مغل شاہراہ چھٹے روز بھی بند

راجوری //خطہ پیر پنچال کو وادی کشمیر سے ملانے والی تاریخی مغل شاہراہ پیر گلی اور آس پاس کے حصوں میں برفباری ہونے کے باعث چھٹے روز بھی بند رہی ۔اگرچہ حکام کی طرف سے برف ہٹانے کاکام جاری ہے تاہم ابھی بھی ڈیڑھ کلو میٹر کے حصے پر برف باقی ہے۔ ذرائع نے کشمیرعظمیٰ کو بتایاکہ سڑک سے برف ہٹانے کاکام لگ بھگ مکمل ہوگیاہے اور اب صرف ڈیڑھ کلو میٹر کے حصہ پر برف رہ گئی ہے اور اس بات کی امید ہے کہ آج دوپہر تک اس حصے سے بھی برف ہٹادی جائے گی ۔پونچھ انتظامیہ کے ایک افسر نے بتایاکہ سڑک کے اسی  حصے میں گاڑیاں پھنسی ہوئی ہیں اور امید ہے کہ انہیں بہت جلد نکال لیاجائے گا۔انہوںنے کہاکہ درماندہ گاڑیوں میں زیادہ تر سیب سے لدے ہوئے ٹرک ہیں ۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ چھ روز قبل روڈ اس وقت بند ہوگئی جب اس پر پیر گلی اور اطراف کے علاقوں میں بھاری برفباری ہوئی ۔ اس دوران سینکڑوں کی تعداد میں گاڑیاں اور مسافر درماندہ ہوکر رہ گئے جنہیں بعد میں فوج اور پولیس کی مدد سے نکال کر محفوظ مقامات پر منتقل کیاگیا تاہم کچھ گاڑیاں ابھی بھی درماندہ ہیں ۔وہیں خطہ پیر پنچال کے لوگوں کاکہناہے کہ برف ہٹانے میں زیادہ وقت لگایاجارہاہے۔انہوںنے کہاکہ چھ دن سے سڑک بند رہنے کے باعث لوگوں کو مشکلات کاسامناہے اور کئی مریضوں کو علاج کیلئے سرینگر جاناتھا جو نہیں جاپائے جبکہ کئی لوگ اسی طرح سے سرینگر میں پھنسے ہوئے ہیں ۔