مزید خبریں

چیف سیکریٹری نے جل جیون مشن کا جائزہ لیا | 15 اگست تک تمام اسکولوں اور آنگن واڑی مراکز میں پینے کا پانی مہیا کرنے کی ہدایت

 سرینگر // چیف سیکریٹری ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے پیر کو جموں وکشمیر میں مرکزی زیر اہتمام اسکیم ’’ جل جیون مشن ‘‘ کے تحت حاصل پیش رفت کا جائزہ لینے کیلئے ایک میٹنگ کی صدارت کی۔کمشنراور سیکریٹری جل شکتی محکمہ اور مشن ڈائریکٹر جل جیون مشن کے ساتھ محکمہ کے متعلقہ افسران نے بھی میٹنگ میںشرکت کی۔میٹنگ میںبتایا گیا کہ محکمہ نے رواں مالی سال کے دوران 21650 گھرانوں کو نئے فنکشنل گھریلو نل کنیکشن (FHTC) فراہم کئے ہیں۔ محکمہ نے اس اسکیم کے تحت 90فیصد سے زیادہ اسکولوں اور آنگن واڑی مراکز ، 51فیصد صحت کے اداروں اور 34فیصد گرام پنچایتوں کو بھی شامل کیا۔میٹنگ میںمزید بتایا گیا کہ 2021-22 کے دوران صوبہ کشمیر میں 197593 گھرانوں اور صوبہ جموں میں 490583 گھرانوں کو فعال نل کنیکشن کے ساتھ منسلک کیا جائے گا۔چیف سکریٹری نے محکمہ کو ہدایت دی کہ 15 اگست 2021 سے قبل تمام اسکولوں اور آنگن واڑی مراکز کو پانی کے کنکشن فراہم کریں۔محکمہ سے کہا گیاکہ وہ اپنی فیس جمع کرنے کا طریقہ کار اور بلنگ سائیکل کو ہموار کرے۔ محکمہ کو مشورہ دیا گیا کہ سہ ماہی کے حساب سے بل اور محصول وصول کرنے کا کام شروع کیا جائے تاکہ صارفین پر ادائیگیوں کا بوجھ کم ہو اور محصول کی پیداوار میں محکمہ کی استعداد کار میں اضافہ ہوسکے۔
 
 
 

کووِڈ سے بچائو کے رہنماخطوط | نظراندازکرنے کا نتیجہ تیسری لہر ہوسکتاہے :ڈاکٹرسلیم خان

سرینگر//ڈاکٹروں نے خبردارکیاہے کہ کورونا سے بچائو کیلئے مقررہ اصولوںواحتیاطی تدابیرکے تئیں لاپرواہی کارُجحان کوروناکے یومیہ کیسوں کی تعدادمیں اضافے کاموجب بن سکتا ہے ۔کے این ایس کے مطابق طبی ماہرین کہتے ہیں کہ عام لوگ معیاری عملیاتی طریقہ کاریعنی ایس ائوپیزکو جس قدرنظرانداز کریں گے ،اُسی قدرزیادہ لوگ کورونامیں مبتلاء ہوجائیں گے ۔گورنمنٹ میڈیکل کالج سری نگرکے شعبہ کیمونٹی میڈسن کے سربراہ ڈاکٹر ایس محمد سلیم خان نے اس حوالے سے کہاہے کہ کورونا کی پہلی لہر میں کمی آنے کے بعدلوگوں نے ماسک پہننا اوردوسری احتیاطی تدابیر پرعمل کرنا چھوڑدیاتو دوسری لہرکاسامنا کرنا پڑا ،جو زیادہ مہلک ثابت ہوئی ۔انہوں نے کہاکہ اب دوسری لہر کے اثرات میں کمی آنے کے بعدلوگوںنے پھرایک مرتبہ لاپرواہی شروع کی ہے ،بہت کم لوگ ماسک کااستعمال کرتے ہیں جبکہ سماجی دوری اورجسمانی فاصلہ قائم رکھنے کی لازمی احتیاط پراب کوئی عمل نہیں کررہاہے ۔ڈاکٹرایس محمد سلیم خان نے خبردارکیاکہ اگرعام لوگوںمیں یہی رُجحان جاری ہے اورخلاف ورزی پہلے کی طرح معمول بن گئی توہمیں جلدکوروناکی تیسری لہرکاسامنا کرناپڑسکتا ہے ۔
 
 
 
 

آئی ٹی آئی میں کوئی سیٹ خالی نہ چھوڑیں :اصغر سامون | طلبا کو تربیت یافتہ بنانے پر توجہ مرکوز کرنے پر زور

