ملک میںکورونا کے نئے معاملوں میں نمایاں کمی واقع

نئی دہلی//ملک میں کورونا انفیکشن کے نئے معاملوں میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے اور مختلف ریاستوں اور مرکز کے زیرانتظام علاقوں میں صحت مند افراد کی تعداد میں مسلسل اضافے کی وجہ سے زیر علاج مریضوں کی تعداد میں زبردست کمی واقع ہوئی ہے ۔ اس کی شرح کم ہوکر 4.60 فیصد ہوگئی ہے ۔مرکزی وزارت صحت و خاندانی بہبود کے مطابق ، گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 31118 نئے کیس سامنے آئے ہیں اور متاثرہ افراد کی تعداد 94.62 لاکھ ہوگئی ہے ۔ اس عرصے کے دوران ، 41،985 مریض صحتمند ہوگئے اور اس کے ساتھ ہی مستقل طور پر صحت یاب ہونے والوں کی تعداد 88.89 لاکھ تھی۔ زیر علاج مریضوں میں 11،349 کی کمی کے ساتھ یہ تعداد 4.35 لاکھ ہوگئی۔ اسی عرصے میں ، مزید 482 مریضوں کی ہلاکت کے ساتھ اموات کی تعداد بڑھ کر 1،37،621 ہوگئی ہے ۔ملک میں بازیابی کی شرح اب 93.94 فیصد اور اموات کی شرح 1.45 فیصد ہوگئی ہے ۔ پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران ، کیرالہ میں ، سب سے زیادہ 6055 مریض صحت مند ہوگئے اور فعال معاملات کی تعداد سب سے کم 2694 تھی ، جب کہ دہلی میں 108 افراد کی موت ہوگئی۔مہاراشٹر میں کووڈ ۔19 میں سب سے زیادہ متاثرہ کیسز کم ہوکر 91،623 فعال معاملات ہوئے ہیں۔ ریاست میں اموات کی تعداد بڑھ کر 47،151 ہوگئی ہے ، جبکہ اب تک 16.85 لاکھ سے زیادہ افراد نے کورونا کو شکست دی ہے ۔ کیرالا میں صحت مند مریضوں کی تعداد 5.38 لاکھ کو عبور کر چکی ہے اور فعال کیس 62،025 تک جا چکے ہیں جبکہ 2244 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔قومی دارالحکومت دہلی میں زیر علاج مریضوں کی تعداد 2206 سے گھٹ کر 32،885 ہوگئی ہے ۔ وہیں، اس بیماری سے 9174 افراد اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں ، جبکہ 5.28 لاکھ سے زیادہ مریض صحت مند ہوئے ہیں۔جنوبی ریاست کرناٹک میں ، کورونا کے فعال مریضوں کی تعداد میں 1224 کمی سے 23،298 ہوگئی ہے ۔ ریاست میں اموات کی تعداد 11،778 تک جا پہنچی ہے اور اب تک قریب 8.49 لاکھ افراد بازیاب ہوچکے ہیں۔ آندھرا پردیش میں ، اس عرصے کے دوران 557 فعال مریضوں کی تعداد 7840 ہوگئی۔ ریاست میں ابھی تک 6992 افراد کورونا کی وجہ سے ہلاک ہوچکے ہیں اور 8.53 لاکھ سے زیادہ افراد انفیکشن سے صحت مند ہوچکے ہیں۔ملک کی سب سے بڑی ریاست ، اتر پردیش میں ، زیر علاج مریضوں کی تعداد 476 سے گھٹ کر 24،099 ہوگئی ہے اور اس وبا کی وجہ سے 7761 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ ریاست میں اب تک 5.12 لاکھ مریض صحت مند ہوچکے ہیں۔ تمل ناڈو میں زیر علاج مریضوں کی تعداد 10،997 ہوگئی ہے اور اب تک 11،712 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ ریاست میں اب تک 7.59 لاکھ سے زیادہ افراد انفیکشن سے صحت یاب ہوچکے ہیں۔اوڈیشہ میں ، زیر علاج مریضوں کی تعداد 4921 ہوگئی ہے اور 1739 افراد ہلاک ہوگئے ہیں جبکہ بیماری سے ٹھیک ہونے والے مریضوں کی تعداد 3.12 لاکھ سے تجاوز کرچکی ہے ۔ تلنگانہ میں ، کورونا کے زیر علاج مریضوں کی تعداد کم ہوکر 9627 ہوچکی ہے اور 1461 افراد ہلاک ہوگئے ہیں جبکہ 2.59 لاکھ سے زائد افراد وبائی مرض سے بازیاب ہوئے ہیں۔مغربی بنگال میں کورونا کے فعال معاملات میں 107 کی کمی کے بعد ، یہ تعداد 24،298 رہ گئی ہے اور 8424 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ ریاست میں اب تک ساڑھے چار لاکھ سے زیادہ افراد صحت مند ہوچکے ہیں۔ پنجاب میں فعال کیسز کی تعداد 7842 ہوگئی ہے اور انفکشن سے نجات پانے والے افراد کی تعداد 1.39 لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے جبکہ اب تک 4807 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔مدھیہ پردیش میں ، فعال کیسوں کی تعداد کم ہوکر 14،771 ہوگئی ہے اور اب تک 1.88 لاکھ سے زیادہ افراد صحت مند ہوچکے ہیں جبکہ 3260 افراد اس بیماری سے ہلاک ہوگئے ہیں۔ گجرات میں 14،970 فعال معاملے ہیں اور 3989 افراد ہلاک ہوگئے ہیں اور 1.90 لاکھ افراد بھی اس مرض سے بازیاب ہوئے ہیں۔ بہار میں 5359 فعال معاملے ہیں۔ ریاست میں ، کورونا کی وجہ سے 1264 افراد ہلاک ہوگئے ہیں جبکہ 2.27 لاکھ سے زیادہ افراد انفیکشن سے صحت یاب ہوچکے ہیں۔ابھی تک کورونا کی وبا سے ، چھتیس گڑھ میں 2861 ، ہریانہ میں 2428 ، راجستھان میں 2312 ، جموں وکشمیر میں 1694 ، اتراکھنڈ میں 1231 ،آسام میں 981، جھارکھنڈ میں 964 ، گوا میں 688 ، پدوچیری میں 610 ، تریپورہ میں 370 ، ہماچل پردیش میں645، چنڈی گڑھ میں 277 ، منی پور میں 281 ، لداخ میں 116 ، میگھالیہ میں 111 ، سکم میں 109 ، ناگالینڈ میں 64 ، انڈومان اور نکوبار جزائرمیں 61 ، اروناچل پردیش میں 54 اور دادر نگر حویلی اور دمن دیو میں دو۔ موت ہوئی ہیں۔یواین آئی
 
