مڈ ڈے میل راجوری کے اساتذہ کیلئے ڈرائونا خواب

 اجوری //حکومت ہند کی طرف سے جارہی مڈ ڈے میل سکیم راجوری میں انچارج ٹیچروںکیلئے پریشانی کا باعث بن گئی ہے کیونکہ انہیں 2015-16سے2017-18کے بقایاجات ابھی تک واگزار نہیں کئے گئے اور نہ ہی متعلقہ حکام کی طرف سے کوئی ٹھوس اقدام کیاجارہاہے ۔اس سکیم کے تحت آٹھویں جماعت تک کے طلباء کو دوپہر کا کھانافراہم کیاجاتاہے تاہم پریشانی یہ ہے کہ اس کا انتظام کرنے والے اساتذہ مشکلات میں پھنس چکے ہیں کیونکہ متعلقہ حکام کی طرف سے واجبات کی واگزاری نہیں کی جارہی ۔اس سلسلے میں بات کرتے ہوئے کئی اساتذہ نے نام مخفی رکھنے کی شرط پر بتایاکہ وہ ذہنی طور پر شدید پریشان ہیں کیونکہ مالی سال 2015-16سے لیکر 2017-18تک کی کئی ماہ کی واجبات کی ادائیگی نہیں ہوئی اور فی ٹیچر پچاس ہزار سے زائد کی رقم واجب الادا ہے ۔ایک ٹیچر نے بتایاکہ راجوری زون کے ایک سرکاری سکول میں مڈ ڈے میل انچارج ہے جس کے ستر ہزار سے زائد روپے واجب الادا ہیں جبکہ وہ پہلے سے ایس ایس اے تنخواہوں میں تاخیر کی وجہ سے مشکلات کاسامناکررہاہے ۔انہوںنے بتایاکہ مالی سال 2015-16کے مڈ ڈے میل رقومات ابھی تک نہیں ملی جبکہ اس کے بعد کی واجبات بھی بقایا ہیں ۔ راجوری زون کے ایک اور ٹیچر نے بتایاکہ کئی اساتذہ محنت سے اس سکیم کو چلاتے ہیں حالانکہ یہ ان کا کام نہیں ہے ۔انہوںنے کہاکہ اس کے باوجود حکومت نے واجبات ادا نہ کرکے انہیں شدید پریشانی سے دوچار کردیاہے ۔وہیں بال جرالاں زون کے ایک ٹیچر نے کہاکہ زونل ایجوکیشن دفاتر اور چیف ایجوکیشن افسر دفتر کے درمیان تعاون کا فقدان ہے اور جہاں زونل دفتر والے یہ کہتے ہیںکہ 2015-17تک کی واجبات حکام کی طرف سے دیاجاناباقی ہے وہیں چیف ایجوکیشن افسرکے دفتر سے پتہ چلتاہے کہ یہ رقومات زونل دفاتر کو فراہم کردی گئی ہیں اور ماسوائے رواں مالی سال کے چند مہینوں کے پچھلی کوئی بقایارقم نہیں رہتی ۔نوشہرہ زون کے ایک ٹیچر نے بتایاکہ وہ اس پہلے اس بات کا انتظار کررہے تھے کہ حکام کی طرف سے رقومات ملتے ہی واجبات ادا ہوجائیں گے مگر اب زونل ایجوکیشن افسر دفتر اور چیف ایجوکیشن افسر دفتر کے متضاد بیانات سامنے آرہے ہیں جس نے پریشانی اور بھی بڑھادی ہے ۔ ان تمام اساتذہ نے حکام سے اپیل کی ہے کہ ان کے واجبات کی ادائیگی کی جائے اور مڈ ڈے میل کا یہ اضافی بوجھ اساتذہ کے کندھوں سے ختم کیاجائے ۔اس حوالے سے چیف ایجوکیشن افسر راجوری لعل حسین نے مڈ ڈے میل کی عمل آوری میںکچھ اور پریشانیوں کی طرف اشارہ کیا ۔تاہم انہوں نے بتایاکہ مڈ ڈے میل میں 72لاکھ روپے واجب الادا ہیں اور یہ معاملہ حکام کے نوٹس میں لایاگیاہے ۔