مزید خبریں

مشیر فاروق خان کا ڈاکٹر ارون گپتا کے اِنتقال پر اِظہارِ تعزیت 

جموں//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر فاروق خان نے ڈاکٹر ارون کے گپتا کے اِنتقال پر گہرے دُکھ کا اِظہار کیا ، جوماڈل اِنسٹی چیوٹ آف ایجوکیشن اینڈ ریسرچ (ایم آئی ای آر ) کے بورڈ آف ڈائریکٹرس کے چیئرپرسن تھے۔اَپنے تعزیتی پیغام میں مشیر فاروق خان نے کہا کہ وہ گزشتہ پچاس برسوں سے بطورماہر معلم، محقق اور ٹریننگ خدمات بڑی خوش اسلوبی سے انجام دے رہے تھے۔اَپنے پیغام میں مشیر موصوف نے مرحوم کی روح کے اَبدی سکون کے لئے دعا کی اور سوگوار کنبے کے ساتھ ہمدردی کایکجہتی کا اظہار کیا ہے۔یہاں یہ بات قابلِ ذکر ہے کہ آنجہانی ارون کے گپتا کو دو مرتبہ نیشنل کونسل آف ایجوکیشنل ریسرچ اینڈ ٹریننگ( این سی ای آر ٹی) دہلی نے ’’قومی ایوارڈ‘‘کے لئے منتخب کیا تھا۔ وہ شمالی ہند اور انٹرنیشنل ایسوسی ایشن برائے ایجوکیٹرس برائے ورلڈ پیس کے جموں و کشمیر سٹیٹ کے چانسلر بھی رہے۔ وہ یونائٹیڈ رائٹرس ایسوسی ایشن آف انڈیا کے فیلو اور امریکی حکومت کے بین الاقوامی وِزٹرشپ پروگرام کے سابق طالب علم  بھی رہے ہیں۔
 
 
 

بس اسٹینڈ گواڑی و سپورٹس اسٹیڈیم چنگا کی تعمیر سست روی کا شکار 

ایل جی و صوبائی کمشنر کی احکامات پر عملدرآمد نہیں ،پنچایتی نمائندگان برہم

 اشتیاق ملک
ڈوڈہ //بلاک کونسل چیرمین چنگا و پنچائتی نمائندگان نے بس اسٹینڈ گواڑی و سپورٹس اسٹیڈیم چنگا کی تعمیر میں انتظامیہ پر سست روی برتنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ اعلیٰ حکام کی بار بار ہدائت کے باوجود مقامی انتظامیہ نے غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کیا۔بلاک ترقیاتی کونسل چیرمین محمد عباس راتھر نے پنچائتی نمائندگان کی موجودگی میں میڈیا کو تفصیل دیتے ہوئے کہا کہ سال 2018 میں بس اسٹینڈ و سپورٹس اسٹیڈیم کی تعمیر کے لئے ڈائریکٹر یوتھ سروسز و سپورٹس جموں نے 20 و ا یگزیکٹیوانجینئرتعمیرات عامہ گندوہ نے 44 کنال اراضی کی نشاندہی کی تھی اور اعلی حکام نے محکمہ مال کو نیلی، ہلوڑ، ڈوڈواڑ ،شکھلہ و چنگا توائی میں زمین حد بندی کرنے کی ہدایت دی تھی تاہم مقامی انتظامیہ نے جان بوجھ کر معاملہ کو ٹال مٹول کر دیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ صوبائی کمشنر جموں نے مارچ 2019 میں و ایل جی انتظامیہ نے نومبر 2019 میں ایس ڈی ایم گندوہ کو اراضی کی حد بندی مکمل کرنے کی ہدایات دی ہیں لیکن ڈیڑھ سال کا عرصہ بیت جانے کے بعد بھی متعلقہ محکمہ حرکت میں نہیں آیا۔انہوں نے ڈپٹی کمشنر سے معاملہ کی تحقیقات کرکے قصوروار محکمہ کے خلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔
 
 
 

