مزید خبریں

ایس ایس پی رام بن کا دورہ بانہال |  کویڈ 19 سے پیدا ہوئی صورتحال کا جائزہ لیا

محمد تسکین
بانہال // ایس ایس پی رام بن محترمہ پی ڈی نتیا نے جمعہ کے روز بانہال کا دورہ کرکے کویڈ19 کی وبائی صورتحال کی وجہ سے پیدا ہوئی صورتحال کا جائزہ لیا۔ انہوں نے قصبہ بانہال کے بازار اور دیگر علاقوں کا دورہ کرنے کے دوران دکانداروں ، تاجروں ، ائمہ مساجد ، فرنٹ لائین ورکروں ، ڈاکٹروں اور کئی ذی عزت شہریوں سے ملاقات کی۔ اس موقع پر امام مرکزی جامع مسجد بانہال مولوی نظیر احمد وانی ، بیوپار منڈل بانہال کے صدر نصیر احمد وانی، سرکردہ تاجر محمد اقبال وانی، بلاک میڈیکل افسر بانہال ڈاکٹر رابیہ خان اور کئی معزز شہریوں نے ان سے ملاقات کی۔اس موقع پر انہوں لوگوں سے اپیل کی کہ وہ زیادہ سے زیادہ احتیاط برتیں اور گھروں میں رہنے کو ترجیح دیں اور پولیس اور انتظامیہ کا تعاون کریں۔ انہوں نے کہا کہ ضلع رام بن میں سب سے زیادہ کویڈ19 مثبت کیسوں کی تعداد بانہال سے سامنے آرہی ہے اور ایسے میں یہاں لوگوں کے رش کو کم کرنے کیلئے ایس ڈی پی او بانہال آشیش گپتا اور ایس ایچ او بانہال نعیم الحق نے کئی اقدامات کئے ہیں اور بانہال قصبہ کو جوڑنے والی کئی سڑکوں پر ناکے لگائے گئے ہیں تاکہ مارکیٹ میں بلاوجہ اور فضول کی آمدورفت پر روک لگائی جاسکے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ جمعہ شام سے پیر کی صبح تک ہفتہ واری لاک ڈاؤن جاری ہے ،تاہم مزید کسی لاک ڈاؤن کیلئے انتظامیہ ہی کوئی فیصلہ لے گی۔ انہوں نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ ہر حال میں کویڈ 19کے رہنما اصولوں کی پاسداری کریں تاکہ اس وبائی مرض سے خود کو اور دوسروں کو بچایا جا سکے۔
 

کشتواڑ میں بارشوں کا سلسلہ دورے روز بھی جاری 

عاصف بٹ 
کشتواڑ //کشتواڑ کے بالائی اور میدانی علاقوں میں بارشوں کا سلسلہ دوسرے روز بھی جاری رہا جس کے نتیجے میں درجہ حرارت میں ایک بار پھر کمی واقع ہوئی ہے۔ضلع بھر میں جمعرات کو شروع ہوا بارشوں کا سلسلہ جمعہ کی کی شام تک وقفے وقفے سے جاری رہا اور رک رک کر ہونے والی بارشوں کے نتیجے میں ضلع کے میدانی اور بالائی علاقوں میں سردی میں اضافہ ہوا ہے بارشوں کا سلسلہ شام دیر گئے تک جاری تھا ۔کئی علاقوں میں تیز بارشوں کے نتیجے میں فصلوں کو نقصان پہنچا ہے جبکہ متعدد علاقوں سے شکایات مل رہی ہیں کہ وہاں سڑکیں اور گلی کوچے زیر آب آچکے ہیں جس کے نتیجے میں لوگوں کو عبور ومرور میں سخت دقتیں پیش آئی ہیں ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ضلع میں کی ایک سڑکوں کے کناروں پر کوئی بھی نالی تعمیر نہیں کی گئی ہے اور اکثر وبیشتر پانی کی نکاسی نہ ہونے کی وجہ سے سڑکیں پانی سے بھر جاتی ہیں جس سے لوگوں کو عبور ومرور میں سخت مشکلات پیش آتی ہیں ۔ 

