مزید خبریں

لڑکیوں کی تعلیم پر ڈگری کالج پر منڈل کا نکڑ ناٹک 

 جموں//جی ڈی سی پرمنڈل کے ڈوگری ڈرامیٹک کلب پرمنڈلی نے پرمنڈل بس اسٹینڈ پر ’چنگی مت‘ پر نکڑ ناٹک پیش کیا۔اس موقع پر کالج کے طلباء نے علاقے کے مقامی لوگوں میں خاص طور پر تعلیم کی اہمیت کے بارے میں بیداری پھیلانے کے لیے نکڑ ناٹک پیش کیا۔وہیں لڑکیوں کی تعلیم ’چنگی مت‘ کے ذریعے ایک واضح پیغام تھاکہ جب ایک لڑکی تعلیم یافتہ ہوتی ہے تو پورا معاشرہ تعلیم یافتہ ہوتا ہے۔اس دوران معاشرے کے تمام طبقات کی طرف سے زبردست ردعمل ملا۔ اس ڈرامے میں لڑکیوں کی اعلیٰ تعلیم کے بارے میں شکوک و شبہات اور غلط فہمیوں کو دور کرنے کی کوشش کی گئی جہاںپیغام یہ تھا کہ ہر لڑکی کو اپنی انفرادیت پروان چڑھانے کا حق ہے۔ تاہم ڈرامے میں اس بات پر زور دیا گیا کہ والدین کو بلا جھجک اپنی بیٹیوں کے کالج میں داخلے کے لیے آگے آنا چاہیے ۔ ایک اور مسئلہ جو اس ڈرامے میں اٹھایا گیا وہ صنفی عدم مساوات کے بارے میں تھا اور معاشرے کی فلاح کے لیے لڑکیوں کے ساتھ لڑکوں کے برابر سلوک کیسے کیا جائے۔اس پروگرام میں تماشائیوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی اور وہ پرمنڈلی ڈرامیٹک کلب کی کارکردگی سے خوش ہوئے ۔
 

پینتھرس کا 40ویں یوم تاسیس 

آرگنائزنگ کمیٹی کا اجلاس 5 مارچ کو 

 جموں//جموں و کشمیر نیشنل پینتھرس پارٹی کی 40ویں یوم تاسیس کی آرگنائزنگ کمیٹی کا اجلاس 5 مارچ 2022 کو گاندھی نگر، جموں توی میں منعقد ہوگا۔پروفیسر بھیم سنگھ نے آرگنائزنگ کمیٹی کے تمام ممبران سے درخواست کی کہ وہ پینتھرس ہیڈ کوارٹر، گاندھی نگر، جموں توی میں دوپہر 2 بجے میٹنگ میں شرکت کریں۔ 40ویں یوم تاسیس کی تقریبات 23 مارچ 2022 کو صبح 11.30 بجے ڈوگرہ ہال جموں میں منعقد کی جائیں گی۔پینتھرس ورکنگ کمیٹی کے تمام موجودہ ممبران پر مشتمل ایک ایکشن کمیٹی بھی تشکیل دی گئی ہے۔ کشمیر کے صوبہ والداخ سے آرگنائزنگ کمیٹی کے ممبران آن لائن شامل ہو سکتے ہیں اگر وہ موسم کی وجہ سے جموں نہیں پہنچ پاتے ہیں۔پروفیسر بھیم سنگھ نے ورکنگ کمیٹی کے سینئر ممبران اور آرگنائزنگ کمیٹی کے ممبران سے بات چیت کی اور امید ظاہر کی کہ 40 واں یوم تاسیس جموں و کشمیر میں ایک تاریخی واقعہ ہو گا۔ پینتھرس پارٹی نے واضح کیا کہ وہ جموں و کشمیر اور لداخ میں جلد انتخابات کرائے جائیں، تاکہ جموں و کشمیر میں بھی جمہوریت بحال ہو سکے۔
 