سرینگر// پرنسپل سکریٹری ڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ (ایس ڈی ڈی) ڈاکٹر اصغر حسن سامون نے ماتحت محکمہ کے افسران پر زور دیا کہ وہ کسی بھی صنعتی تربیت یافتہ انسٹی ٹیوٹ (آئی ٹی آئی) میں کسی بھی جگہ کو خالی نہ چھوڑیں۔ انہوں نے ان سے انسٹی ٹیوٹ میں داخلہ کے عمل کو ابتدائی اور باشعور لوگوں کو ماس میڈیا کے ذریعے شروع کرنے کے لئے کہا۔ڈاکٹر سامون نے افسران پر زور دیا کہ وہ طلبا کو ان انسٹی ٹیوٹ میں داخلے کے لئے راضی کریں کیونکہ سینئر سیکنڈری پاس آؤٹ اور اعلی تعلیم کے حصول کے لئے انتخاب کرنے والوں کے مابین بہت فرق ہے۔ انہوں نے افسران سے کہا کہ وہ مارکیٹ میں افادیت رکھنے والے اور باہر کی طلبگار ہنر مند افرادی قوت تیار کرنے کے لئے یہ ہنر مہیا کرنے والے اداروں کو مرکز بنائیں۔پرنسپل سکریٹری نے افسران پر زور دیا کہ وہ ایسے کورسز شروع کریں جو متعلقہ اور نوکری لانے والے ہوں۔ انہوں نے ان سے صنعتی ضروریات اور فریم کورسز اور نصاب کا جائزہ لینے کے لئے کہا۔ انہوں نے ان سے مطالبہ کیا کہ وہ طلباء کو محض سرٹیفکیٹ جاری کرنے کی بجائے پیش کردہ تجارت میں تربیت یافتہ بنانے پر توجہ دیں۔ سامون نے افسران سے کہا کہ وہ امتحانات وقت پر کروائیں اور نتائج کو وقت کا پابند بنائیں۔ انہوں نے ہر ITI کے ذریعہ ہر سال کم از کم ایک پلیسمنٹ ڈرائیو چلانے پر زور دیا۔ڈاکٹر سامون نے آئی ٹی آئی کے غیر سرکاری ، صنعتی چیئرپرسن سے انسٹیٹیوٹ مینجمنٹ کمیٹی (آئی ایم سی) کے اجلاس باقاعدگی سے کرنے کو بھی کہا۔اجلاس کو بتایا گیا کہ جموں وکشمیر میں 52 سرکاری اور 34 نجی آئی ٹی آئی ہیں جن میں تقریبا 18000 طلباء کی گنجائش کے ساتھ 71 کورسز پیش کئے جارہے ہیں۔ یہ بھی بتایا گیا کہ جے اینڈ کے میں 11 خواتین آئی ٹی آئی بھی ہیں۔
 
 

 برزہامہ کے لوگوں سے حکام کا رویہ ناقابل قبول :خورشید عالم

سرینگر// پیپلز کانفرنس لیڈر محمد خورشید عالم نے برزہامہ اور اس کے اطراف میں بسنے والے لوگوں کو ہراساں کرنے پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ اس غیر یقینی صورتحال کے درمیان عام لوگوں کو گھیرنے کے لئے نئے طریقے ایجاد کئے جارہے ہیں۔خورشیدعالم نے ایک بیان میںکہا کہ مقامی لوگوں کی جانب سے اپنے مکانات کی معمولی مرمت میں بھی غیر ضروری رکاوٹیں پیدا کرنے اور چھوٹی چھوٹی باتوں پر انہیں خوفزدہ کرنے کے بارے میں روکنے کی شکایات موصول ہو رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس طرح کے رجحان نے عوام کو انتہائی مشکلات سے دوچار کردیا ہے جبکہ خود ہی حکومت کو اس طرح کے غلط اور عجیب فیصلوں کے پیچھے کوئی منطق نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ برزہامہ کے آس پاس کے علاقوں کے لوگوں کے گھر خستہ حال ہیں اور انہیں فوری مرمت کی ضرورت ہے۔ تاہم متعلقہ حکام انہیں محفوظ زندگی گزارنے کی اجازت نہیں دے رہے ہیں ، جس کی وجہ سے وہ اپنے آپ کوغیر محفوظ تصور کررہے ہیں اور ان کے اہل خانہ کو شدید خطرات لاحق ہیں۔
 
 
 

جموں کشمیرکااگلاوزیراعلیٰ بھاجپا کا ہوگا :رینہ کادعویٰ

سرینگر// جموں کشمیرکااگلاوزیراعلیٰ بھارتیہ جنتاپارٹی کاہوگا۔یہ دعویٰ یہاں پارٹی کے جموں کشمیر یونٹ کے صدر رویندررینہ نے پہلگام میں ایک میٹنگ کے بعد نامہ نگاروں کے ساتھ بات کرتے ہوئے کیا۔ کے این ایس  کے مطابق بی جے پی کے صدر رونیدر رینہ نے پیر کے روز کہا کہ جموں و کشمیر میں بی جے پی آنے والے انتخابات میں بڑے پیمانے پر جیت درج کرے گی۔ انہوں نے بتایا بھارتیہ جنتاپارٹی نریندر مودی کی زیر قیادت حکومت  نے ہرجگہ لوگوں کی خد مت کرکے کورونا وائرس کی عالمگیر وباء میں کسی کو بھوکا نہیں رہنے دیا ، اس کے علاوہ وہ کام کیا ہے جس سے عوام خوش ہیں جس کی بنیاد پر آنے والے انتخابات میں ان کی پارٹی بڑے پیمانے پر جیت درج کرے گی اور جموں و کشمیر کا وزیراعلیٰ بھارتیہ جنتا پارٹی کا ہی ہوگااور کنول کا پھول ہر جگہ کھلے گا۔
 