چرنندیب سنگھ نے ڈی سی ریاسی کا چارج سنبھالا 

زاہد ملک
ریاسی// کے اے ایس افسر چرنندیپ سنگھ نے جمعہ کو نئے ڈپٹی کمشنر ریاسی کا چارج سنبھالا ۔چارج سنبھالنے کے بعد ڈپٹی کمشنر نے ضلع انتظامیہ کے افسران اور عہدیداران سے تبادلہ خیال کیا ۔سی ایم او ریاسی نے انہیں ضلع میں کورونا وائرس کی صورتحال کے بارے میں مکمل جانکاری دی، بعد میں انہوں نے سی ایم او کے ہمراہ ضلع ہسپتال ریاسی کا بھی دورہ کیا ،تاکہ کویڈ 19کیلئے انتظامات کا جائرہ لیا جا سکے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
 

زیادہ تر مریضوں کو اکسیجن کی ضرورت نہیں 

معالجین کے مشوروں کے بغیر ادویات اور اکسیجن کا استعمال خطرناک ثابت ہو سکتا ہے :ڈاکٹر راجیش 

نیوز دیسک 
جموں //کوویڈ 19 کے زیادہ تر مریض ایسے ہوتے ہیں جنہیں اکسیجن کی مدد کی ضرورت نہیں ہے۔ ایسے مریضوں کو صحت یاب ہونے کیلئے باقاعدہ جانچ اور مناسب ادویات لینا ہی کافی ہے۔ سینئر ریذیڈنٹ جی ایم سی جموں ڈاکٹر راجیش منیا نے کوویڈ 19 مریضوں کی اقسام کے بارے میں وضاحت کرتے ہوئے   کہا کہ وہ تین اقسام کے ہوتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ان مریضوں میں کچھ ایک ہلکے کچھ درمیانہ اور کچھ شدید قسم کے مریض ہوتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہلکے اور درمیانہ درجہ کے مریض آسانی سے صحت یاب ہو جاتے ہیں اور جو سنگین مریض ہوتے ہیں ان کیلئے دیکھ بال اور علاج کی ضرورت ہوتی ہے ۔ڈاکٹر منیا نے تمام مریضوں کو مشورہ دیا کہ وہ باقاعدگی سے اپنے آکسیجن کی سطح کی جانچ کریں اور صرف اسی صورت میں الرٹ ہوجائیں جب سطح 93 سے نیچے آ جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر اکسیجن کی سطح اس قدر پہنچ جائے تو مریض کو فوری طور پر ڈاکٹر سے رابطہ قائم کرنا چاہئے ۔سینئر ریذیڈنٹ نے عوام خاص کر مریضوں پر بھی زور دیا کہ وہ غیر ضروری اور ڈاکٹر کے مشورے کے بغیر ادویات کا استعمال نہ کریں ۔ انہوں نے متنبہ کیا کہ صرف ایک ماہر ڈاکٹر ہی بہتر تشخیص کرسکتا ہے ، خاص طور پر اگر کسی مریض کو کوڈ انفیکشن کے علاوہ بھی دیگر بیماریوں کا سامنا کرنا پڑے۔ انہوں نے عوام سے یہ بھی درخواست کی کہ وہ آکسیجن سلنڈر غیر ضروری طور پر جمع نہ کریں کیونکہ اس سے ضرورت مندوں کو اس کی قلت پیدا ہو سکتا ہے۔ڈاکٹر راجیش منیا نے مریضوں سے بھی درخواست کی ہے کہ وہ ڈاکٹروں کے مشورے کو سنجیدگی سے لیں ، کوویڈ سے بچاؤ والے پروٹوکول پر عمل کریں اور ڈاکٹروں کے مشورے کے خلاف کوڈ کیئر بستروں پر قابض نہ ہوکر شدید مریضوں کیلئے یہ چھوڑیں ۔انہوں نے بتایا کہ تمام طبی مشوروں اور سوالات کیلئے چوبیس گھنٹے ڈویڑنل کنٹرول روم قائم کیا گیا ہے جن کے فون نمبرات یہ ہیں۔ 
 0191-2520982 ، 2549676 ، 2674444 ، 2674115 ، 2674908 
 