جموں ، میرپور میں کرشن دیو سیٹھی کا چہارم منایاگیا

جموں//پیر کی شام کو کرشن دیو سیٹھی کا چوتھا دن جموں کے ساتھ ساتھ پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کے میرپور میں بھی منایا گیا۔اس موقع پر ، جموں و کشمیر اور ملک کے دیگر حصوں سے آئے ہوئے کمیونسٹوں کی ایک بڑی تعداد ، سیاست دانوں ، ایڈیٹرز ، ممتاز شہریوں اور ادیبوں نے ایک تعزیتی میٹنگ یعنی اٹھالا کے دوران ان کے انتقال کے چوتھے روز کرشن دیو سیٹھی کو یاد کیا۔93 سالہ سیٹھی نے 29 جنوری 2020 کو جموں کے پرانے شہر میں دلپتیاں محلہ میں واقع اپنی رہائش گاہ پر طویل علالت کے بعد آخری سانس لی تھی۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے بی جے پی کے ترجمان اعلیٰ سنیل سیٹھی نے یاد کیا کہ کیسے مرحوم کامریڈ نے بہت ہی چھوٹی عمر میں اپنا سیاسی سفر شروع کیا اور اپنے نظریے پر سمجھوتہ کیے بغیر نظرانداز کرنے والے طبقے کے لئے کام کیا۔سیٹھی نے بتایا کہ بڑی تعداد میں لوگوں نے سیٹھی صاحب کی یاد میں پاکستان کے زیر انتظام کشمیر میں کے ڈی سیٹھی کی جائے پیدائش میرپور میں بھی ایک تعزیتی اجلاس کا اہتمام کیا ہے۔ اسی طرح ، بہت سارے لوگوں نے اس موقع پر خطاب کیا اور مقبول کمیونسٹ رہنما کو یاد کیا۔آخرپر کرشن دیو سیٹھی کے بیٹے  سیکریٹری محکمہ قانون ، حکومت جموں و کشمیر انچل سیٹھی نے غمزدہ کنبہ کے افراد سے تعزیت کرنے پر سب کا شکریہ ادا کیا۔
 
 

 جموں میں ترمیم شدہ سائیلنسروںکیخلاف ٹریفک پولیس کی مہم

 جموں// اے ڈی جی پی ٹریفک ایس ٹی نمگیال اور ایس ایس پی ٹریفک ش شیو کمار شرما کی ہدایت پرجنوبی شہر میں ٹریفک سٹی جموں کی جانب سے خصوصی مہم چلائی گئی۔ اس مہم کی قیادت ڈی ایس پی ٹریفک ساؤتھ ایس پردیپ سنگھ کررہے ہیں ۔مجموعی طور پر 100 چالان کئے گئے جبکہ بولٹس کے 20ترمیم شدہ سائیلنسرس بھی ضبط کئے گئے۔ عوام سے یہ بھی درخواست کی گئی کہ وہ موٹرسائیکلوں خصوصاً بولٹس کے سائلنسرس میں ترمیم کرنے سے گریز کریں کیونکہ وہ سوسائٹی میں پریشانی کا باعث ہیں اور خاص طور پر سینئر شہریوں ، حاملہ خواتین اور بچوں کو بھی صحت کے بہت سے خطرات لاحق ہیں۔لوگ ٹریفک رولز اور ہیلمٹ / سیٹ بیلٹ پہننے کے فوائد کے بارے میں بھی آگاہ کئے گئے۔
 
 
 

راجوری میں کچا مکان خاکستر

سمت بھارگو
راجوری//راجوری کے علاقے ڈنہ گورسیہ میں پراسرار طور پر آگ لگنے کے واقعے میں کچا مکان جل کر خاکستر ہوگیا۔پولیس نے بتایا کہ پیر کی دوپہر کے وقت محمد اکرم ولد علیف دین ساکن ڈنہ گورسیا کے کچے مکان میں آگ بھڑک اٹھی اور اس واقعے میں پورا مکان خاکستر ہوگیا۔مقبول حسین ، فائر اسٹیشن افسر راجوری نے کہا۔"ہم نے فائر فائٹنگ آپریشن شروع کیا اور دو فائر ٹینڈر موقع پر پہنچ گئے لیکن گھر کو اس واقعے میں بڑا نقصان پہنچا" ۔انہوں نے مزید کہا کہ آگ کے شعلوں کو علاقے کے دیگر ڈھانچے تک پھیلنے سے روکا گیا ہے۔
 
 
 

