مزید خبریں

 آزادی کیلئے ملک کے ہر خطے نے قربانیاں دیں:جاویڈ کر 

سرینگر// آزادی حاصل کرنے میں ملک کے ہر ایک حصے کے لوگوںنے قربانیاں دی ہیں، چاہئے جموں کشمیر ہو، پنچاب ہو یا یوپی ،بہار یا گجرات ، بنگال ہو۔ آزادی کیلئے جان دینے والوں کی شاندار تاریخ ہر جگہ موجود ہے جس سے تمام لوگوں کو واقف کرنا ہوگا۔ان باتوں کاوزیرمرکزی وزیرپرکاش جاوڈیکر نے کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 1947میں جموں کشمیر کے لوگوں نے جس جواں مردی کے ساتھ پاکستانی قبائیلیوں کا مقابلہ کیا تھا اس میں متعدد افراد نے اپنی جانیں گنوادی تھیں ۔ سی این آئی کے مطابق مرکزی وزیر پرکاش جاوڈیکر نے ہفتہ کے روز ’آزادی کا امرت مہااُتسو‘ کے سلسلے میں پونے میں ایک نمائش کا افتتاح کیا۔آغا خان پیلس میں نمائش ، جو 15 مارچ تک جاری رہے گی ، آزادی پسند اور ملک کی آزادی کی جدوجہد میں ان کے کردار کو خراج عقیدت پیش کرتی ہے۔ہماری آزادی بہت قربانیوں کے بعد حاصل ہوئی۔ لہذا یہ ضروری ہے کہ ہر ایک آزادی کی جدوجہد کے سفر کو سمجھے ۔انہوں نے کہا کہ آزادی کا امرت مہااتسو کا مقصد آزاد ہندوستان کی مختلف کامیابیوں کو بھی پیش کرنا ہے۔مرکزی وزیرنے افتتاحی تقریب کے موقع پر کہا کہ ملک کی آزادی کیلئے ہر جگہ جیالوںنے قربانیاں دی ہیں بنگال ہو یا بہار، جموں کشمیر ہو یا گجرات ہر جگہ سے خون بہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ 1947میں  جموں کشمیر کے بارہمولہ ضلع میں شیروانی اور اس کے ساتھیوں نے پاکستانی قبائیلیوں کا مقابلہ کیا جس میں اس کی جان گئی تھی ۔ جاوڈیکر دہلی کے نیشنل میڈیا سنٹر میں نمائش کا افتتاح کرنے کے بعد عملی طور پر اس پروگرام میں شامل ہوئے۔اس موقع پر بنگلورو ، بھوونیشور ، پٹنہ ، سانبہ (جموں کشمیر) اور مورنگ (منی پور) سمیت پانچ دیگر مقامات پر بھی نمائشوں کا عملی طور پر افتتاح کیا گیا۔پونے میں آغا خان محل آزادی کی تحریک میں ایک خاص مقام رکھتا ہے۔ ہندوستان چھوڑوتحریک کے آغاز کے بعد مہاتما گاندھی کو 1942 میں 21 ماہ کے لئے محل میں نظربند رکھا گیا تھا۔یہ محل اب ایک میوزیم بنا ہوا ہے جو گاندھی کی نظربندی کی کہانی کو پیش کرتا ہے۔
 
 
 
 

دو پولیس اہلکاروں نے ضرورتمند مریض کو خون کا عطیہ دیا

سرینگر//آئی آر پی تھرڈ بٹالین کے دواہلکاروں نے ضرورتمندوں کو مدد فراہم کرنے کی ایک اور مثال قائم کی۔ بارہمولہ ضلع کے پریہاس پورہ پٹن کا ایک مریض جو صدر ہسپتال سرینگر میں زیر علاج ہے ،کو خون کی اشد ضرورت تھی جس کیلئے بانڈی پورہ کے خالد بشیر بٹ اور اننت ناگ کے پرویز احمد راتھرنے سوشل میڈیا پر اس کی اطلاع ملنے کے بعد خون کا عطیہ دیا۔دونوں اہلکار پریہاسپورہ میں موجود آئی آر پی تھرڈ بٹالین میں تعینات ہیں۔ مریض کے لواحقین نے پولیس اہلکاروں کی اس کاوش کو سراہا اور انسانی بنیادوں پر مدد فراہم کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا۔کمانڈنٹ غلام جیلانی وانی کی سربراہی میں بٹالین کے افسران نے اس انسانی اشارے کے لئے اہلکاروں کی ستائش کی۔
 
 

نا خواندہ لوگوں کیلئے کپوارہ میں پڑھنے لکھنے کی مہم کا آغاز

اشرف چراغ 
کپوارہ // کپوارہ ضلع میں ناخواندہ لوگوں کو پڑھانے کا عمل شروع ہو چکا ہے اور اس مہم میں 40 ہزار ان پڑھ افراد کو شامل کیا جارہا ہے ۔ معلوم ہوا ہے کہ ناخواندہ افراد کو تعلیم دلانے کی مہم کے تحت پہلے مرحلے میں سانبہ کے ساتھ ساتھ کپوارہ ضلع کو شامل کیا گیا ہے۔ یہ مہم 15 مئی تک جاری رہے گی اور اس مہم کے تحت ان پڑھ افراد کی تعلیم کے ساتھ ساتھ ان کا امتحان بھی لیا جائے گا۔ اس مہم میں رضاکار اور ریٹائرڈ اساتذہ 15 سال سے زیادہ عمر کے ان پڑھ افراد کو مفت تعلیم دے رہے ہیں جو کبھی سکول نہیں گئے ہیں۔ اس میں ضلع سانبہ سے  10 ہزار  اور 30 ہزار ضلع کپواڑہ ناخواندہ افراد کا اندراج ہوا ہے۔یہ لوگ زیادہ تر دور دراز علاقوں سے تعلق رکھتے ہیں۔ اس مہم کا بنیادی مقصد خواندگی کی شرح میں اضافہ کرنا ہے۔
 
 

کولگام میں2افراد گرفتار،چرس ضبط

سرینگر//کولگام پولیس نے منشیات مخالف کارروائی جاری رکھتے ہوئے دو افرادکو گرفتارکرکے ان کے قبضے ممنوعہ مادہ برآمدکرلیا ہے۔پولیس تھانہ دیوسر نے ایس ایچ او دجاذب محمد کی سربراہی میںسوپٹ کراسنگ کے قریب خورشید احمد بٹ ساکن سوپٹ اور سیار احمد گنائی ساکن دیوسرنامی دوافرادسے تلاشی کے دوران ان کے قبضے سے155 گرام چرس اور دو وزن کرنے والی میشین برآمدکر لیں۔ اس سلسلے  پولیس نے دیوسرتھانے میں ایک کیس زیر ایف آئی آر نمبر 11/2021 درج کرلیا ۔