 
 
 

کولکتہ میں کورونا ویکسین کا تیسرا مرحلہ آج | پہلی خوراک ریاستی وزیر کو پلائی جائے گی

کلکتہ //کورونا وائرس ویکسین کا کولکتہ میں پہلا ٹرائل 2 دسمبر کوبیلیا گھاٹا میں نائس اسپتال میں شروع ہوگا ۔پہلی خوراک ریاستی وزیر اورکلکتہ کارپوریشن کے ایڈمنسٹریرفرہاد حکیم کو دیاجائے گا ۔کچھ دن پہلے ریاستی فرہاد حکیم نے کہا تھا کہ وہ کورونا ویکسین کی ٹرائل خوراک لینے کو راضی ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ این آئی سی ای ڈی کی انتظامیہ نے پھر ریاستی وزیر کو یہ ویکسین لینے کی دعوت دی تھی جسے اور کلکتہ میونسپل کارپوریشن کے ایڈمنسٹریٹرفرہاد حکیم لینے کو راضی ہوگئے تھے ۔ فرہاد حکیم نے کہا کہ اگر مجھ پرٹرائل کرنے سے بہت سارے لوگوں کو فائدہ ہو گا تو میں اس کے لئے پر راضی ہوں ۔ میں اپنی زندگی کے بارے میں نہیں سوچتا ۔کچھ دن پہلے ہی 1000ویکسین خوراک ٹرائیل کے لئے حیدرآباد سے کلکتہ نائس اسپتال میں آیا ہے ۔یہ تیسرے مرحلے ویکسین ٹرائل ہے ۔ ویکسین کومنفی 4 ڈگری سینٹی گریڈ تک محفوظ کیاگیا ہے ۔میڈیا کو دیئے گئے ایک انٹرویو میں این آئی سی ای ڈی کی سربراہ شانتا دتہ نے کہا کہ یہ تیسرے مرحلے کی ٹرائیل ہے ۔ سب سے اہم بات یہ ہے کہ ملک میں 26,000 افراد کو تیسرے مرحلے ٹرائیل کے لئے خوراک دی جائیں گی۔24 اداروںکو اس کی ذمہ داری دی گئی ہیں ۔بنگال میں 2دسمبر سے شروع ہورہا ہے ۔یواین آئی