ڈوڈہ میں عسکریت پسندوں کے ٹھکانے کو تباہ کیاگیا 

بڑی مقدار میں اسلحہ و گولہ بارود برآمد کرنے کا دعویٰ 

سرینگر//فوج ، پولیس اور فورسز نے ایک مشترکہ آپریشن کے دوران ڈودہ میں جنگجوئوں کے ایک خفیہ ٹھکانے کو تباہ کیا ہے جہاں سے بڑی مقدار میں اسلحہ و گولہ بارود برآمد کیا گیا جبکہ اس کارروائی میں دیگر چیزیں بھی ضبط کرلی گئی ہیں۔ کرنٹ نیو زآف انڈیا کے مطابق پولیس ، فوج اور فورسز نے ایک خفیہ اطلاع کی بناء پر چکرتی نامی علاقے میں سرچ آپریشن چلایا جس دوران جنگجوئوں کے خفیہ ٹھکانے کا پتہ چلا ۔معلومات کے مطابق ضلع کے گھاٹ کے علاقے چکرنتی کے علاقے میں فوج اور پولیس نے خصوصی اطلاع پر مشترکہ سرچ آپریشن کیا۔اس دوران جنگجوئوںکا ٹھکانہ بازیافت ہوا ہے اور کافی مقدار میں بارودی مواد اور دیگر اسلحہ کے علاوہ دیگر چیزیں برآمد کی گئیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 سائنس کالج جموں کے تحفظ پر6 کروڑ روپے خرچ کئے جائیں گے : محکمہ ہائر ایجوکیشن

نیوز ڈیسک 
جموں //جموں و کشمیر حکومت نے جموں شہر کے قلب میں واقع صدیوں پرانے تاریخی ‘پرنس آف ویلز’ کالج جس کو عام طور سے گورنمنٹ گاندھی میموریل سائنس کالج سے جانا جاتا ہے ، کے تحفظ اور دیکھ ریکھ کو منظوری دے دی ہے ۔محکمہ ہائر ایجوکیشن کے ذرائع نے یو این آئی کو بتایا کہ اس کالج کو جموں وکشمیر کے ایک اثاثے کے طور محفوظ رکھا جائے گا اور اس کے تحفظ کیلئے 5 کروڑ 87 لاکھ روپے خرچ کئے جائیں گے ۔انہوں نے کہا کہ اس رقم میں سے 2 کروڑ 28 لاکھ روپے مین بلاک کی عمارت کے تحفظ پر خرچ کئے جائیں گے جبکہ جیالوجی بلاک پر ایک کروڑ 93 لاکھ روپے اور فیزکس اور کمسٹری بلاکس پر ایک کروڑ 65 لاکھ روپے خرچ کئے جائیں گے ۔مذکورہ ذرائع نے بتایا کہ عمارت کو اس طرح محفوظ کیا جائے گا تاکہ زلزلوں کے جھٹکوں سے اس کو کوئی نقصان نہ پہنچے ۔ایک زمانے میں ‘پرنس آف ویلز کالج’ کے نام سے مشہور اس کالج کا قیام سال 1905 میں عمل میں لایا گیا تھا۔ آزادی سے قبل یہ کالج پنجاب یونیورسٹی لاہور سے منسلک تھا۔اس کالج کے باب الداخلے کو دو برس قبل دو بارہ تعمیر کیا گیا جس پر قریب 22 لاکھ روپیے کا خرچہ آیا تھا۔دریں اثنا کالج کے پرنسپل رویندر ٹکو نے یو این آئی کو بتایا کہ حکومت نے ہریٹیج عمارت کے تحفظ پر پیسہ خرچ کرنے کو منظوری دے دی ہے ۔انہوں نے کہا کہ موجودہ صورتحال کے پیش نظر تعمیری کام التوا میں پڑ گیا ہے لیکن اس کو بعد جلد شروع کیا جائے گا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
………………

