مفاہمت کی سیاست میں یقین: بخاری نوجوانوں کے مستقبل کیساتھ کھلواڑ باعث تشویش

عظمیٰ نیوز سروس

سرینگر// اپنی پارٹی سربراہ سید الطاف بخاری نے کہا ہے کہ اپنی پارٹی جموں کشمیر میں مفاہمت کی سیاست کو پروان چڑھانے کیلئے معرض وجود لائی گئی ہے۔ کونہ بل پانپور میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے بخاری نے کہا، جموں و کشمیر کے عوام کی تباہ کن اور کمزور حالت کو دیکھ کر ہم نے مفاہمت کی سیاست کو پروان چڑھانے کیلئے اپنی پارٹی کا قیام عمل میں لایا تاکہ عوام کو مزید نقصانات سے بچایا جاسکے اور اس سرزمین پر امن اور خوشحالی کو یقینی بنایا جاسکے۔بخاری نے کہا، ہم مسلسل پریشان کن صورتحال سے دوچار ہیں، آج بھی نوجوان جیلوں میں بند پڑے ہیں،اور جو نوجوان کریئر کو بہتر بنانے کی جستجو میں ہیں، کو بھی مشکلات کا سامنا کرنا ہے۔ انہوں نے کہا، ہم دیکھ رہے ہیں کہ ملازمت کے درخواست دہندگان اور پاسپورٹ کے متلاشی افراد کی ویری فکیشن کے عمل میں رکاوٹیں ڈالی جارہی ہیں۔ اگر کسی درخوست دہندہ کا کوئی رشتہ دار ماضی میں کسی قابل اعتراض کام میں ملوث رہا ہے، تو اس کی ویری فیکیشن رپورٹ کو منفی ظاہر کیا جاتا ہے اور اس طرح اسے نوجوانوں کے مستقبل کے ساتھ کھلواڑ ہورہا ہے۔انہوں نے حکام پر زور دیا کہ اس طرح کا طرز عمل بند کیا جانا چاہیے اور نوجوانوں کو اپنے کیریئر کو بہتر بنانے کے مواقعے فراہم کئے جانے چاہیں۔بخاری نے کہا کہ جو روایتی سیاسی جماعتیں اور ان کے لیڈران ان دنوں غزہ میں نوجوانوں کی جانوں کے ضیاع پر ماتم کرتے نظر آرہے ہیں، وہ یہ بات بھول رہے ہیں کہ خود ان کے ادوارِ اقتدار میں انہوں نے جموں کشمیر کے ہزاروں نوجوانوں کو جیلوں میں قید کرکے ان کی زندگیاں تباہ کی ہیں۔انہوں نے مزید کہا، گزشتہ 70 سالوں میں ان جماعتوں اور ان کے لیڈروں اقتدار حاصل کرنے کے لیے عوام کو اٹانومی اور سیلف رول جیسے پر فریب نعروں سے بہلایا اور انہیں دھوکہ دیکر ووٹ حاصل کئے۔ بخاری نے عوام سے اپیل کی کہ وہ ان سیاسی جماعتوں کے جھوٹے وعدوں کے جھانسے میں نہ آئیں۔ انہوں نے کہا، یہ آپ کی ذمہ داری ہے کہ آپ روایتی سیاسی جماعتوں اور ان کے رہنماں کو یہ پیغام دیں کہ اب بہت ہو چکا ہے۔ وہ بار بار کھوکھلے وعدوں کے ذریعے آپ کو بے وقوف بنارہے ہیں۔ آپ انہیں اپنا مزید استحصال کرنے کی اجازت نہ دیں۔