میڈیا کمپلیکس سرینگر میں وائلڈ لائف فوٹوگرافی کا سہ روزہ ورکشاپ شروع

 سرینگر / /محکمہ اطلاعات و رابطہ عامہ کے میڈیا کمپلیکس میں کل وائلڈ لائف فوٹو گرافی سے متعلق ایک سہ روزہ قومی ورکشاپ شروع ہوا۔اپنی نوعیت کا یہ پہلا ورکشاپ ڈی آئی پی آر نے ورلڈ وائلڈ فنڈ فار نیچر کے اشتراک سے منعقد کیا ہے اور اس میں محکمہ وائلڈ لائف ، سکل اینڈ کرافٹ ڈیولپمنٹ انسٹی چیوٹ کشمیر اور گلشن بکس کا بھی تعاون حاصل ہے۔جنگلات و ماحولیا ت کے وزیر چودھری لال سنگھ جو ا س موقعہ پر مہمان خصوصی کی حیثیت سے موجود تھے نے اس ورکشاپ کا باضابطہ طور افتتاح کیا۔ اس دوران معروف وائلڈ لائف فوٹو گرافروں کی تصاویر کی عکاسی بھی کی گئی۔وزیر موصوف نے اس موقعہ پر کہا کہ اس طرح کے ورکشاپوں کا انعقاد مستقبل میں کیا جانا چاہئے تاکہ عام لوگوں کو وائلڈ لائف اور ماحولیات کو تحفظ دینے کے تقاضوں سے روشناس کرایا جاسکے ۔انہوں نے کہا کہ ہماری ریاست قدرتی وسائل سے مالا مال ہے تاہم اس ورثے کو تحفظ دینے کے لئے سبھی لوگوں کو آگے آنا چاہئے ۔ لال سنگھ کہا کہ حکومت ماحولیاتی توازن کو برقرار رکھنے کے لئے شجر کاری مہم میں تیزی لارہی ہے۔افتتاحی سیشن میں بی این ایچ ایس کے سابق ڈائریکٹر ڈاکٹر اسد آر رحمانی اور ڈبلیو ڈبلیو ایف انڈیا سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر پنکج چند ن نے شرکا ٔ کو وائلڈ لائف فوٹو گرافی کے مختلف پہلوئوں کے بارے میںجانکاری دی۔ اس موقعہ پر دتیمان مکھر کے علاوہ معروف فوٹو گرافر مختا ر احمد ، سجاد بٹ نے بھی اپنے اپنے تجربات سے شرکأ کو روشنا س کرایا۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے جوائنٹ ڈائریکٹر اطلاعات کشمیر ظہو ر احمد میر نے محکمہ اطلاعات و رابطہ عامہ اس طرح کے ورکشاپوں کا انعقاد متواتر طور کرتا آرہا ہے۔انہوںنے کہا کہ اس ورکشاپ کے لئے محکمہ کو 350 درخواستیں موصول ہوئی تھیں جن میں سے ورکشاپ کے پہلے مرحلے کے لئے 120شرکأ کو چن لیا گیا۔ سہ روزہ ورکشاپ کے دوران شرکأ اور معروف وائلڈ لائف فوٹو گرافروں کے درمیان استفساری سیشن منعقد ہوں گے ۔ علاوہ ازیں شرکأ کو داچھی گام قومی پارک کا بھی دورہ کرایا جائے گا۔