بھاجپا کاجموں کشمیرکے لوگوں کو دکھانے کیلئے کچھ نہیں ہے :قدفین

سرینگر//بھاجپا قیادت کی طرف سے جموں کشمیر میں تنظیم کے ارکان کو چنائو کیلئے تیار رہنے کی ہدایت دینے پر اپنے ردعمل کااظہار کرتے ہوئے کانگریس رہنماقدفین چودھری نے کہا کہ زعفرانی برگیڈ کے پاس جموں کشمیر کے لوگوں کو دکھانے کیلئے کچھ مثبت نہیں ہے گرچہ  وہ ملک اورریاست پر سات برس سے زیادہ عرصے سے حکومت کررہے ہیں۔ایک بیان میں قدفین نے کہا کہ بھاجپا کی بدانتظامی کی وجہ سے جموں کشمیر تعلیم ،اقتصادیات،ترقی،پیداوار اورروزگار کے معاملے میں بدترین ریاست بن چکی ہے۔انہوں نے کہا کہ جموں کشمیرمیں بے روزگاری میں ہرگزرتے دن اضافہ ہورہا ہے اورزمینی سطح پرحکومت کا کہیں نام ونشان نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ بھاجپا کے پاس لوگوں کو دکھا نے کیلئے کچھ نہیں ہے سوائے اس کے کہ انہوں نے جموں کشمیرکاخصوصی درجہ چھین لیا جس سے یہاں کے لوگوں کو روزگار کی ضمانت تھی اور یہاں کے عوام کے حقوق محفوظ تھے۔ انہوں نے کہا کہ بھاجپا کادوسراتحفہ ریاست کا درجہ کم کرکے اِسے مرکزی زیرانتظام علاقہ میں تبدیل کرناتھا۔
 
 
 

ضلع ترقیاتی کمشنر کپوارہ صحتیابی کی شرح پرمطمئن | کووِڈ مناسب طرزِ عمل ( سی اے بی ) پر عمل کرنے کی اپیل 

کپواڑہ//ضلع ترقیاتی کمشنر کپواڑہ اِمام الدین نے کہا کہ ضلع میں کووِڈ صحتیابی کی شرح 98.49 فیصدتک پہنچ گئی ہے جو اطمینان بخش علامت ہے۔اِن باتوں کا اِظہار ضلع ترقیاتی کمشنر کپواڑہ نے یہاں میڈیا اَفراد کو ضلع میں موجودہ کووڈ ۔19 صورتحال کے بارے میں بریفنگ دینے کے دوران کیا۔ضلع ترقیاتی کمشنرنے تفصیلات دیتے ہوئے کہا کہ 45برس سے زیادہ عمر کے 80.03فیصد اور 18 برس عمر سے 44 برس تک کی عمر کے 23.77فیصد لوگوں کو کووِڈ حفاظتی ٹیکے لگائے گئے ہیں ۔اُنہوں نے کہا کہ مثبت معاملات کی شرح اَب 0.29فیصد رہ گئی جبکہ شفایابی کی شرح 98.49 فیصد تک پہنچ گئی جو ضلع کپواڑہ کے لئے اطمینان بخش علامت ہے۔اُنہوں نے مزید کہا کہ ضلع میں اِس وقت 46 سرگرم معاملا ت ہیں اور صرف 03 مریض ہسپتال میں داخل ہیں۔ضلع ترقیاتی کمشنر کپواڑہ امام الدین نے ضلعی عوام سے کووِڈ مناسب طرزِ عمل ( سی اے بی ) اور دیگر ایس او پیز پر عمل کرنے کی اپیل کی۔اُنہوں نے لوگوں سے کہا کہ وہ اَپنی حفاظت کے لئے قریبی ٹیکہ کاری مرکز میں جا کر کووِڈ حفاظتی ٹیکے لگائیںتاکہ صد فیصد ہدف کو حاصل کیا جاسکے۔اُنہوں نے لوگوںسے ماسک کا استعمال اور معاشرتی فاصلہ برقرار رکھنے کی تاکید کی تاکہ کووِڈ ۔ 19 وَبائی بیماری پر قابو پایا جاسکے۔اِس موقعہ پر ڈسٹرکٹ اِنفارمیشن آفیسر محمد یوسف میر ، ڈسٹرکٹ ایپیڈ یما لوجسٹس کووِڈ کنٹرول روم کپواڑہ نصیر احمد اور نوڈل آفیسر کووِڈ غلام نبی شیخ موجود تھے۔
 

