مہا شیو راتری کا تہوار مذہبی عقیدت و احترام کیساتھ منایا گیا

جموں //مہاشیو راتری( ہیرتھ)کا تہوار ملک بھر کی طرح جموں میںبھی جوش اور جذ بے کے ساتھ منایا گیابڑی تعداد میںکشمیری پندتوں نے مندروں میں جاکر پوجا پاٹ کے دوران ریاست کے امن کوشحالی اور تر قی کی خاطر دعا کی جبکہ اکثریتی طبقے نے ہیرتھ کے موقعے پرکشمیری پندتوں کو مبارک باد پیش کی ۔ ہندو مذہب کے مطابق یہ تہوار بھگوان شیو اور دیوی پاروتی کی شادی کی خوشی میں منایا جاتا ہے۔ اس سلسلہ میں جموں شہر کے مختلف مندروں میں پُر وقار تقریبات کا اہتمام کیا گیا جن میں مقامی لوگوں کےساتھ ساتھ کشمیر ی مہاجرین پنڈتوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کر کے پوجا پارٹ کی۔جموں میں رہائش اختیار کرچکے کشمیری پنڈت سمیر بھٹ نے بتایا کہ ’ہیرتھ‘ تہوار کی چار دنوں تک جاری رہنے والی تقریبات پیر کے روز سے شروع ہوئی ہیں اور اس کی مناسبت سے پیر کی شام خصوصی ’وٹک پوجا‘ کا اہتمام کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ ہندوﺅں میں صرف کشمیری پنڈت وٹک پوجا کا اہتمام کرتے ہیں۔ انہوں نے بتایا ’اس خصوصی پوجا کا سلسلہ غروب آفتاب سے شروع ہوکر رات دیر گئے تک جاری رہے گا۔ وٹک پوجا بھگوان شیو اور دیوی پاروتی کی شادی تقریب کی علامت ہے‘۔ سمیر بھٹ نے بتایا کہ مجموعی طور پر سارے ہندو مہاشیوراتری یا ہیرتھ کا تہوار مناتے ہیںمگر اُن کا اور ہمارا اس تہوار کو منانے کا طریقہ بالکل مختلف ہے۔ انہوں نے بتایا کہ کشمیری پنڈتوں کو چھوڑ کر دوسرے ہندو اس تہوار کے موقع پر مندروں میں جاکر پوجا کرتے ہیں جبکہ ہم اس تہوار سے متعلق خصوصی وٹک پوجا کا اہتمام اپنے گھروں میں ہی کرتے ہیں۔جموں میں شیو پاروتی مندر، شیو دھام اور دیگر مشہور مندروں کو پھول مالاو¿ںاور رنگا رنگ روشنیوں سے سجایا گیا ہے جبکہ ان کے علا وہ دیگر مندروں میں بھی تقریبات کا اہتمام کیا گیا تھا ۔