مشکلات درپیش مگر مؤقف پر قائم: محبوبہ

سرینگر//ریاست کے مشکل ترین حالات سے گزرنے کا اعتراف کرتے ہوئے ریاستی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے ’’اشیاء و خدمات‘‘ ٹیکس کے اطلاق کو مخلوط سرکاری کی بڑی کار کردگی قرار دیا۔انہوں نے واضح کیا کہ18برس قبل جس موقف کیلئے پارٹی کی بنیاد پڑی،پی ڈی پی آج بھی اس موقف پر قائم ہے۔  وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے سرکاری رہائش گاہ فیئر ویو میں پی ڈی پی کے قانون سازیہ ممبران، ضلع اور زونل صدر کی میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پی ڈی پی کی بنیاد آج سے18برس قبل جن اصولوں پر پڑی تھی،آج بھی وہ ان اصولوں کے تابع ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر کچھ لوگ پی ڈی پی پر یہ الزامات عائد کرتے ہیں کہ انہوں نے اپنے موقف اور اصولوں سے سمجھوتہ کیا،تو ایک دن وہ یہ بات سمجھ لیں گے کہ انکی سوچ غلط تھی،کیونکہ پی ڈی پی آج بھی اپنے بنیادی مقصد اور سیاسی موقف پر ڈٹی ہوئی ہے۔ذرائع کے مطابق میٹنگ صبح9بجکر30منٹ پر شروع ہوئی اور ساڑھے3گھنٹوں تک جاری رہی ،جس  دوران وزیر اعلیٰ نے کہا کہ جی ایس ٹی کا نفاذ ایک کامیابی ہے۔ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعلیٰ نے جموں کشمیر میں جی ایس ٹی کے اطلاق کو مخلوط سرکار کی ایک بڑی کامیابی قرار دیتے ہوئے کہا تمام طبقوں نے جی ایس ٹی کے اطلاق پر اتفاق کیا۔انہوں نے کہا’’اشیاء و خدمات ٹیکس پر کچھ طبقوںکے خدشات کو دور کیا گیا اور صدارتی حکم نامے میں ریاست کی خصوصی حیثیت کو برقرار رکھنے کی یقین دہانی کی گئی۔امرناتھ یاتریوں پر حملے کا ذکر کرتے ہوئے محبوبہ مفتی نے کہا کہ ریاستی عوام نے بلا امتیاز نظریات ایک آواز میں اس کی مخالفت کی،اور اس عمل کو کشمیری اقدار اور ثقافت کے منافی قرار دیا۔انہوں نے کہا کہ لوگوں کے اس عمل سے نہ صرف شرپسندوں کے منصوبے ناکام ہوئے بلکہ انہیں کرارا جواب بھی مل گیا۔ذرائع کے مطابق اس موقعہ پر میٹنگ میں ریاست کی تازہ ترین صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ذرائع نے بتایا کہ میٹنگ میں اس بات پر بھی اتفاق ہوا کہ سرکار کو کئی محاذوں پر چلینجوں کا سامنا کرنا پڑا تاہم عوام کے تعاون سے ہر ایک چلینج کامقابلہ کیا گیا۔پی ڈی پی کے قانون سازیہ ممبر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ میٹنگ میں پارٹی کے یوم تاسیس28جولائی کے بدلے30جولائی کو منانے پر بھی اتفاق کیا گیا۔