اننت ناگ اور بانڈی پورہ میں 15 اگست انتظامات کا جائزہ لیا گیا

اننت ناگ //15اگست تقریبات کے انتظامات کا جائزہ لینے اور اس کو حتمی شکل دینے کے لئے ڈپٹی کمشنر اننت ناگ ڈاکٹر پیوش سنگلا نے متعلقہ افسران کا ایک اعلی سطحی اجلاس طلب کیا۔انہوں نے کہا کہ یوم آزادی آزاد ہندوستان کی تاریخ کا ایک خاص اور تاریخی موقع ہے ۔ انہوں نے افسران اور ایجنسیوں کو ہدایت دی کہ وہ آپس میں ہم آہنگی پیدا کریں اس کے علاوہ قومی تقاریب کو شاندار کامیابی کے لئے تمام تر انتظامات کو یقینی بنائیں۔اس موقع پر ، ٹائمنگ اور شیڈول ، سیکیورٹی ، صفائی ستھرائی اور صفائی ستھرائی ، بیٹھنے کے انتظامات ، طبی سہولیات ، بجلی اور پانی کی فراہمی ، مرکزی مقام کی روشنی اور سجاوٹ ، فائر ٹینڈرز کی تعیناتی ، نقل و حمل کی سہولیات ، دعوت نامے اور پی اے سسٹم کی تنصیب ، انعامات کی تقسیم کے علاوہ دیگر انتظامات کا بھی جائزہ لیا گیا۔متعلقہ افسران کو ہدایت کی گئی کہ وہ یوم آزادی کی خوشی کی خوشی کو یقینی بنانے کے لئے اپنی تفویض کردہ نوکریوں کو احتیاط سے انجام دیں۔اجلاس کو بتایا گیا کہ مرکزی تقریب گورنمنٹ ڈگری کالج (بوائز) کھنہ بل میں ہوگی جہاں ترنگا لہرایا جائے گا۔اس کے علاوہ سب ڈویژن اور تحصیل سطح پر بھی تقریبات کا انعقاد کیا جائے گا۔ متعلقہ ایس ڈی ایم اور تحصیلداروں کو ہدایت کی گئی کہ وہ اس تقریب کو کامیاب بنائیں۔اس میٹنگ میں ایس ایس پی ، کمانڈنگ آفیسر آئی ایس آر آر ، کمانڈنٹ 40 ویں بی آر کے سی آر پی ایف ، اے ڈی سی (ایس) ، سینئر انجینئر، ایس ڈی ایم ، اے سی آر ، تحصیلدار ، ڈی وائی ایس او ، اے ڈی ایف سی سی اے ، فائر اینڈ ایمرجنسی کے افسران اور دیگر متعلقہ افسران نے شرکت کی۔ادھرڈپٹی کمشنر بانڈی پورہ ڈاکٹر اویس احمد نے انتظامات کا جائزہ لینے کے لئے افسران کے ایک اجلاس کی صدارت کی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ مرکزی تقریب ایس کے اسٹیڈیم ، بانڈی پورہ میں ہوگی ، جہاں مہمان خصوصی ترنگا لہرائیں گے۔ڈپٹی کمشنر نے ہدایت دی کہ وہ تمام اضلاع میں تقریبات کے انعقاد کو آسانی سے انجام دینے کے لئے پہلے سے ہی تمام انتظامات کو یقینی بنائے۔انہوں نے یوم آزادی کی تقریب کو یقینی بنانے کے لئے پنڈال میں فول پروف انتظامات کرنے پر زور دیا۔ڈاکٹر اویس نے ہدایت کی کہ پینٹنگ ، مضمون نویسی اور مباحثے جیسے مختلف آن لائن مقابلوں میں طلباء کی شرکت کو یقینی بنائیں کیونکہ وہ کوڈ 19 کے باعث پریڈ اور دیگر ثقافتی تقاریب میں براہ راست حصہ نہیں لے سکتے ہیں۔انہوں نے جوڈیشل افسروں سمیت تمام مدعو افراد کے لئے بیٹھنے کے مناسب انتظامات کرنے اور اپنی گاڑیوں کے لئے الگ پارکنگ کی سہولیات پر زور دیا۔دریں اثنا ، جموں و کشمیر پولیس ، آرمڈ ، سی آر پی ایف ، لیڈی کنٹیجینٹ ، ہوم گارڈ ، فائر اینڈ ایمرجنسی سروسز اور فاریسٹ پروٹیکشن فورس سمیت دیگر دستے مارچ پاسٹ میں حصہ لیں گے اور ماضی کے طریقوں کے مطابق بینڈ انتظامات کریں گے۔
 

 بانڈی پورہ میں5 قمار باز گرفتار | دائو پرلگائے گئے 7230روپے ضبط

سمبل// بانڈی پورہ پولیس نے 5 قمار بازوں کوگرفتار کرکے داوَ پر لگائی گئی رقم اور تاش کے پتے ضبط کئے۔ ایس ڈی پی او سمبل کی نگرانی میں تہرگام شادی پورہ میں تھانہ پولیس سمبل بانڈی پورہ کی ایک پولیس پارٹی نے قمار بازی کے ایک اڈے پر چھاپہ مار کر5 افراد کو رنگے ہاتھوں گرفتارکیاجن کی شناخت ریاض احمد ڈگہ ، مختار احمد میر ساکنان شادی پورہ ، عارف احمد بٹ ،اظہر محمود بٹ اور فیاض احمد وگے ساکنان تہرگام کے بطورہوئی ہے۔اس موع پر داوَ پر لگائے گئے نقدی7230روپے اور تاش کے پتے بھی برآمد ہوئے۔ سمبل پولیس نے اس سلسلے میں کیس زیر ایف آئی آر نمبر93/2021 متعلقہ دفعات کے تحت درج کیا۔
 

