مشیر خان کا محنت و روزگار محکمہ کے کام کاج کا جائزہ

جموں//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر فاروق خان نے سول سیکرٹریٹ میں لیبر اینڈ ایمپلائمنٹ ڈیپارٹمنٹ کے کام کا ج کا جائیزہ لیا ۔ جموں و کشمیر کے تمام اضلاع سے تعلق رکھنے والے اسسٹنٹ لیبر کمشنروں نے اپنے اپنے اضلاع میں محکمہ کے کام کے بارے میں اپنی رائے اور تاثرات پیش کئے ۔ مشیر خان نے کہا کہ محکمہ کو مزدوروں کو خدمات فراہم کرنے کیلئے ہر ممکن کوشش کرنی چاہئیے ۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی قیمت پر کسی غریب مزدور کو تکلیف نہیں پہنچنی چاہئیے یا اس کے حقوق سے محروم نہیں ہونا چاہئیے ۔ انہوں نے فلاحی خدمات کی شفافیت اور ہموار فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے موبائل نمبر اپ ڈیٹ کرنے ، آدھار سیڈنگ اور ڈائریکٹ بینفٹ ٹرانسفر ( ڈی بی ٹی ) کے سخت نفاذ کی ضرورت پر زور دیا ۔ انہوں نے ریکارڈ میں دوغلے پن کو ختم کرنے کی ضرورت پر بھی روشنی ڈالی ۔ مزدوروں میں مختلف سرکاری اسکیموں کے بارے میں بیداری پیدا کرنے کی ضرورت پر روشنی ڈالتے ہوئے مشیر نے ہدایت دی کہ محکمہ اطلاعات ، تعلیم اور مواصلات ( آئی ای سی ) سرگرمیوں کو مشن موڈ پر منظم کرے ، انہوں نے ہدایت دی کہ سوشل میڈیا ، ٹی وی ، ریڈیو اور دیگر مقامی میڈیا کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کیلئے استعمال کیا جائے ۔ چیئر مین نے مشاہدہ کیا کہ کچھ مزدوروں کی رجسٹریشن میں کچھ دستاویزات نہ ہونے کی وجہ سے تاخیر ہو رہی ہے ۔ اس سلسلے میں انہوں نے ہدایت دی کہ آدھار کارڈ کو شناخت اور تاریخ پیدائش کے اسٹینڈ اسٹون ثبوت کے طور پر قبول کیا جائے اور کہا کہ کسی بھی درخواست دہندہ کو کسی اور غیر ضروری دستاویز کا بہانہ بنا کر خدمات سے محروم نہ کیا جائے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ ریکارڈ کا ایک مرکزی ڈیجٹل ڈیٹا بیس بناتا ہے اور ڈپلیکیٹ اندراجات کو ختم کرتا ہے ۔ انہوں نے تمام رجسٹرڈ ورکرز /مزدوروں کو شناختی کارڈ جاری کرنے کی ضرورت کی نشاندہی کی ۔ مشیر فاروق خان نے ضلعی دفاتر میں کارکردگی کو بہتر بنانے اور کام کے بوجھ کو کم کرنے کے طریقے تجویز کئے اور تمام اے ایل سیز کو مشورہ دیا کہ وہ اس بات کو یقینی بنانے کیلئے ہر ضروری اقدام اٹھائیں کہ مزدوروں کو جائیز فلاحی فوائد حاصل کرنے میں کسی قسم کی مشکل کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔ میٹنگ میں دیگر محکمانہ امور اور 18 ویں بورڈ میٹنگ کے فیصلوں پر کئے گئے اقدامات پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا ۔