مہاجر کشمیری پنڈتوں سے بات چیت | بہت جلد واپسی ہوگی: موہن بھاگوت

جموں//راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) کے سربراہ موہن بھاگوت نے اتوار کو کہا کہ جب کشمیری پنڈت وادی کشمیر واپس جائیں گے تو انہیں کوئی نہیں روکے گا اورمجھے یہ احساس ہے کہ وہ دن بہت قریب ہے اور میری خواہش ہے کہ وہ دن جلد آئے۔ بھاگوت نے کشمیری ہندئوںسے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے نوریہہ تقریب  کے موقعہ پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیری پنڈت سلامتی اور روزی روٹی کی یقین دہانی کے ساتھ واپس جائیں گے۔کمیونٹی کو یہ عزم کرنا چاہیے کہ ہم نے (کشمیر) انتہا پسندی کی وجہ سے چھوڑا تھا لیکن اب جب ہم واپس آئیں گے تو ہم اپنی سلامتی اور روزی روٹی کی یقین دہانی کے ساتھ ہندو اور بھارت بھگت کے طور پر واپس جائیں گے، ہم اس طرح زندگی گزاریں گے کہ کوئی ہمیں بے گھر کرنے کی جرات نہیں کرے گا۔ آر ایس ایس سربراہ نے کہاکہ کشمیری پنڈت گزشتہ تین چار دہائیوں سے اپنے ہی ملک میں گھر سے بے گھر ہونے کا خمیازہ بھگت رہے ہیں۔ یہ ضروری ہے کہ وہ اس صورتحال میں شکست کو قبول نہ کریں اور چیلنجوں کا سامنا کریں۔ انہوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ وویک اگنی ہوتری کی ہدایت کاری میں 'دی کشمیر فائلز' نے 1990کی دہائی میں کشمیری پنڈتوں کے اخراج کی ایک بدقسمت حقیقت کو ظاہر کیا ہے۔ بھاگوت نے کہاکہ کچھ لوگ اس کے حق میں ہیں جبکہ کچھ اس کے خلاف ہیں۔ فلموں میں کشمیری پنڈتوں کے سنگین المیے کی ایک بدقسمتی حقیقت کو دکھایا گیا ہے جس نے ہم سب کو چونکا دیا۔پہلے میں نے کہا تھا کہ کشمیری پنڈتوں کا مسئلہ عوامی بیداری کے ذریعے حل کیا جائے گا اور آرٹیکل 370جیسی رکاوٹوں کو ہٹانا ضروری ہے۔ 2011 کے بعد، ان 11 سالوں میں، ہماری اجتماعی کوششوں کی وجہ سے، اب کوئی آرٹیکل 370 نہیں ہے۔