مہور میں مکان گرنے سے 40 مویشی زندہ دفن

مہور//سب ڈویژن مہور میں دو دن سے لگاتار تیز بارش اور ژالہ باری سے فصلوں کو نقصان پہنچا ہے۔اس کے ساتھ ہی کئی مکانات گرنے کی اطلاعات بھی ہیں۔ذرائع کے مطابق چھنڈی بلمت کوٹ سب ڈویژن مہور میں میں عبدالرحمان والد احمد شیخ کا مکان گرنے سے 40 مویشی زندہ دفن ہوگئے ہیں۔چسوت A وارڈ نمبر1 سے لوگوں نے کشمیر اعظمیٰ کو بتایا کہ یہاں پر تین مکانات گر گئے ہیں۔یہ مکان محمد یوسف والد نامدار،عبدالحمید والد منور وانی اور محمد یوسف والد عبدالغنی کے تھے۔بگوداس جو پیرپنجال کے دامن پر واقع ہے وہاں سے لوگوں نے اطلاع دی ہے کہ وہاں پر بھی زبردست نقصان ہوا ہے۔بگوداس کے سرپنچ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ وہاں پرمکان محمد رمضان ملک والد غلام محمد ملک کا مکان گر گیا ہے ۔ادھر ملیکوٹ اور منجی کوٹ میں بھی کئی مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔سب ڈویژن مہور کا مڈل اسکول گامگلی ،پرائمری اسکول ڈڈنی شیدول کو بھی شدیدنقصان پہنچا ہے۔ہائی اسکول نہوچ پوری طرح سے گر گیا ہے ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ اسکول کی عمارت سے ٹین اڑ گئے ہیں اور نقصان پہنچا ہے۔ پرائمری اسکول رنگلائی لدھ بھی پوری طرح سے گر گیا ہے۔گزشتہ دو روز پہلے اڑبیس میں 16 سالہ لڑکی پہاڑی سے گر کر دریا میں گر گئی تھی تاہم پولیس اور مقامی لوگوں نے مشتر طور سے تلاش شروع کر دی تھی تاہم اسی روز بارش کا سلسلہ جاری ہوا  اور ابھی تک لاش بر آمد نہیں کی جا سکی ہے۔