موئے تراشی

 

مہجور نگر ٹریڈرس ایسوسی ایشن کا شدید رد عمل 

سرینگر//مہجور نگر میں خاتون پر حملہ کرکے اسکے بال کاٹے جانے کے واقعہ کے خلاف ٹرےڈرس ایسوسی ایشن مہجور نگر نے سخت رد عمل کااظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر حکومت اس طرح کے گھناﺅنے واقعات پر روک نہیں لگا سکتی ہے تو اسے سرکار چلانے کا کوئی حق نہیں ہے ۔ایسوسی ایشن کے صدر زبیر احمد بٹ نے اپنے ایک بیان میں مہجور نگر میں پیش آئے واقعہ کی سخت الفاظ میں مذمت کی ۔انہوں نے کہاکہ گذشتہ روز رام باغ نٹی پورہ میں اسی طرح کا واقعہ پیش آیا اور اب یہ سلسلہ مہجور نگرتک پھیل گیا۔انہوں نے کہاکہ پولیس عوام کو ہی نشانہ بنا رہی ہے حالانکہ مجرموں سے چشم پوشی کی جارہی ہے اور انہیں دن دھاڑے اور کھلے عام خواتین پر حملہ کرنے کی چھوٹ دی جارہی ہے ۔زبیر احمد بٹ نے کہاکہ اگر پولیس اور انتظامیہ ایسے حملوں پر روک لگانے مین ناکام رہی توٹرےڈرس ایسوسی ایشن مہجور نگر ازخود راست اقدامات کرے گی جس کی ساری مہ داری انتظامیہ پر عائد ہوگی ۔
 

رضا کارانہ کمیٹیاںقابل سراہنا: مجلس عمل

سرینگر// عوامی مجلس عمل کا ایک اجلاس تنظیم کے صدر دفتر میرواعظ منزل راجوری کدل میں میرواعظ ڈاکٹر مولوی محمد عمر فاروق کی صدارت میں منعقد ہوا ۔ اجلاس میں تنظیم کے جنرل سیکریٹری کے علاوہ سرکردہ عہدیداروں، کارکنوں اور بڑی تعداد میں نوجوانوں نے شرکت کی۔ اجلاس میں جموںوکشمیر کے یمین و یسار میں کشمیر کی عزت مآب خواتین کی چوٹیاں کاٹے جانے کے بڑھتے ہوئے واقعات اور اس حوالے سے ریاستی حکمرانوں کی عدم توجہی کو حد درجہ افسوسناک قرار دیتے ہوئے کہا گیا کہ کشمیری خواتین کیخلاف اس تازہ جارحیت کے نتیجے میں پورے کشمیر میں بے چینی ، اضطراب اور تذبذب کی کیفیت پیدا ہو گئی ہے اور خصوصیت سے خواتین عدم تحفظ کی شکار ہو گئی ہیں۔اجلاس میں کہا گیا کہ ان شرمناک واقعات پر قابو پانے کے حوالے سے حکومتی دعوے بالکل سراب ثابت ہو رہے ہیں اور ایسا لگ رہا ہے کہ ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت اس قسم کی شر انگیزیاں انجام دی جارہی ہیں۔اجلاس میں میرواعظ سے مختلف علاقوں سے آئے ہوئے نوجوانوں کے وفود نے ملاقات کے دوران بتایا کہ انہوں نے اپنے اپنے علاقوں میں ان چوٹی کاٹ واقعات کے سد باب کیلئے رضاکارانہ کمیٹیاں تشکیل دی ہیں جس کی سراہنا کرتے ہوئے میرواعظ نے ان کے عزم اور حوصلے کو سراہتے ہوئے کہا کہ یہاں کے نوجوان نسل نے ہمیشہ غیر معمولی حالات اور ہر آڑے وقت میں آگے بڑھ کر عزم اور حوصلے کے ساتھ غیر معمولی حالات کا مقابلہ کیا ہے اور اب کی بار بھی امید ہے کہ پوری قوم استقامت اور اتحاد و یکجہتی کے ساتھ ان حالات کا بڑی خندہ پیشانی کے ساتھ مقابلہ کریگی اور اس شرانگیز مہم میں ملوث عناصر کی سرکوبی کیلئے اپنی تمام کوششیں بروئے کار لائے گی۔