منشیات مخالف مہم | بجبہاڑہ میں شہری ایک کلو چرس سمیت گرفتار

اننت ناگ//اننت ناگ پولیس نے منشیات مخالف مہم کے دوران کرندی گام بجبہاڑہ میں ایک شہری کوگرفتار کرلیا جبکہ دیگر 2 افراد جائے موقعہ سے فرار ہوگئے ،جن کی تلاش شروع کردی گئی ہے ۔ پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ بجبہاڑہ پولیس نے کرندی گام بجبہاڑہ میں کچھ لوگ منشیات کاکاروبار کرتے ہیں ۔پولیس کی ایک ٹیم نے اشفاق پرے نامی ایک دکانداراورمنظورپرے کے بارے منشیات کادھندہ کرنے کی اطلاع ملی توپولیس کی ایک ٹیم نے ایس ایچ او بجبہاڑہ کی سربراہی میں ایگزیکٹو مجسٹریٹ کی نگرانی میں کرندی گام بجبہاڑہ میں ایک دکان کی تلاشی لی ،جہاں سے پولیس نے ایک کلوگرام سے زیادہ چرس برآمد کیا۔پولیس نے دکان پرموجود ایک شخص نثار احمد پرے جو محکمہ تعلیم میںملازم ہے ،کو جائے موقعہ پرگرفتار کیا تاہم دکاندار سمیت 2ملزم وہاں سے بھاگ جانے میں کامیاب ہوئے ،جن میں اشفاق پرے(دکاندار)اورمنظورپرے ساکنان کرندی گام شامل ہیں ۔پولیس نے اس سلسلے میں ایف آئی آرزیرنمبر216/2021کے تحت کیس درج کرکے مزید تحقیقات شروع کردی ۔
 
 
 

متعدد وَفود اور اَفرادکی مشیر بصیر خان سے ملاقات | مطالبات کو جلدازجلد حل کرنے کی یقین دہانی کرائی

سری نگر//متعدد وَفود اور اَفراد نے  یہاں سول سیکرٹریٹ میں لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان سے ملاقات کی اور  اُنہیں شکایات اور مطالبات سے آگاہ کیا۔وفد میں سے ایک نے ضلع گاندربل میں ایک کام میں محکمہ دیہی ترقی کے زیر استعمال غیر معیاری مواد کے بارے میں شکایت کی ۔مشیر موصوف نے ناظم دیہی ترقی کو ہدایت دی کہ وہ اِس معاملے کی تحقیقات شروع کریں اور ایک ہفتہ کے اندر اندرحقائق پر مبنی رِپورٹ پیش کریں۔متعدد دیگر وفود نے اَپنے اَپنے علاقوں کی عوامی اہمیت کے حامل مختلف اَمورگوش گزار کئے اور اِس سلسلے میں مشیر موصوف کی مداخلت طلب کی۔ اِسی طرح متعدد اَفراد نے مشیر موصو ف سے ملاقات کی اور پی ڈی ڈی ، فلوری کلچر ، آر آر ڈی ،سیاحت اور دیگر محکموں جیسے مختلف اَمور کے بارے میں اَپنے اِنفرادی معاملات اُٹھائے۔مشیر موصوف نے وفود اور اَفراد کے مسائل بغور سنا اور انہوں نے ان کی جانب سے اُٹھائے گئے جائز مطالبات اور امور کو جلد از جلد ازالہ کرنے کی یقین دہانی کرائی ۔ اُنہوں نے کہا کہ ان کے پیش کردہ امور کو فوری طور پر حل کرنے کے لئے متعلقہ محکموں کے ساتھ اُٹھایا جائے گا۔چند ایک معاملات میں مشیر موصوف نے شکایات کے ازالے کے لئے متعلقہ اَفسران کو موقعہ پر ہدایات دیں۔
 
 

۔3 اضلاع میںہفتہ وار کرفیو کے بعد معمولات زندگی بحال

سرینگر//سرینگر سمیت دیگر3 اضلاع میں دوروز ہ ہفتہ وار کورونا کرفیو کے بعد سوموار کومعمول کی زندگی دوبارہ پٹری پر لوٹ آئی ۔ دکانیں کھل گئیں جبکہ سڑکوںپر ٹریفک بھی رواں دواں تھاجس کے نتیجے میں بازار وں میں رونق لوٹ آئی ۔ شہر میں کاروباری و تجارتی سرگرمیاں بحال ہوئیں جبکہ پبلک ٹرانسپورٹ بھی سڑکوں پر رواں دواں تھا ۔سوموار کی صبح سے ہی شہر سرینگر کے ساتھ ساتھ وادی کے دیگر اضلاع میں ایس او پیز پر عملدر آمد کے بیچ دکانیں کھل گئیںجبکہ ساتھ ہی سڑکوں پر گاڑیوں کی نقل و حمل بحال ہونے کے ساتھ ہی رونق لوٹ آئی ۔ سرینگر کے ساتھ ساتھ دیگر اضلاع میں بھی لوگوں کی بھاری بھیڑبازاروں میں اُمڈ آئی ۔وادی کے تمام اضلاع میں سوموار کی صبح سے ہی تمام تجارتی و کاروباری سرگرمیاں شروع ہو گئی  ۔انتظامیہ کی جانب سے اتوار کو ایک حکمنامہ جاری کر دیا گیا جس میںکہا گیا کہ جموں کشمیر کے تمام اضلاع میں ہفتہ وار کرفیو کا نفاذ اب نہیں رہے گا 
 
 
 
 

