مغل روڈ پر ٹریفک کا شدید دباؤجام میں تبدیل | ٹرکوں کی آمدورفت کی وجہ سے بفلیاز سے سرنکوٹ نقل و حرکت مشکل

سمت بھارگو
راجوری//سری نگر جموں قومی شاہراہ پر گاڑیوں کی بے قاعدہ نقل و حرکت کے دوران رام بن ضلع کے دائرہ اختیار میں پتھرگرنے کی وجہ سے بدھ کے روز مغل روڈ پر ٹریفک کی نقل و حرکت کا شدید دباؤ دیکھا گیا اور شام 6 بجے 1326 شام تک گاڑیاں سڑک کے اوپر سے گزر گئیں۔کشمیرعظمیٰ کو موصول ہوئی رپورٹ کے مطابق بدھ کے روز مغل روڈ پر گاڑیوں کی آمدورفت میں اضافہ ہوا جس کے ساتھ سڑک پر چلنے والی گاڑیوں کی تعداد میں گزشتہ دنوں کے مقابلے بدھ کے روز تیزی سے اضافہ ہوا ہے۔بدھ کی شام 6 بجے تک مغل روڈ پر 1326 گاڑیوں کی نقل و حرکت ہوئی جن میں تمام نوعیت کی گاڑیاں شامل تھیں جبکہ گاڑیوں کی تعداد میں مزید اضافے کا خدشہ ظاہر کیاجارہا تھا ۔

انہوں نے مزید کہا کہ بدھ کے روز مغل روڈ پر گاڑیوں کی آمدورفت میں اضافہ سری نگر جموں قومی شاہراہ پر ٹریفک کی بے قاعدگی کی وجہ سے ہوا ہے جہاں پتھرگرنے کی وجہ سے ٹریفک نقل و حرکت میں خلل آیا ہے ۔ٹریفک پولیس کا کہنا ہے کہ بدھ کی شام دیر گئے تک گاڑیوں کی تعداد 1500 سے تجاوز کر جائے گی اور یہ تعداد عام دنوں میں گاڑیوں کی آمدورفت سے زیادہ ہو گی۔حکام نے یہ بھی انکشاف کیا کہ مغل روڈ پر پھلوں سے لدے ٹرکوں کی تعداد 400 سے زیادہ ہے جبکہ کئی ٹرک ابھی بھی بفلیاز اور چندی مڑھ کے درمیان پھنسے ہوئے ہیں۔

علاقہ مکینوں نے بتایا کہ مغل روڈ پر ٹریفک کا بہت زیادہ دباؤ ہے اور شدید ٹریفک جام اور بھیڑ دیکھی جا رہی ہے جس کی وجہ بفلیاز اور سرنکوٹ کے ساتھ ساتھ سرنکوٹ سے راجوری براستہ تھنہ منڈی تک سڑک کی خستہ حالی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ مغل روڈ پر گاڑیوں کی آمدورفت بہت زیادہ ہے اور تمام بڑی گاڑیوں کو بفلیاز سے سرنکوٹ روڈ کی طرف موڑ دیا گیا ہے اور اس سڑک کی حالت انتہائی خراب ہے جس کی وجہ سے شدید جام اور بھیڑ کی صورتحال ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ’ہم پولیس اور ٹریفک پولیس کے تمام افسران بشمول ڈپٹی ایس پی ٹریفک اور سرنکوٹ کے اسٹیشن ہاؤس آفیسر کو سڑک پر ٹریفک کوبحال کرنے کی کوشش کرتے ہوئے دیکھ رہے ہیں لیکن ٹرکوں سمیت ٹریفک کے بہت زیادہ بہاؤ کی وجہ سے معاملات ابھی تک ہموار نہیں ہو سکے ہیں۔ڈپٹی ایس پی ٹریفک راجوری پونچھ رینج آفتاب شاہ نے بتایا کہ بفلیاز سے سرنکوٹ تک ٹریفک کے دباؤ کا کچھ مسئلہ ہے اور یہ مسئلہ سڑک کی خستہ حالی کی وجہ سے ہے۔انہوں نے کہا کہ ٹریفک پولیس کی افرادی قوت گاڑیوں کی صفائی کے لئے چوبیس گھنٹے کام کر رہی ہے اور معاملات میں کافی بہتری آئی ہے۔