کورونا وائرس کے چلتے بناء انگوٹھا لگائے راشن دیا جائے

 ڈیلر ایسوسی ایشن نے 2018.19سے تمام واجبات کی ادائیگی کا مطالبہ کیا 

اشتیاق ملک
ڈوڈہ //محکمہ امور صارفین ،خوراک و عوامی رسادات میں کام کر رہے راشن ڈیلروں نے کوؤڈ کے چلتے بناء انگوٹھا لگائے ہی صارفین کو راشن فراہم کرنے کی اجازت دینے و واجبات کی ادائیگی کا حکام سے مطالبہ کیا ہے ۔ ٹھاٹھری میں منعقد ایک پریس کانفرنس سے مخاطب ہوتے ہوئے  راشن ڈیلروں نے کہا کہ کورونا وائرس بیماری کے دوران انگوٹھا لگانا مضر ثابت ہو سکتا ہے۔ انہوں نے صوبائی و ضلع انتظامیہ سے اس فیصلے پر روک لگا کر بناء  انگوٹھا لگائے ہی صارفین میں راشن تقسیم کرنے کا مطالبہ کیا۔ صدر ایسوسی ایشن اختر حسین نے کہا کہ 2019 سے ڈیلر کرایہ سے محروم ہیں اور اب راشن کی سپلائی ٹھیکیداروں کے ذریعے عمل میں لائی جائے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ آنگن واڑی مراکز و اسکولوں کو مڈے میل کا راشن بھی ڈیلر ہی سپلائی کرتے ہیں لیکن 2018 سے تاحال کرائے کی ادائیگی نہیں کی گئی ہے جس کے نتیجے میں انہیں شدید مالی بحران کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ صوبائی و ضلع ایسوسی ایشن نے فیصلہ کیا کہ کرایہ ملنے سے پہلے کوئی بھی ڈیلر سرکاری ڈپوؤں سے راشن نہیں اٹھائے گا۔ ڈیلروں نے کہا کہ وقت پر کرایہ نہ ملنے کی وجہ سے وہ بھی قرضہ میں ڈوب گئے ہیں۔ انہوں نے حکام سے ڈیلروں کے مطالبات کو ترجیح بنیادوں پر پورا کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ڈوڈہ کے پہاڑوں پر تازہ برفباری 

معمولات زندگی متاثر، سردی کی شدت میں اضافہ 

اشتیاق ملک 
ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع میں دوسرے روز بھی بارشوں کا سلسلہ جاری رہا جبکہ پہاڑوں پر ہلکی برفباری ہوئی جس کے نتیجے میں درجہ حرارت میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے۔ مسلسل بارشوں کے باعث معمولات زندگی متاثر ہوئی ہے۔ اطلاعات کے مطابق جمعرات کو میدانی علاقوں میں شروع ہوئی بارش و پہاڑوں پر تازہ برفباری کا سلسلہ جمعہ کو بھی جاری رہا جس کے نتیجے میں خطہ میں سردی کی شدت میں اضافہ ہوا ہے اور ندی و نالوں میں بھی پانی کی سطح بڑھ گئی ہے اور رابطہ سڑکیں مزید خستہ حال ہوئیں ہیں۔ متواتر بارشوں سے درجنوں دیہات میں پینے کے صاف پانی کی قلت و بجلی کی سپلائی متاثر ہوئی ہے۔
………………..

