مینڈھر کالج کے قیام کو 12سال ہوگئے

مینڈھر//گو رنمنٹ ڈگر ی کالج مینڈھرکا قیام بارہ سال قبل 2005میں ہوا تھا لیکن اب تک کالج کے طلباء کیلئے ہوسٹلوںکی تعمیر نہیں کی گئی جس کے نتیجہ میں دور دراز علاقوںسے آنے والے طلباء کومشکلات کاسامناہے اور انہیں کرایہ کے کمروں میں رہناپڑتاہے ۔مقامی لو گو ں کا کہنا ہے کہ حکومت کو چاہئے تھا کہ اگر 12سال گز ر جانے کے بعد بھی ہو سٹل بچو ں کیلئے تعمیر نہیں ہو سکا تو کہیں نجی عما رت کو کر ایہ پر لے کر طلباء کو وہیں پر ٹھہرایاجائے لیکن ایسا نہیں کیاجارہااورطلباء پریشان حال ہیں۔ان کاکہناہے کہ مینڈھر تحصیل دور دور تک پھیلی ہوئی ہے اور کئی علاقوںکے طلباء کو پچاس کلو میٹر کا سفر بھی طے کرناپڑتاہے جس سے ان کی تعلیم پر بھی برااثر پڑتاہے ۔انہوںنے کہاکہ دور دراز جگہو ں پر بسنے والے لو گ زیا دہ غر یب ہوتے ہیں اسلئے ان کیلئے کرایہ کے کمرے لینا بھی آسان نہیں اور مجبوراًانہیں ترک تعلیم کرناپڑتاہے ۔طلباء کے والد ین کا کہنا ہے کہ مو جود ہ حکومت فو ری طور پر مینڈھر کا لج کی جانب تو جہ دے اور فو ری طور ہو سٹل تعمیر کر ایاجائے ۔انہوںنے کہا کہ پی ڈی پی حکومت نے20005میں مینڈھر ڈگری کالج بنو ایا تھا اور انہیں امید ہے کہ یہی اسی حکومت کے دور میں ہوسٹل کاقیام بھی عمل میں لایاجائے گا۔