مہاجرین کی جائیداد کا جائزہ لینے کیلئے کمیٹی تشکیل

سرینگر// ریاست کے کسٹوڈین جنرل اعجاز احمد بٹ نے کل ایک میٹنگ کے دوران جائیداد مہاجرین محکمہ کی کارکردگی کا جائزہ لیا۔میٹنگ کے دوران محکمہ میں مالی ضابطگی ، تجاوزات کو منہدم کرنے اور غیر قانونی قبضے کو ہٹانے کے بارے میں تفصیلات دی گئیں۔کسٹوڈین جنرل نے سال 2017-18ء کے دوران ریاست کے دونوں خطوں میں 4008.68 لاکھ روپے کی ریکوری کے لئے محکمہ کے عملے کو مبارک باد دی۔قابل ذکر ہے کہ اس کے علاوہ 2018-19ء کے دوران کشمیر صوبے میں اب تک 1398.50 لاکھ روپے کے ہدف کے مقابلے میں 430.92لاکھ روپے کی ریکوری کی گئی ہے۔کسٹوڈین جنرل نے ٹینگہ پورہ بائی پاس ، بٹہ مالو ، پنزی نارہ اور برتھنہ میں جائیداد مہاجرین کو نوٹیفائی کرنے کے لئے مناسب اقدامات کرنے کی ہدایت دی ۔انہوں نے سرکاری محکموں اور دیگر افراد سے 15روز کے اندر بقایاجات رقومات کی ریکوری یقینی بنانے کے لئے بھی کہا۔ میٹنگ کے دوران کرالہ پتھری میں شیپ ہسبنڈری محکمہ کے قبضے میں جائیداد مہاجرین زمین کا جائزہ لینے کے لئے ایک کمیٹی تشکیل دی گئی اور اسے اپنی رپورٹ 15روز کے اندر پیش کرنے کے لئے کہا گیا ہے۔کسٹوڈین جنرل نے مجید باغ باغات برزلہ میں مختلف افراد کے زیر قبضہ زمین کے بارے میں تفصیلات طلب کیں۔