؎ وی ڈی سیز کا احیاء نارملسی بحالی دعوئوں کے متصادم:تاریگامی

جموں//مرکز اور جموں و کشمیر انتظامیہ کے ولیج ڈیفنس کمیٹیوں (VDCs) کو بحال کرنے کے مبینہ منصوبوں کو تشویشناک قرار دیتے ہوئے سی پی آئی ایم رہنما محمد یوسف تاریگامی نے کہا کہ یہ اقدام نتیجہ خیز ثابت ہونے کا پابند ہے۔ان کمیٹیوں کو ماضی قریب میں جموں و کشمیر میں سنگین بدسلوکی کے الزامات کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ اطلاعات کے مطابق جموں و کشمیر پولیس نے وی ڈی سی کے ارکان کے خلاف عصمت دری اور قتل وغیرہ کے تقریباً 200 مقدمات درج کیے ہیں۔ انسانی حقوق کی بے تحاشا خلاف ورزیوں میں ان کے ملوث ہونے سے ان کا کردار سایہ دار ہے۔ایسے وقت میں جب جموں و کشمیر اور خاص طور پر کشمیر، سول سوسائٹی اور میڈیا سمیت غیرمعمولی پابندیوں کے تحت ہے، یہ اقدام کمیونٹیز کے درمیان ایک پچر پیدا کرنے کا پابند ہے اور خطے میں معمول کے بلند دعووں سے متصادم ہے۔
 
 

عدالتی احاطہ میںنوجوان وکلاء کا ٹریفک پولیس کے خلاف احتجاج

جموں//نوجوان وکلا ء نے جانی پور کورٹ کے احاطے میں ٹریفک پولیس کے وکلاء کے ساتھ مبینہ بدسلوکی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔احتجاج کرنے والے وکلاء نے اس ناروا سلوک کی مذمت کی اور واقعہ کے ذمہ دار ٹریفک پولیس اہلکاروں کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا۔انہوںنے کہا"ہم نے ٹریفک پولیس اہلکاروں کے خلاف ان کے رویے کے لیے باقاعدہ شکایت بھی درج کرائی ہے جو قابل برداشت نہیں۔ متاثرہ وکیل ایک کیس کی نمائندگی کرنے جا رہا تھا جب اسے روکا گیا اور ٹریفک پولیس والوں نے بدتمیزی کی۔"ان کا کہنا تھا کہ اس طرح کے دو واقعات ماضی میں بھی پیش آچکے ہیں اور بعض کیسوں میں وکلاء کو مبینہ طور پر ہراساں کرنے کے لیے تھانوں میں بلایا گیا۔
 
 

ٹرانسپورٹروںنے ٹینڈر شرائط میں کمی کا مطالبہ کر دیا 

جموں// آل انڈیا ٹورسٹ ٹرانسپورٹرز نے حکومت سے اپیل کی ہے کہ وہ گاڑیاں کرایہ پر لینے کے لیے محکموں میں حکومت کی طرف سے مانگی جا رہی ٹینڈر شرائط کو کم کرے۔پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ٹرانسپورٹرز کا کہنا تھا کہ وہ ٹینڈرز جمع کرانے کے لیے رکھی گئی فارملیٹیز پوری نہیں کر سکیں گے جو کہ مشکل ترین ہیں۔انہوں نے کہا، "جموں کی ٹرانسپورٹ فرموں کے لیے ٹینڈر شرائط کو پورا کرنا مشکل ہے اور اس لیے، کووڈ 19 کے بعد پچھلے تین سالوں میں ٹرانسپورٹ کے کاروبار کی حالت کو مدنظر رکھتے ہوئے حکومت کو ان میں نرمی کرنی چاہیے۔"ان کا کہنا تھا کہ حکومت عموماً ٹرکوں، بسوں، منی بسوں، اور مسافر گاڑیوں اور لوڈ کیرئیر جیسی گاڑیوں کو مختلف مقاصد کے لیے کرایہ پر لیتی ہے
 

