‘منکی گیٹ’ اسکینڈل میری کپتانی کا بدترین لمحہ:پونٹنگ

میلبورن/آسٹریلیا کے سابق کپتان رکی پوٹگ نے 2008 میں ہوئے ‘منکی گیٹ’ اسکینڈل کو اپنی کپتانی کا بدترین لمحہ قرار دیا ہے ۔سال 2008 میں ہندوستان کے آسٹریلیا دورے کے دوران سڈنی میں ہوئے دوسرے ٹیسٹ میچ میں ہندوستانی آف اسپنر ہربھجن سنگھ اور آسٹریلیا کے آل راؤنڈر اینڈریو سائمنڈز کے درمیان کہا سنی ہو گئی تھی اور کچھ نازیبا الفاظ کا استعمال بھی کیا گیا تھا۔ اس معاملے کے سبب دونوں ٹیموں کے درمیان جھگڑا اتنا بڑھ گیا تھا کہ ہندوستانی ٹیم نے دورہ درمیان چھوڑنے کی بات کہی تھی۔ لیکن بین الاقوامی کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کی مداخلت کے بعد معاملہ ٹھنڈا ہوا تھا۔پونٹنگ نے کہا ‘‘2005 میں ایشز سیریز ہارنا بڑا دھچکا تھا پر میں اس وقت قابو میں تھا۔ لیکن‘منکي گیٹ’ اسکینڈل کے بعد میں کنٹرول کھو بیٹھا تھا اور یہ میری کپتانی کا بدترین لمحہ تھا۔ یہ تنازع کافی وقت تک چلا اور مجھے یاد ہے کہ ایڈیلیڈ ٹیسٹ کے دوران میں نے کرکٹ آسٹریلیا کے حکام سے اس سلسلے میں بات کی کیونکہ اس میچ کے بعد کیس کی سماعت ہونی تھی’’۔انہوں نے کہاکہ ‘‘منکي گیٹ اسکینڈل معاملے کے بعد ٹیم میں سبھی لوگ مایوس ہو گئے تھے جس کی وجہ سے اگلے مقابلے میں اس کا ٹیم کی کارکردگی پر اثر پڑا تھا۔ پرتھ ٹیسٹ میں ہم جیت کے دہانے پر تھے لیکن ہمیں اس میچ میں شکست کا سامنا کرنا پڑا اور اس کے کچھ دنوں بعد حالات بگڑتے چلے گئے ’’۔پونٹنگ کی کپتانی میں آسٹریلیا نے دو بار عالمی کپ جیتے لیکن ان کی کپتانی میں اس 2005، 2009 اور 2010-11 میں ہوئی ایشز سیریز میں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ پونٹنگ نے کہا‘‘2005 میں سبھی کو محسوس ہو رہا تھا کہ ہم انگلینڈ کو ہرا دیں گے لیکن ایسا نہیں ہو پایا’’۔یو این آئی۔