شکتی وجے برگیڈ کرناہ کے اہتمام سے تقریب 

نمائندہ عظمیٰ
 
کرناہ //فوج کی شکتی وجے بریگیڈ نے کرناہ میں ’کرگل وجے دیوس‘ منایا۔ اس موقعہ پر ایک تقریب کا اہتمام حاجی ناڑ کے آرمی گڈول سکول میں کیا گیا، جس میں مقامی لوگوں اور انتظامیہ کے اعلیٰ افسران نے شرکت کی۔تقریب میں کرگل جنگ کے دوران اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والے بہادر فوجی جوانوں کو شاندار خراج عقیدت پیش کیا گیا۔گرگل وجے دیوس کی 22ویں سالگرہ کے موقعہ پرخطاب کرتے ہوئے ،مقررین نے کہا کہ اس دن بھارتی فوج کے بہادر سپاہیوں نے کرگل کی برفیلی پہاڑیوں پر جنگ میں فتح حاصل کی تھی اورٹائیگر ہل کو حاصل کیا تھا ۔تقریب کے دوران فوج نے ترنگا بھی لہرایا اور سلامی بھی پیش کی ،جس کے بعد شائننگ کرناہ بینڈ کی طرف سے شاندار میوزیکل پرفارمنس ، فوجیوں کے ذریعہ بھنگڑا اور آرمی گڈول سکول ہاجی ناڑ کے طلاب کی طرف سے پہاڑی گیت گائے گئے ،جبکہ کرناہ کلچرل کلب کے فنکاروں نے ایک ڈرامہ بھی پیش کیا جس کو وہاں موجود شرکاء نے خوب سراہا ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے برگیڈ کمانڈر ایس پی کنسل نے جنگ کے دوران اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والے فوجیوں کو شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا ۔انہوں نے اس موقعہ پر کرناہ کے لوگوں کا شکریہ ادا کیا ،جنہوں نے ہمیشہ امن وامان کو برقرار رکھنے میں فوج کے ساتھ شانہ بشانہ کام کیا۔ تقریب کے بعد گورنمنٹ ہائر سیکنڈری اسکول نہچیاں کی عمارت کا افتتاح کیا گیا۔ افتتاحی تقریب میں سرپنچ خالد بڈھانہ بھی موجود تھے ۔یہ عمارت سال2018میں آئے تباہ کن سیلاب کی وجہ سے تباہ ہو چکی تھی تاہم عمارت کی تعمیر مکمل ہونے پر مقامی لوگوں نے فوج کا شکریہ ادا کیا، سکول میں ایک لائبری کا بھی افتتاح کیا گیا ۔
 
 

پولیس اہلکاروں کے لواحقین کے حق میں 1کروڑ60لاکھ کی امدادمنظور

سرینگر//پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے فوت ہوئے پولیس اہلکاروں کے کنبوں کے حق میں 80لاکھ روپے کاخصوصی ریلیف منظور کیا جبکہ55لاکھ روپے کی عبوری امداد بھی پولیس اہلکاروں یا ایس پی اوز کے اہلخانہ کے حق میں منظور کی گئیں۔پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے کانسٹیبل سہیل مشتاق لوہارکے لواحقین کے حق میں38 لاکھ روپے کی عبوری امداد منظور کی جو باغات چوک میں جنگجوئوں کے حملے میں ہلاک ہوئے ۔17.50لاکھ روپے کی عبوری امدادایس پی او شہباز احمد کے اہلخانہ کو بھی فراہم کی گئی جوزنتراگ کھریو میں جنگجوئوں کے ساتھ جھڑپ میں مارے گئے۔بیس بیس لاکھ روپے کی خصوصی امداداے ایس آئی قائم الدین کھٹانہ ،ہیڈ کانسٹیبل لال حسین،مظفراحمد،سدیش کماری اور فالورسنجیوکمار کے اہلخانہ کو دی گئی جو بیماری کی وجہ سے دوران ڈیوٹی فوت ہوئے۔
 
 