ڈوڈہ ضلع میں کویڈ 19کے 37نئے کیس درج ،13مریض صحتیاب 

اشتیاق ملک 
ڈوڈہ//ڈوڈہ ضلع میں جمعہ کو کویڈ 19 کے 37 نئے مثبت کیس سامنے آئے ہیں جبکہ ایک خاتون سمیت 2افراد کی موت ہوئی ہے اور 13 مریض صحتیاب ہوئے ہیں۔اطلاعات کے مطابق جمعہ کی صبح کاہرہ جوڑا سے تعلق رکھنے والے ایک 75 سالہ بزرگ وگول رام بن کی 48 سالہ خاتون کی کورونا وائرس سے گورنمنٹ میڈیکل کالج ڈوڈہ میں موت ہوئی ہے جنہیں رواں ماہ کی تین تاریخ کو جی ایم سی میں بھرتی کیا تھا۔ اس دوران کویڈ 19 کے 37 نئے مثبت کیس سامنے آئے ہیں اور اسطرح سے ضلع میں فعال کیسوں کی تعداد 433 و صحتیاب ہوئے مریضوں کی مجموعی تعداد 3577 پہنچ گئی ہے۔ اس دوران ڈپٹی کمشنر ڈوڈہ وکاس شرما نے جمعہ کی شام سے پیر کی صبح سات بجے تک ضلع میں کورونا کرفیو نافذ کرنے کے احکامات جاری کئے ہیں۔ اس دوران میڈیکل دکانیں ،زرعی شعبے سے جڑی سرگرمیاں، ایل پی جی، راشن ڈپوؤ، تعمیراتی کام و دیگر ایمرجنسی سروسز کو چھوڑ کر باقی سبھی کاروباری ادارے بند رہیں گے ،تاہم سبزی، دودھ، بیکری ،گوشت و چکن شاپس کو صبح چھ بجے سے دس بجے تک ہی کھولنے کی اجازت ہوگی۔انتظامیہ نے لوگوں سے ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد کرنے و ٹیکہ کاری کی مہم بڑھ چڑھ کر حصہ لینے کی اپیل کی ہے۔ 
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
فوٹو 

کورونا سے نجات حاصل کرنے کیلئے اللہ سے رجوع کریں :پیر میاں مقبول 

اشتیاق ملک 
ڈوڈہ //جموں و کشمیر کے معروف مذہبی شخصیت و سجادہ نشین دربار عالیہ یونسیہ نشقبندیہ زرہامہ کشمیر الحاج پیر میاں محمد مقبول عرف باجی صاحب نے عوام الناس پر زور دیا کہ وہ کورونا وائرس کی اس مہلک وباء سے نجات حاصل کرنے کیلئے اللہ کے ساتھ رجوع کریں اور ہر طرح کی حفاظتی تدابیر اختیار کریں۔ خطہ چناب کے اپنے دورے کے دوران ڈھڈکائی بھلیسہ میں نماز جمعہ کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے پیر میاں محمد مقبول نے کہا کہ دین اسلام مکمل ضابطہ حیات ہے اور قرآن کریم میں ہر بیماری کا علاج بتایا گیا ہے۔ انہوں نے امت مسلمہ پر زور دیا کہ وہ حضور اکرم صلی اللہ علیہ و سلم کی سنتوں کو اپنی عملی زندگی میں لائیں اور کثرت سے اللہ کے دربار میں توبہ و استغفار کی تسبیح کریں۔باجی صاحب نے کہا کہ مہلک بیماری سے بچنے کیلئے پیارے آقا صلی اللہ علیہ و سلم کے زمانے میں بھی تمام تر حفاظتی اقدامات کئے گئے ہیں اور دین اسلام نے پہلے ہی صفائی کو نصف ایمان کا حصہ قرار دیا ہے۔ انہوں نے لوگوں پر زور دیا کہ وہ احتیاطی تدابیر اختیار کریں اور باالخصوص ماسک کا استعمال و سماجی دوری کا خاص خیال رکھیں۔ انہوں حکومت وقت سے بھی سماج میں رہ رہے مزدور پیشہ افراد و بے روزگار کنبوں کی امداد کرنے کی اپیل کی ۔اس دوران انہوں نے یوٹی، ملک و پورے عالم میں امن، سلامتی، خوشحالی و اس مہلک وباء سے نجات حاصل کرنے کے لئے دعا کی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