مینڈھر کے جنگلات آگ کی لپیٹ میں

جاوید اقبال          
مینڈھر//مینڈھر کے سرحدی علاقہ کے جنگلات آگ کی لپیٹ میں ہیں ۔سوموار بعد دوپہر اچانک آگ لگ گئی جو آگ آہستہ آہستہ کئی کلومیٹر علاقہ میں پھیل گئی ہے۔ آگ کی وجہ سے جنگلات میں کئی سرسبز درخت آگ کی لپیٹ میں ہیں اور کئی جنگلی جانوروں کے مرنے کی بھی اطلاع ہے۔ آگ کے شعلے دور دور تک نظر آرہے تھے جبکہ آگ آہستہ آہستہ مزید جنگلا ت کو بھی اپنی لپیٹ میں لی رہی ہے۔ علاقہ کے لوگوں کا کہنا ہے کہ متعلقہ محکمہ سے تعلق رکھنے والے کوئی بھی ملازمین علاقہ کے اندر نظر نہیں آیا۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر محکمہ کے ملازمین موقعہ پر ہوتے تو لوگوں کی مدد سے آگ پر قابو پایا جاسکتا تھا اب آگ بڑے لمبے ایریا تک پھیل گئی ہے۔ 
 
 

دینی مدارس کھولنے سے متعلق ہدایات جاری

جموں//رابطہ مدارس اسلامیہ عربیہ کی مجلس عاملہ کا اجلاس صدر رابطہ مولانا محمد رحمت اللہ قاسمی کی زیرصدارت جموں میں منعقد ہوا۔جس میں ضلعی ذمہ داران کے علاوہ معاون ناظم عمومی مولانا مفتی محمد عنایت اللہ نے شرکت کی جس میں نئی حکومتی ہدایات کے مطابق تمام ذمہ داران مدارس کو ہدایت دی گئی کہ وہ اپنے اپنے اداروں میں صفائی و ستھرائی کا اہتمام کریں اور احتیاطی تدابیر مثلا"ماسکوں کی فراہمی ،سنیٹایزروں کا انتظام ،وضو خانوں اور نلوں پر ہر وقت صابن جیسی چیزوں کے میسر رکھنے کو یقینی بنائیں اورطلباء کی تعداد کے بارے میں ہدایات کو ملحوظ رکھیں۔انہیں مزید کہاگیا کہ وہ فوری طور پر داخلہ اوردرجات کے کاغذات کو مکمل کرنے کا عمل مدارس کے متعلقہ دفتروں میں جاری کردیا جائے اورانتظامات صحیح کرنے کے بعد ہی سرکار کی جانب سے بتائی گئی تاریخوں پر طلبہ کو بلائیں۔ تمام اضلاع کے ذمہ داران کو ہدایات دی گئی ہے کہ وہ ضلع میں موجود ہر مدرسے میں ان چیزوں کی پابندی کا بذات خود ملاحظہ کرنے کے لئے فوری طور پر وفد روانہ کریں۔
 
 

گول میںنوجوان کی نعش لٹکی ہوئی ملی 

 زاہد بشیر
گول// علاقہ ڈھیڈہ کے جنوری محلہ میں اُس وقت سنسنی پھیل گئی جب ایک نوجوان کی نعش گھر سے لٹکی ہوئی پائی گئی ۔ بتایا جایا ہے کہ محمداقبال مغل ولد محمد عبداللہ مغل ، عمر 30سال کی نعش اُس کے گھر میں پائی گئی ۔ یہ خبر پھیلتے ہی علاقے میں خوف و دہشت کا ماحول پیدا ہوا ۔ اس کی خبر فوری طو ر پر پولیس پوسٹ اندھ کو دی جنہوں نے موقعہ پر آ کر کیس درج کر کے مزید تحقیق کر دی ۔ تا ہم ابھی تک یہ معلوم نہ ہو سکا کہ یہ واقعہ خودکشی ہے یا کچھ اور پولیس تحقیق میں لگی ہوئی ہے ۔
 
 

وی ڈی سی ممبر نے باپ کوگولی مارکرکیازخمی

جموں//ضلع کٹھوعہ میں سوموارکی صبح دیہی دفاعی کمیٹی کے ایک ممبر نے مبینہ طور اپنے ہی باپ کو گولی مار دی۔ وی ڈی سی ممبر بالکر سنگھ نے اپنی303بندوق سے اْس وقت اپنے باپ،کرشن سنگھ پرگولی چلائی جب دونوں کے مابین کسی بات کو لیکر جھگڑا ہوا۔یہ واقعہ ضلع کے ہیرا نگر علاقے کے داسانو گاوں میں پیش آیا۔ اس واقعہ میں78سالہ کرشن شدید زخمی ہوگیا جسے علاج و معالجہ کیلئے گورنمنٹ میڈیکل کالج جموں منتقل کیا گیا۔ واقعہ پیش آتے ہیں گاوں والوں نے بالکر سنگھ سے ہتھیار چھین کر اْسے پولیس کے حوالے کردیا۔
 