پاکستانی زیرانتظام کشمیر اسمبلی چنائو  | عمران خان کی پاکستان تحریک انصاف فاتح

اسلام آباد//وزیراعظم عمران خان کی جماعت پاکستان تحریک انصاف پاکستانی زیرانتظام کشمیرمیں قانون سازاسمبلی انتخاب کے بعدحکومت بنائے گی۔اس جماعت نے اسمبلی انتخابات کے نتائج میں45نشستوں کی اسمبلی میں 25نشستوں پر کامیابی حاصل کی جبکہ چنائو کے دوران بھاری پیمانے پر تشدد آمیزواقعات بھی رونما ہوئے۔ریڈیوپاکستان کے مطابق پاکستان تحریک انصاف جماعت نے اس چنائو میں 25،پاکستان پیپلزپارٹی نے11جبکہ مسلم لیگ نواز نے صرف چھ نشستیں حاصل کیں۔پاکستان تحریک انصاف جماعت نے اسمبلی میں سادہ اکثریت حاصل کی اور یہ جماعت بغیر کسی اور جماعت کی حمایت کے پاکستانی زیرانتظام کشمیرمیں حکومت بنانے کی اہل ہے۔روایتی طور پاکستان کی حکمران جماعت پاکستانی زیرانتظام کشمیرکے انتخاب میں فتح حاصل کرتی ہے ۔مسلم کانفرنس اور جموں کشمیر پیپلزپارٹی نے ایک ایک نشست حاصل کی ہے۔پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے خطے کے لوگوں کا ان کی جماعت کو ووٹ دینے کیلئے شکریہ اداکیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ان کی جماعت خطے کی ترقی پر توجہ مرکوز کرے گی اورانتظامیہ میں شفافیت اور جوابدہی قائم کرے گی۔انہوں نے یہ بھی یقین دلایا کہ وہ مسئلہ کشمیر کو عالمی فورموں پر اُجاگرکرتے رہیں گے ۔وزیراطلاعات فوادچودھری نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف جماعت کی کامیابی عام آدمی کے وزیراعظم عمران خان پربھروسے اور اعتماد کی عکاس ہے۔ ایک ٹویٹ میں انہوں نے کہا کہ حزب اختلاف کواپنی قیادت اورسیاست پردوبارہ غور کرنا چاہیے۔پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے اور پاکستان مسلم لیگ نوازکی نائب صدر مریم نواز نے الزام لگایا کہ پاکستان تحریک انصاف نے انتخابی دھاندلیوں کے بل بوتے پر فتح حاصل کی ۔بھٹو نے الزام لگایا کہ الیکشن کمیشن پاکستان تحریک انصاف کے خلاف انتخابی ضابطوں کو روندنے پرکارروائی کرنے میں ناکام ہوا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف پارٹی نے چنائو دھاندلیاں کیں اورووٹ چوری کی مرتکب ہوئی ۔پاکستان پیپلزپارٹی ان انتخابات میں واحد اپوزیشن پارٹی کے بطور اُبھری اور اس نے گیارہ سیٹیں حاصل کیں جبکہ اس سے قبل اسمبلی میں اس کے صرف تین ارکان تھے۔ پاکستان مسلم لیگ نواز نے چنائو نتائج کو قبول نہیں کیا ہے اور کہا ہے کہ وہ کبھی ان نتائج کو قبول نہیں کریں گی۔انہوں نے تاہم پاکستان مسلم لیگ نواز کے کارکنوں کو سراہا کہ انہوں نے انتخاب کے دوران بھر پور کام کیا۔اس دوران چیف الیکشن کمشنرعبدالرشید سلہریانے کہا کہ وہ چنائو نتائج سے مطمئن ہیں۔
 
 

اننت ناگ میں شہری کی گلے سے کٹی لاش بر آمد

عارف بلوچ
اننت ناگ //اننت ناگ میں ایک شہری کی گلے سے کٹی لاش میوہ باغ سے بر آمد ہوئی ہے ۔لارکی پورہ بوٹھنواننت ناگ علاقہ میں اس وقت خوف وہراس پھیل گیا جب یہاں 50 سالہ محمد اشرف میر ولد علی محمد میر ساکنہ ہاکورہ نامی شہری کی گلے سے کٹی لاش میوہ باغ سے بر آمد کی گئی ۔مہلوک اتوار کی شام گھر سے اپنی ذاتی i-20 گاڑی زیر نمبر JK03H 1478 میں سوار ہوکر کہیں گیا تھا جس دوران وہ لاپتہ ہوگیا۔پیر کی صبح ا س کی گاڑی لارکی پورہ کے نزدیک برآمد کی گئی اور دوپہر کو ا س کی نعش میوہ باغ سے برآمد کی گئی ۔واقعہ کی خبر پھیلتے ہی یہاں لوگوں کی بڑی تعداد جمع ہوئی ۔اس بیچ پولیس و ایف ایس ایل ٹیم نے جائے واردات کا جائزہ لے کر نمونے حاصل کئے ۔پولیس کا کہنا ہے کہ معاملہ کی نسبت کیس درج کر لیا گیا ہے اور ابتدائی تحقیقات سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ مہلوک کا قتل ہوا ہے۔مہلوک پیشہ سے تاجر تھا اور وہ اپنے پیچھے 3 بچے اور اہلیہ کو چھوڑ گیا ہے۔
 
 

