مسئلہ کشمیر کاحل مذاکرات میں ہی موجود:سوز

سرینگر//سینئر کانگریس لیڈر اور سابق مرکزی وزیر پروفیسر سیف الدین سوز نے ریاستی گورنر ستیہ پال ملک کو مشورہ دیا ہے کہ وہ مشترکہ مزاحمتی قیادت بشمول سید علی گیلانی ،میرواعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک کے ساتھ بات چیت کا آغاز کریں ۔اپنے بیان میں سوز نے کہاکہ چونکہ ریاستی گورنر میری طرح یہ راے قائم کر چکے ہیں کہ طاقت کے استعمال سے کشمیر کا مسئلہ حل نہیں ہو سکتا، اس لیے انہیں اسی بات پر لوٹ آنا چاہیے جو انہوں نے عہدہ سنھبالنے کے وقت کہی تھی۔ انہوں نے کہا تھا کہ وہ کشمیر کے لوگوں کے ساتھ بات چیت کا دروازہ کھولیں گے۔میں ان کو یقین دلانا چاہتا ہوں کہ کشمیر کے لوگ خوب سمجھتے ہیں کہ کشمیر کے مسلے کا حل کیسے ممکن ہوسکتا ہے۔اس لیے گورنرموصوف کو خود پہل کرنی چاہیے کہ وہ بات چیت کا راستہ کھولیں۔ سوز نے کہاکہ میری راے یہ ہے کی گورنرستیہ پال ملک کو براہ راست جموں و کشمیر حریت کانفرنس کے نمایندہ گروپ (JRL) (یعنی سہ نفری قیادت) کے ساتھ ڈائیلاگ شروع کرنا چاہیے۔ یہی قابل عمل حل ڈھونڈنے کا راستہ ہے۔ اس طرح  گورنر موصوف ملک کے لیے ایک بڑا کام انجام دیں گے!۔‘‘