 

عقائد کی درستگی، خدمت خلق، معاشرتی تطہیر اور دعوت دین ترجیحات میں شا مل |  جموں دعوتی کانفرنس سے صدر جمعیت اور مقتدر علما ء کے خطابات

جموں// اُمت سنجیدگی سے اپنے ادبار و ذلت کی وجوہات جاننے کے لئے سر جوڑ کر بیٹھ جائے تو یہ حقیقت عیاں ہوکر سامنے آ جائے گی کہ من جملہ دیگر وجوہات کے اہم ترین وجہ اس پستی و پسماندگی کی امر معروف اور نہی عن المنکر، کے فریضہ سے بہت حد تک اس کا تساہل اور غفلت ہے ملت نے دوسرے جھمیلوں میں پڑ کر اپنے فرائض منصبی اور ذمہ دار یوں کو نظر انداز کیا اور آج ادبار و افسردگی کی گنگھور گٹھاؤں کی زد میں ہے۔ ان باتوں کا اظہار جمعیت اہلحدیث جموں و کشمیر کے صدر پروفیسر غلام محمد بٹ المدنی نے جکتی ٹانڈہ جموں میں جمعیت کے اہتمام سے منعقدہ بھاری دعوتی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ یہ امت ساری انسانیت کو جوڑنے کے لئے آئی تھی لیکن آج خود ایک دوسرے کے ساتھ دست بگریباں ہے انتشار و افتراق کی زد میں ہے مختلف رسومات و بدعات و خرافات نے اس کی مالی اور اخلاقی چولیں ہلا کے رکھ دی ہیں اس تیرہ و تار فضا میں بھی ہم مایوس نہیں کیوں کہ سنجیدہ صفت لوگوں کو جہاں مرض و درد کا ادراک ہے وہاں وہ قرآن و سنت کے دوائے اکسیر سے اس کے علاج کے لئے بھی کمر بستہ ہیں موصوف نے کہا کہ یہی کام جمعیت اہلحدیث جموں و کشمیر اپنے وجود کے روز اوراول سے کر رہی ہے اور یہ اجتماعات و تعلیم و تعلم و تدریس و تبلیغ اور رفاہی امور کا دور دور اس سلسلے کی کڑیاں ہیں۔انہوں نے کا نفرنس میں بھاری پیمانے پر جموی مسلمانوں کی شرکت پر مسرت کا اظہار کیا۔ کانفرنس سے خطاب کے دوران تنظیم کے نائب صدر ڈاکٹر عبداللطیف الکندی نے کہا کہ دشت و بن کوہ و دمن اور شہرو دیہات میں جمعیت عقائد و اعمال کی درستگی اور انسانیت کی صلاح و فلاح کے لیے سر گرم عمل ہے انہوں نے کہا آج دنیا جن گمبھیر مسائل کی شکار ہے اس نے حساس لوگوں کی نیندیں اڑا کے رکھ دی ہیں عدل مفقود، انصاف معدوم، رحم و شفقت عنقا، انتشار و افتراق کا دور دورہ، بد عنوانی کنبہ پروری کرپشن عروج پر اور ہمچو قسم کے دیگر مفسدات نے انسان معاشروں کو ہلا کر عدم توازن کا شکار بنا دیا ہے قلب و نظر اور دست و بازو کے اس فساد نے ہیجانی کیفیت طاری کردی ہے اور اس کی اصلاح عقیدہ توحید کو دلوں میں راسخ کرنے سے ہی ممکن ہے کیونکہ یہی عقیدہ آخرت کی بازپرس اور جزا و سزا کا احساس پیدا کردیتا ہے۔
 
 
 
 
 
 
 
 
 

اپنی پارٹی کا مہاجر پنڈتوں کی ماہانہ نقد امداد میں اضافہ کا مطالبہ | حکومت سے سیاسی ریزرویشن اور فی کنبہ ایک نوکری دینے کی گذارش 

