مینڈھرقصبہ میں غیرمناسب پارکنگ سے عام لوگوں کاجینامحال

مینڈھر//قصبہ مینڈھر کی کلیدی سڑک پر چھوٹی گاڑیوں کی غلط پارکنگ سے جام کا سلسلہ ہنوزجاری ہے جس کی وجہ سے عام لوگوں کو کئی گھنٹوں تک سڑک پر رہنا پڑتا ہے اور اس جام کی زدمیں کئی بیمار لوگ بھی آنے سے علاج ومعالجہ کےلئے ہسپتال پہنچنے میں دشواریاں جھیلتے ہیں۔اس سلسلے میںمینڈھرکے لوگوں کا کہنا ہے کہ بائی پاس سڑک نہ ہونے کی وجہ سے جام کا سلسلہ تھمنے کا نام ہی نہیں لے رہا ہے جس سے متعلقہ ڈیوٹی پر تعینات پولیس اہلکار اور انتظامیہ بھی بے بس نظر آ رہی ہے ۔لوگوں کا کہنا ہے کہ جام سے سکولی بچے اور ملازم بری طرح متاثر ہو رہے ہیں اور بچے وقت پر نہ سکول جا سکتے ہیں اور نہ گھر واپس پہنچ پاتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ چھوٹے چھوٹے بچے اورڈیوٹی پر جانے والے ملازمین بھی گاڑیوں میں کئی گھنٹوں تک جام میں پھنسے رہتے ہیں جس کی وجہ یہ ہے کہ عام لوگ اپنی نجی گاڑیاں سڑک کے کنارے کھڑی کرکے خرید و فروخت کیلئے چلے جاتے ہیں جس سے جام لگ جاتا ہے اور پھر یہ جام کئی گھنٹوں تک کھلنے کا نام نہیں لیتا ۔لوگوںکا کہنا تھا کہ ڈیوٹی پر تعینات پولیس اہلکار جام کو ختم کرنے کیلئے آگے پیچھے دوڑتے نظر آتے ہیں لیکن ان کی کوشش کے باوجود بھی جام کا سلسلہ لاگاتار جاری رہتا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ گورنر انتظامیہ فوری طور مینڈھر بائی پاس سڑک کی تعمیر مکمل کرے جس سے جام ختم ہو اور لوگ آرام سے اپنی ڈیوٹیوں پر جا سکیں اور بیمار لوگوں کو بھی دشواریوں کا سامنا نہ کرنا پڑے۔لوگوں کا کہنا تھا کہ بائی پاس سڑک کیلئے مینڈھر قصبہ کے لوگ کئی سالوں سے مانگ کر رہے ہیں لیکن متعلقہ حکومتوں نے مینڈھر بائی پاس سڑک کی طرف دھیان نہیں دیا جس سے عام لوگوں کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔انھوں نے ضلع انتظامیہ سے اپیل بھی کی کہ بائی پاس سڑک کو مکمل کرنے میں انتظامیہ اہم رول ادا کرے تاکہ جام کا سلسلہ ختم ہو۔