مینڈھر قصبہ کا حال بے حال …نالیاں خستہ حالت کاشکار،کوچیٹوٹے ہوئے

مینڈھر//مینڈھر قصبہ کا حال انتہائی خراب ہے اور جہاں گلی کوچوں کو جانے والے راستے خستہ حالی کاشکار ہیں وہیں نالیاں بند پڑی ہیں ۔گزشتہ کئی برسوں سے قصبہ کی نالیوں کو ٹھیک نہیں کروایاگیا اور نہ ہی دیگر ترقیاتی کاموں کی طرف خاص توجہ دی گئی ہے جس کی وجہ سے بارشوں میں سارا پانی دکانوں اور مکانوں میں داخل ہوجاتاہے ۔قصبہ کے دکانداروں نے کئی بار انتظامیہ سے اپیل کی کہ نالیوں کی مرمت کی جائے تاکہ بارشوں کے دوران ان کا نقصان نہ ہولیکن اس سلسلے میں کوئی اقدام نہیں کیاجارہا۔بیوپار منڈل کے جنرل سکریٹری خورشید احمد کاکہناہے کہ قصبہ میںنالیاں نہ ہونے کی وجہ سے ہمیشہ دکانداروں کا نقصان ہوتاہے اور بدقسمتی کی بات ہے کہ حکومت اس طرف کوئی دھیان نہیں دے رہی ۔
ان کا کہنا تھا کہ بارہاانتظامیہ سے نالیوں اور گلی کوچوں کی مرمت کی مانگ کی گئی لیکن کسی نے کوئی دھیان نہ دیا ۔انہوں نے بتایاکہ ہسپتال اور تحصیل کمپلیکس کے اردگرد بھی کوئی نالی نہیں اورسارا پانی سڑک سے گزر کر دکانوں اور مکانات میں داخل ہوجاتاہے ۔
انہوں نے انتظامیہ اور ریاستی گورنر سے اپیل کی کہ قصبہ میں پانی کی نکاسی کا موثر بندوبست کیاجائے اور ساتھ ہی ترقیاتی کام بھی کئے جائیں نہیں تو وہ احتجاج کرنے پر مجبور ہوجائیں گے ۔رابطہ کرنے پرایس ڈی ایم مینڈھر نے کہاکہ وہ متعلقہ محکمہ جات کو بلاکر اس سلسلے میں بات کریں گے اور انہوںنے خود بھی دیکھاہے کہ قصبہ کی حالت خستہ ہے اورنہ صفائی کا کوئی انتظام ہے اور نہ ہی نالیوں سے پانی کی نکاسی کا۔تاہم انہوں نے کہاکہ اس سلسلے میں بہتری کے اقدامات کئے جائیں گے ۔