گپتا نے مشن یوتھ کو دھوکہ قرار دیا

؎ نوجوان کش پالیسیوں کیلئے انتظامیہ کو ہدف تنقید بنایا

 جموں//نیشنل کانفرنس کے صوبائی صدررتن لال گپتا نے لیفٹیننٹ گورنر انتظامیہ پر جموں و کشمیر کے نوجوانوں کو ملازمتوں کے مواقع کو محدود کرکے دیوار کی طرف دھکیلنے پر تنقید کی۔ضلع سانبہ میں ضلع صدر سانبہ سداگر چند گپتا، بلاک وجئے پور، بلاک رام گڑھ اور بلاک بریبرمنا کی قیادت میں سرحدی باشندوں کے ایک وفد سے بات کرتے ہوئے کہی۔ رتن لال گپتا نے 31 اکتوبر 2019 سے پہلے شائع ہونے والے اشتہارات کو منسوخ کرنے اور پولیس تنظیم میں بھرتی کے عمل کو دوبارہ شروع کرنے کے حکم کو واپس لینے کا مطالبہ کیا جو سرحدی پٹی میں آخری نقل و حرکت پر منسوخ کر دیے گئے تھے۔گپتا نے کہا کہ ان سخت اقدامات کا کوئی جواز نہیں ہے، خاص طور پر چونکہ نوجوانوں نے ابتدائی اسکریننگ کے بعد انتخابی عمل کا سامنا کرنے کے لیے خود کو تیار کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ دانشمندی کا تقاضا ہے کہ ماضی قریب میں جاری کیے گئے نوجوانوں کے خلاف احکامات کو واپس لے کر متاثرہ امیدواروں کے مطالبات کو پورا کیا جائے۔ انہوں نے پولیس اور دیگر نیم فوجی دستوں میں سرحدی نوجوانوں کے لیے خصوصی بھرتی مہم شروع کرنے کا مطالبہ کیا۔صوبائی صدرنے مشن یوتھ کو دھوکہ قرار دیا اور کہا کہ اس طرح کی افواہوں کی آڑ میں ہنر مند اور غیر ہنر مند افرادی قوت کے علاوہ تعلیم یافتہ بے روزگاروں کو بھی گمراہ کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے تقریباً 60,000 آسامیوں کو پْر کرنے کے لیے ایک واضح روڈ میپ طلب کیا جو انتظامیہ کے قابل رحم رویہ کی وجہ سے حالیہ برسوں کے دوران جمع ہوئی ہیں۔گپتا نے دیہی علاقوں میں پرائمری ہیلتھ مراکز اور ذیلی مراکز میں ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکل اسٹاف کی تمام خالی اسامیوں کو بھی بھرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے بیمار لوگوں کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے دیہی صحت کے بنیادی ڈھانچے کو مضبوط بنانے اور معمولی بیماریوں کی صورت میں بھی ریفر کرنے کے رجحان کو تبدیل کرنے پر زور دیا۔صوبائی صدر نے کیڈر پر زور دیا کہ وہ جموں و کشمیر کو درپیش چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار ہو جائیں اور عوام کی خدمت کے مقصد کو موثر انداز میں حاصل کرنے کے لیے پارٹی کو نچلی سطح پر مضبوط کریں۔
 
 

