذشتہ ماہ ڈاکٹر نظام الدین ڈار کو بی ایم او گندو تعینات کیا گیاجب کہ ڈاکٹر محبوب خان کو سی ایم او آفس ڈوڈہ سے منسلک کر دیا گیا۔ڈاکٹر نظام الدین نے آرڈر کے مطابق ڈیوٹی جوائن کر لی مگر ڈاکٹر محبوب خان جن کو اس جنت سے نکلنا کسی بھی طور پسند نہیں تھا ،نے آرڈر ماننے اور بی ایم او کی کرسی چھوڑنے سے انکار کیا اور دن رات اسپتال میں ہی ڈیرہ ڈال دیا کہ کہیں ڈاکٹر نظام الدین بی ایم او کی کرسی پر نہ بیٹھ جائے۔اُدھر نئے بی ایم او نے بھی کام کرنا شروع کر دیا اور محکمہ کے ملازمین نے دونوں کے تئیں’ ہاں جی ہاںـ‘ کا رویہ اختیار کیا۔اس دوران ڈاکٹر محبوب احمد نے عدالتِ عالیہ سے حکمِ امتناہی بھی حاصل کر لیاتاہم عدالت ِ عالیہ کے حکم میںمحکمہ کے اعلیٰ آفیسران کی مداخلت کی گنجائش پائی جاتی ہے۔مگر محکمہ کی طرف سے ابھی تک کوئی کاروائی عمل میں نہیں لائی گئی ہے جس وجہ سے نہ صرف محکمہ کے ملازمین بلکہ عام لوگوں کو بھی مشکلات اور پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔مسئلہ اُس وقت مزید پیچیدہ ہو گیا جب ڈاکٹر محبوب خان کی طرف سے پاس کیا گیا تنخواہ کا بل گندو ٹریجری سے واپس کر دیا گیا اور بعدہٗ محکمہ کے ڈاکٹروں اور دیگر ملازمین نے اس بات کو لے کر ایک احتجاجی مظاہرہ کیا اور دھرنا دیا کہ اُن پر یہ واضح کیا جائے کہ اُن کا بی ایم او کون ہے۔مظاہرین جن میں ڈاکٹر اور پیرا میڈیکل عملہ کے علاوہ محکمہ کے دیگر ملازمین بھی شامل تھے،سی ایچ سی گندو کے احاطہ میں جمع ہوئے اور وہاں نعرہ بازی کی اور دھرنا دیا ۔اس موقع پر متعددمقررین نے کہا کہ اُن کی سمجھ میں کچھ بھی نہیں آ رہا ہے کہ وہ کس آفیسر کی پیروی کریں اور کس کی نہیں۔اُنہوں نے کہا کہ وہ سخت پریشان ہو جاتے ہیں جب ایک بی ایم او ایک آرڈر کرتا ہے اور اُسی سلسلہ میں دوسرا بی ایم او دوسرا حکم نامہ جاری کرتا ہے۔اُنہوں نے کہا کہ اُن کا مذاق بنایا جا رہا ہے جس کو وہ مزید برداشت نہیں کر سکتے۔اُنہوں نے کہا کہ غیر یقینی کی اس صورتِ حال سے مختلف قسم کے مسائل پیدا ہو رہے ہیں اور عید سے قبل اُن کے تنخواہ کی ادائیگی کے امکانات بھی کم ہوتے جا رہے ہیں۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ ایک واضح حکم نامہ جاری کیا جانا چاہیے جس میں صریح طور اس بات کا ذکر ہو کہ بی ایم او گندو کون ہے تاکہ ملازمین اُسی سے واسطہ رکھیں۔دریں اثناء ایس ڈی ایم گندو چوہدری دل میر نے مظاہرین سے ملاقات کر کے اُن کے مسائل سُنے اور ضلع ترقیاتی کمشنر ڈوڈہ اور ڈائریکٹر ہیلتھ سے فون پر بات کرنے کے بعد اُنہوں نے مظاہرین کو یقین دلایا کہ اس مسئلے کا بہت جلد حل نکالا جائے گا اور میڈیکل بلاک کے ملازمین اور عوام کو زیادہ دیر تک پریشان نہیں چھوڑا جائے گا،جس کے بعد مظاہرین نے اپنا احتجاج ختم کیا۔