میرے دور اقتدار میں محکمہ صحت میں انقلابی اقدامات اٹھائے گئے

گول//سابق وزیر اعلیٰ غلام نبی آزاد نے ضلع رام بن کے سب ڈویژن گول کے صدر مقام پر ایک عوامی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جب میں مرکز میں وزیر صحت تھا تو اُس دوران پورے ملک میں انقلابی اقدامات اٹھائے گئے جس وجہ سے آج محکمہ صحت کی جانب سے مائوں بہنوں کو کافی فائد ہ حاصل ہو رہا ہے اور معذور لوگوں کے لئے بھی بہتر سکیمیں لاگو کی گئیں ۔ گول میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے غلام نبی آزاد نے بناء کسی نام لئے کہا کہ اس وقت غریبوں کے ساتھ سخت نا انصافی ہو رہی ہے جہاں روشنی سکیم سے محروم کر دیا گیا وہیں دیگرکاہچرائی، شاملات اراضی سے بھی محروم کرنے کا سلسلہ جاری ہے جس وجہ سے غریب طبقہ کودبایا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اب بھی وقت ہے کہ لوگ اپنے حقوق کی خاطر جنگ کے لئے تیار رہنا چاہئے اور ہم سب عوام کے ساتھ ہیں اور عوام کو ڈرنے کی کوئی بات نہیں ہے ۔غلام نبی آزاد نے عوام سے کہا کہ وہ ایسے لیڈر کو چُنیں جس کی دوآنکھیں برابر ہوں جو ہر قوم کو برابر دیکھ سکے ۔انہوں نے کہا کہ ایسے لوگوں کو مت چنیںجووبعد میں بھاگ جاتے ہیں ۔اس موقعہ پر ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے غلام نبی آزاد نے حد بندی کمیشن کی رپورٹ پر حیرانگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر چہ وہ پوری تفصیل سے نا واقف ہیں تا ہم بہت ساری ایسی باتیں ہیں جن پر حیرانگی ہو رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سانبہ ضلع جو کہ پہلے ہی اپنے آپ میں ایک چھوٹا سا ضلع ہے جہاں پہلے سے ہی دو اسمبلی نشستیں ہیں اور تیسری کو وجود میں لانے کی گنجائش کہاں سے نکالی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ادھمپور ، کشتواڑ ، ڈوڈہ میں نشستوں کو بڑھایا جا سکتا ہے لیکن کس طرح سے یہ نشستیں بڑھائی ہیں اس سلسلے میںمجھے پوری جانکاری نہیں ہے ۔ انہوں نے اس موقعہ پر عام شہریوں کی ہلاکت پر کہا کہ فوج اچھا کام کر رہی ہے لیکن جھڑپ کے دوران فوج کو عام لوگوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کے اقدامات پہلے سے کرنا چاہئے تا کہ کسی عام بے قصور انسان کی جان نہ جائے ۔ انہوں نے اس موقعہ پر حیدر پورے انکائونٹر کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ یہ بد قسمتی ہے کہ یہاں عام لوگوں کی جانیں ضائع ہو رہی ہیں اور اگر فوج نے دو عام شہریوں کی لاشوں کو واپس کیا ہے ان کو چاہئے کہ گول ٹھٹھارکہ کے عامر ماگرے کی نعش کو بھی اُن کے ورثا ء کے حوالہ کر دینا چاہئے ۔اس موقعہ پر کانگریس لیڈر محمد امین بٹ نے حد بندی کمیشن رپورٹ پر بات کرتے ہوئے کہا کہ ایسی باتیں سننے میں آ رہی ہیں کہ سنگلدان بلاک کو رام بن حلقہ اتخاب کے ساتھ جبکہ گول و داڑم بلاک کو بانہال کے ساتھ ملانے کی سازش رچی گئی ہے جسے کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کیا جائے گا ۔انہوں نے کہا کہ اگر ایسا ہوا تو ہم الیکشن بائیکاٹ کریں گے کیونکہ بانہال اور گول کا کہیں دور دور تک کا زمینی واستہ نہیں ہے اگر بانہال اور گول کو ملایا گیا تو بانہال کی عوام کو رام بن سے گزرتے ہوئے گول آنا پڑے گا اور اسی طرح سے گول کی عوام کو رام بن سے گزر کر بانہال جانا پڑے گا اور بانہال کو تو سرینگر گول سے نزدیک ہے ۔ انہوں نے اس موقعہ پر کہا کہ ہمارے ساتھ انصاف کیا جائے اور غلام نبی آزاد سے مطالبہ کیا کہ وہ گول کی عوام کے حق میں وکالت کریں ۔اس موقعہ پر کانگریس کے سینئر لیڈر غلام محمد سروڑی ، وقار رسول وانی ، محمد امین بٹ ، گلزار احمد وانی کے علاوہ خطہ چناب کے سینئر کانگریس لیڈران بھی غلام نبی آزاد کے ہمراہ گول میں موجود تھے ۔