۔2نظر بندوں پر عائدپی ایس سے کالعدم قرار

نیوز ڈیسک
 
سرینگر// جموں وکشمیراور لداخ  ہائی کورٹ نے پیر کو پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت 2 نظربندوں کی رہائی کا حکم دیا۔جسٹس سنجیو کمار کے بنچ نے درخواستوں کی اجازت دیتے ہوئے حکومت کو ہدایت کی کہ اگلر شوپیاں کے امیر مجید وانی اور سوپور کے امتیاز احمد شیخ کو فوری طور پر رہا کیا جائے اگر وہ دوسرے مقدمات میں مطلوب نہیں ہیں تو ان کو جلد ہی رہا کیا جائے۔ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ شوپیاں کے ذریعہ 23 اگست 2019 کو پی ایس اے کے آرڈر کے تحت وانی پر مقدمہ درج کیا گیا تھا ، شیخ کو 4 جولائی 2019 کو ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ بارہمولہ کے ذریعہ جاری کردہ آرڈر کی بنا پر مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ وانی نے اپنے وکیل آر اے خان کے ذریعہ ان کی نظربندی کے حکم کو بنیادی طور پر چیلنج کیا تھا۔ اس بنیاد پر کہ جب وہ تھانہ ، زینہ پورہ میں درج ایک مقدمہ (ایف آئی آر نمبر 99/2019 2019)کے سلسلے میں تحویل میں تھا ، اس کے باوجود 23 اگست 2019 کو ڈیٹیننگ اتھارٹی کے ذریعہ منظور شدہ نظربندی حکم پر عمل درآمد کرایا گیا تھا اور اسے 21 دسمبر 2019 کو احتیاطی تحویل میں لے لیا گیا تھا۔انہوں نے دعوی کیا کہ اس طرح حراست کے حکم پر عمل درآمد اور اسے احتیاطی تحویل میں رکھنے میں تقریبا چار ماہ کی تاخیر کی تاخیر ہوئی ہے۔شیخ نے بھی اپنے وکیل واجد حسیب کے توسط سے ان کی نظربندی کے حکم کو بنیادی طور پر اس بنیاد پر چیلنج کیا تھا کہ جب وہ زیر حراست تھا تو اسے تھانہ تازو میں درج مقدمہ (ایف آئی آر نمبر 29/2019) میں گرفتار کیا گیا  اور4 جولائی ، 2019 تک اسے حراست میں رکھا جانا تھا تاہم یہ کہ انہیں 27.11.2019 کو احتیاطی تحویل میں لیا گیا تھا۔اگرچہ فوری معاملے میں ، ڈیٹیننگ اتھارٹی کی جانب سے انتہائی تفصیلی جوابی حلف نامہ دائر کیا گیا ہے ، لیکن ابھی تک ایسا نہیں لگتا ہے کہ نظربندی کے حکم کی منظوری میں دو ماہ کی تاخیر کی وضاحت کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔
 
 

محکمہ بجلی میں 32انچارج ایگزیکیٹوانجینئروں کے تبادلے

 سرینگر// محکمہ بجلی میں32انچارج ایگزیکٹو انجینئروں کے تبادلے اور تقرریاں عمل میں لائی گئیں۔پرنسپل سیکریٹری بجلی روہت کنسل نے پیر کو ایک حکم نامہ جاری کیا جس میں کہا گیا انتظامیہ کے مفاد میںیہ تبادلے اور تقرریاں عمل میں لائی جا رہی ہیں۔ حکم نامہ کے مطابق جاوید احمد وازہ کو الیکٹرک ڈویژن بانڈی پورہ، منیر حسین کوا لیکٹرک ڈویژن سمبل، رئوف احمد بٹ کو پلانگ ڈویژن فسٹ لینن کمار کنڈو کو کے پی ڈی سی ایل،ایس ٹی ڈی فسٹ، محمد ایوب خواجہ کو ٹی ایل ایم ڈی فورتھ جموں،روی کنٹھ کلسہوترا و ٹیکنکل افسر برائے چیف انجینئر ٹرانسمیشن پی ٹی سی ایل، شیخ رشید احمد کو ٹی ایل ایم ڈی چھٹا اورغلام حسن وانی کو پی ڈی سی کے منیجنگ ڈائریکٹر کے ماتحت تعینات کیا گیا۔حکم نامہ میں مزید کہا گیا ہے کہ اپنی تقرری کا انتظار کر رہے مدن لعل کو الیکٹرک ڈویژن کھٹوعہ تبدیل کیا گیا جبکہ رومیش رینہ کو الیکٹرک ڈویژن سوئم جموں، سومن بھارتی کو پروجیکٹ ڈویژن ادھمپور، رام لعل اور نیل کنول سنگھ کو جموں کشمیر پائور ڈیولپمنٹ کارپوریشن کے منیجنگ ڈائریکٹر کے ماتحت رکھا گیا۔ حکم نامہ کے مطابق دیوان چند شرما کو ایس ٹی ڈی ڈوڈہ، نیرج آملا کو ایس اینڈ ائو ڈویژن  جے کے پی ٹی سی ایل، انیل کاچرو کو آئی ٹی اینڈ سی ڈویژن جموں،آفتاب احمد خان کو پلاننگ ڈویژن پی ڈی سی ایل جموں  میں تعینات کیا گیا۔روہت کنسل کی جانب سے جاری آرڈر میں کہا گیا کہ ست پال،کلدیپ کمار  اورٹھاکر داس کو جموں کشمیر پائور ڈیولپمنٹ کارپوریشن کے منیجنگ ڈائریکٹر کے ماتحت تعینات کیا گیا۔ جمیل سنگھ کو پروجیکٹ ڈویژن جموں الطاف حسین شیخ کو الیکٹرک ڈویژن کشتواڑ،گوپال سنگھ کو ڈویژن سکینڈ جے کے پی سی ایل جموں،سرجیت سنگھ کو ٹی ایل ایم ڈی جموں،وکاس آنند کو سینٹرل ورکشاپ جموں، سرینڈر کمار کو ایس ٹی ڈی فسٹ جموں،سمن گپتا کو پی ایم یو جموں، محمد شفیع کو جے کے پی سی ایل فسٹ ڈویژن، مقبول حسین نائک کو جے کے پی سیسی(تعمیرات عامہ) جموں،اجے کمار کول کو ٹیکنیکل آفسر چیف انجینئر ٹرانسمیشن،بی این بھنڈاری کو الیکٹرک ڈویژن وجے پور،یشپال کو منیجنگ ڈائریکٹر  جے کے ایس پی ڈی سی کے منیجنگ ڈائریکٹر کے ماتحت تعینات کیا گیا۔