جموں //اپنی پارٹی نے کشمیر سے نقل مکانی کرنے والے درماندہ طبقہ کو دی جانے والی ماہانہ امداد میں بڑھوتری کا مطالبہ کیا ہے۔ یہ مانگ اودھے والا جموں میں کشمیری درماندہ طبقہ کے لیڈران اور ورکروں کے ساتھ منعقدہ ایک میٹنگ میں اُجاگر کی گئی۔ اس میٹنگ میں سابقہ وزیر اور اپنی پارٹی نائب صدر عثمان مجید، سابقہ ایم ایل سی اور جنرل سیکریٹری وجے بقایہ، سابقہ ایم ایل سی اور نائب صدر سید اصغر علی، صوبائی صدر خواتین ونگ صوبہ جموں نمرتہ شرما، ٹریڈ یونین لیڈر اعجاز کاظمی اور اپنی پارٹی یوتھ لیڈر ابہے بقایہ موجود تھے جس میں کثیر تعداد میں پارٹی ورکروں اور کشمیری پنڈت برادری کے معزز شہریوں نے شرکت کی۔ انہوں نے کہاکہ کشمیری پنڈت تیس سالوں کے زائد عرصہ سے جلا وطنی کی زندگی جی رہے ہیں، جنہیں ماہانہ محض13ہزار روپے نقد امداد دی جاتی ہے جس میں موجودہ وقت میں اشیاء ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ کے پیش نظر بڑھوتری کر کے 25ہزار روپے کیاجانا چاہئے۔ پنجاب حکومت کی طرز پر فی کنبہ ایک سرکاری نوکری دی جائے، دہائیوں سے چلے آرہے امتیاز کو ختم کرنے کے لئے سیاسی ریزرویشن دی جائے، وزیر اعظم پیکیج کے تحت وادی میں کام کر رہے ملازمین کے رہنے کے لئے اضافی تعمیرات کی جائیں۔ ووٹر لسٹوں کی تجدید و تصحیح کی جائے، خواہشات کے مطابق کشمیری پنڈتوں کی وادی میں باوقار اور باعزت بازآبادی کی جائے ۔ پارٹی سنیئرلیڈرشپ سے اپیل کی گئی کہ وہ اِن مسائل کو گورنر انتظامیہ اور وفاقی حکومت کے ساتھ اُٹھائیں اور اِن کا ترجیحی بنیادوں پر حل نکلوایاجائے۔ اپنی پارٹی نائب صدر عثمان مجید نے اپنے خطاب میں کہاکہ کشمیری پنڈتوں کی مائیگریشن ایک بڑا سانحہ تھا اور کشمیری مسلم جوکہ اُن کے ساتھ بھائی چارہ سے رہتے تھے،وہ اُن کی کمی شدت سے محسوس کر رہے ہیں اور وہ چاہتے ہیں کہ وہ واپس آکر پہلے کی طرح اُن کے ساتھ رہیں۔ انہوں نے کشمیری سماج کے اندر کشمیری پنڈتوں کی بطور ٹیچر، ڈاکٹرز، انجینئرز اور سماجی کارکنان خدمات کو یاد کیا اوراِس مشکل ترین صورتحال کا سامنا کرنے میں اُن کی ہمت، دلیری اور پختہ عزم کا اعتراف کیا۔ جنرل سیکریٹری وجے بقایہ نے اپنی پارٹی کی حمایت کرنے پر کشمیری پنڈتوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہاکہ یہ واحد ایسی سیاسی جماعت ہے جوکشمیری عوام اور حکومت ِ ہند کے درمیان اعتماد سازی کے فقدان کو دور کرنے کے لئے کام کر رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ اپنی پارٹی کشمیری پنڈتوں کی وادی واپسی کے لئے اُن کے نمائندگان کے ساتھ صلاح ومشورہ کر کے ایک روڈ میپ تیار کرے گی۔
 
 

بغلیاں تھنہ منڈی میں طبی کیمپ منعقد

طارق شال 
تھنہ منڈی //ھنہ منڈی کے بغلیاں علاقے میں آئی ایس ایم محکمہ کے تعاون سے گاندھی گلوبل فیملی نے 225 واں طبی و آگاہی کیمپ لگایا۔سول ڈیفنس اور جے اینڈ کے بھارت اسکاؤٹس اور گائڈس، آئی ایس ایم کے ماہر ڈاکٹربھی موجود تھے۔ ڈاکٹر وں کی ٹیم نے گردونواح  کے مریضوں اور مقامی لوگوں کی ایک بڑی تعداد کا معائنہ کیا گیا۔ اس دوران مریضوں اور مقامی لوگوں کو مفت آیوش دوائیں تقسیم کی گئیں۔