مواصلاتی نظام کی عدم دستیابی

اوڑی//اوڑی کے تقریباً30گائوں میں مواصلاتی نظام کی عدم دستیابی سے لوگوں کو مشکلات درپیش ہیں۔ان گائوں میں کمل کوٹ، ماڑیاں،گوہالن ،سلطان ڈھکی،گوالتہ،اوڑوسہ،شاہدرہ،کنڈی برجالہ،دردکوٹ،زمبور پٹن،لچھی پورہ،گواس،دازن،گھرکوٹ،چرنڈہ،سلی کوٹ،لمبر،بودرالی،گگرہل،بنہالی،دودرن، چوٹالی ،جبڈی،داراکونجن،میدانن،باڈین،سلاسن اور برنیٹ شامل ہیں۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ موجودہ سائنسی دور میں ابھی تک یہ دیہات مواصلاتی نظام سے محروم ہیں جس کی وجہ سے عام لوگوں کے ساتھ ساتھ طلباء بھی گوناگوں مسائل کا سامنا کررہے ہیں۔مقامی آبادی کے مطابق اگر چہ چند ایک مقامات پر موبائل ٹاور نصب کئے گئے ہیں انہیںقابل کار نہیں بنایا گیا ہے ۔لڑی بل نامبلہ اوڑی کے ایک شہری ظہور احمد نے بتایا کہ2019میں ان کے علاقے میں ریلائنس جیو نامی کمپنی نے ایک موبائل ٹاور نصب کیا جس کے نتیجے میں لوگوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی مگر ابھی تک وہ ٹاوربیکار ہے۔سرپنچ لچھی پورہ (اے)مسرت جمال نے بتایا کہ ان کے گائوں میں موبائل نیٹ ورک اور انٹر نیٹ سہولیات دستیاب نہ ہونے کی وجہ سے طلبہ کوآن لائن تعلیم حاصل کرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔انہوں نے کہا’’ ہمارے گائوں کے بچے کئی کلو میٹر دور آن لائن کلاس یا پھر کوئی فارم جمع کرنے کیلئے جاتے ہیں کیونکہ علاقے میں انٹرنیٹ سہولیات دستیاب نہیں ہیں‘‘۔کملکوٹ کے ایک شہری نے بتایا کہ ان کے علاقے میں جیو کاایک موبائل ٹاور نصب ہے لیکن وہ اکثر اوقات بند رہتا ہے جس کی وجہ سے علاقے میں مواصلاتی نظام ٹھپ ہو کر رہ گیا ہے۔اوڑی کے مختلف دیہات میں کئی برس قبل ریلائنس جیو کمپنی کی طرف سے ایک درجن کے قریب نصب کئے گئے موبائل ٹاور ابھی تک بیکار ہی ہیں۔اس سلسلے میں ایس ڈی ایم اوڑی نے مقامی لوگوں کی شکایات کے بعد 6مارج 2021کو ڈپٹی کمشنر بارہمولہ کو ایک خط بھی لکھا تھا جس میں ایس ڈی ایم نے اوڑی کے 29دیہات میں مواصلاتی سہولیات کے مقدان سے آگا ہ کیا تھا ۔انہوں نے ڈٹی کمشنرسے اپیل کی تھی کہ متعلقہ کمپنیوں سے یہ معاملہ اٹھایا جائے تاکہ لوگوں کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ذرائع کے مطابق تین ماہ گزرنے کے باجود ابھی تک ضلع انتظامیہ کی طرف سے اس حوالے سے کسی کارروائی کی کوئی اطلاع نہیں ہے ۔ڈپٹی کمشنر دفتر بارہمولہ میں تعینات ایک افسر نے بتایا کہ یہ معاملہ زیر غور ہے اورانتظامیہ اس مسئلہ کو حل کرنے کی کوشش کررہی ہے۔