توی ریور فرنٹ ڈیولپمنٹ پروجیکٹ

جموں سمارٹ سٹی پروجیکٹ کے سی ای او نے پیشرفت کا جائزہ لیا

جموں//جموں سمارٹ سٹی لمیٹڈ (جے ایس سی ایل)کے چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او)، اونی لواسا نے جمعرات کو توی ریور فرنٹ ڈولپمنٹ پروجیکٹ کی پیشرفت کا جائزہ لینے کے لیے تعمیراتی سائٹ کا دورہ کیا۔اسی دوران اُن کے ساتھ ایڈیشنل سی ای او، جے ایس سی ایل، ہتیش گپتا، پروجیکٹ ڈائریکٹرجے ایس سی ایل سنیل تھسو، جنرل منیجرجے ایس سی ایل ہرویندر سنگھ، اور پراجیکٹ مینجمنٹ کنسلٹنسی (پی ایم سی) کے افسران سی ای او، جے ایس سی ایل بھی موجود تھے۔ڈیولپمنٹ پروجیکٹ کی حالت کے بارے میں پہلے ہاتھ سے معلومات لینے کے بعداونی لواسہ نے عہدیداروں اور پروجیکٹ کو انجام دینے والی ایجنسیوں کو ہدایت دی کہ وہ اس مہتواکانکشی پروجیکٹ کو ایک مقررہ مدت میں مکمل کرنے کے لیے کام کی رفتار کو تیز کریں۔انہوں نے مزید کہا کہ اس منصوبے کی تکمیل سے مندروں کے شہر کی جمالیاتی قدر میں اضافہ ہوگا اور ساتھ ہی شہریوں کو کاروبار کے مواقع بھی فراہم ہوں گے۔مہتواکانکشی پروجیکٹ گجرات میں سابرمتی ریور فرنٹ کی طرز پر تیار کیا جا رہا ہے تاکہ قدرتی صاف کرنے کی صلاحیتوں کو بڑھایا جا سکے، ساتھ ہی ماحولیاتی اور شہری بنیادی ڈھانچے کی پائیداری کو مضبوط کیا جا سکے۔اس منصوبے کا سنگ بنیاد جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے رکھا۔منصوبے کے تحت 3.5 کلومیٹر (دونوں طرف) طویل ریور فرنٹ کو 2 مرحلوں میں مکمل کرنے کی تجویز ہے۔ پہلا مرحلہ چوتھے پل سے توی پل تک اور فیز 2 توی پل سے گجر نگر پل تک شروع ہوتا ہے۔ دریا کے دونوں کناروں (کناروں) پر راستے بنائے جائیں گے تاکہ عوام کو آسانی سے رسائی مل سکے۔اس پروجیکٹ میں دریائے توی کے تحفظ کا بھی تصور کیا گیا ہے جس میں ڈایافرام کی دیواروں کی تعمیر، نچلے چہل قدمی، برقرار رکھنے والی دیوار، پشتے کی تعمیر کی وسیع نمایاں خصوصیات ہیں۔
 
  

جنگلی حیات کے عالمی دن پر جموں و کشمیر میں مختلف سرگرمیوں کا اہتمام 

جموں//محکمہ وائلڈ لائف نے جمعرات کو ایک سلسلہ وار تربیتی پروگرام منعقد کر کے جنگلی حیات کا عالمی دن منایا۔وائلڈ لائف کمپلیکس منڈا میں دن بھر کے پروگرام کا افتتاح کرتے ہوئے، ڈاکٹر نیلو گیرا، چیئرپرسن، آلودگی کنٹرول کمیٹی، جموں و کشمیر نے اس دن کی اہمیت پر روشنی ڈالی جو ہر سال جنگلی جانوروں اور نباتات کی خطرے سے دوچار نسلوں میں بین الاقوامی تجارت پر کنونشن پر دستخط کرنے کے لیے منائے جاتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے 20 دسمبر 2013 کو اپنے 68ویں اجلاس میں 3 مارچ کو جنگلی حیات کے عالمی دن کے طور پر منانے کا فیصلہ کیا۔چیف وائلڈ لائف وارڈن جے اینڈ کے سریش کمار گپتا نے جنگلی حیات کے تحفظ اور تحفظ اور ماحولیاتی نظام کی بحالی کے لیے محکمہ جنگلی حیات کے تحفظ کی طرف سے اٹھائے گئے مختلف اقدامات کے بارے میں بریف کیا۔ انہوں نے نوجوانوں پر زور دیا کہ وہ جنگلی حیات کے تحفظ اور تحفظ کے بارے میں بیداری پھیلانے میں محکمہ کی مدد کریں۔جسروٹا وائلڈ لائف سینکچری میں، انسٹی ٹیوٹ آف ماؤنٹین انوائرمنٹ، جموں یونیورسٹی کے اشتراک سے ایک روزہ صلاحیت سازی ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا۔عالمی یوم جنگلی حیات کے موقع پر ڈگری کالج کٹھوعہ کے طلباء ، ایکو گائیڈ ٹرینی، مقامی پی آر آئی ممبران اور محکمہ کے عملے نے ورکشاپ میں حصہ لیا۔