پی ایچ ڈی چیمبرس آف کامرس نے

کویڈ 19سے نپٹنے کیلئے جموں وکشمیر انتظامیہ کی تعریف کی

 جموں //پی ایچ ڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری جموں و کشمیر نے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کی جانب سے جموں و کشمیر میں کوڈ  19 کا مقابلہ کرنے کی کوششوں پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا ہے ۔پی ایچ ڈی چیمبر نے کورونا وائرس کوویڈ 19 کی دوسری لہر سے نپٹنے کیلئے جموں و کشمیر انتظامیہ کی تعریف کی اور سرکاری اور نجی شعبے کے تمام ہیلتھ ورکرز ، ڈاکٹروں کا شکریہ بھی ادا کیا ،انہوں نے پولیس اور سیکورٹی اداروں کا بھی شکریہ ادا کیا جنہوں نے اس مشکل حالات میں عوام کا ساتھ دیا ہے ۔چیئرمین پی ایچ ڈی سی سی آئی بلدیو سنگھ رانانے کہا کہ چیمبر تمام سرکاری محکموں کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑا ہے تاکہ اس بیماری کی روکتھام ممکن بن سکے ۔انہوں نے کہا کہ چیمبر کو معلوم ہے کہ موجودہ صورتحال کا اثر تمام معاشی شعبوں پر پڑتا ہے ، چاہے وہ مقامی ہو یا بین الاقوامی ۔انہوں نے کہا کہ اس سے سیاحی مہمان نوازی سمیت چھوٹے اور درمیانہ درجہ کے کاروبار متاثر ہوتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ اگر کورونا کی دوسری لہر نے شدت اختیار کر لی تو اس کے سنگین نتائج سامنے آئیں گے اور غریبوں کا روزگار متاثر ہو سکتا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں ایک فرد کی حیثیت سے اور بحیثیت تنظیم اپنے علاقوں ، تعلقات ، دوستوں میں کمزور برادریوں اور افراد تک پہنچنا چاہئے اور اس کے علاوہ ہمیں بزرگوں اور بچوں کی مدد کرنے کی بھی ضرورت ہے ۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 رام بن میں کورونا میں ملوث حاملہ خاتون نے بچے کو جنم دیا 

ایم ایم پرویز
رام بن //جمعہ کے روز ضلع اسپتال رام بن میں کورونا وائرس میں مبتلا ایک خاتون نے اپریشن کے دوران بچی کو جنم دیا ہے۔ہسپتال انتظامیہ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ڈاکٹر عصمت رونیال کی سربراہی میں ڈاکٹروں کی ایک ٹیم نے جمعہ کی سہ پہر ضلعی اسپتال رام بن میں ایک حاملہ کوڈ 19 مثبت خاتون کی سرجری کی ۔اس خاتون نے آپریشن تھیٹر (او ٹی) ڈسٹرکٹ اسپتال رام بن میں سیزرین سیکشن کے دوران بچے کو جنم دیا ۔میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ضلع اسپتال رام بن ڈاکٹر جاوید احمد زرگر نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ ماں اور بچہ صحتیاب ہیں ۔انہوں نے کہا کہ نوزائیدہ بچے کا (آر اے ٹی)  ٹیسٹ کروایا گیا جو منفی آیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ سرجری ڈاکٹر اور پیرا میڈیکل اسٹاف کی ٹیم کے ذریعہ کروائی گئی تھی جس میں کویڈ پروٹوکال کا مکمل بندوبست رکھا گیا تھا ۔